News Ticker
  • “We cannot expect people to have respect for law and order until we teach respect to those we have entrusted to enforce those laws.” ― Hunter S. Thompson
  • “And I can fight only for something that I love
  • love only what I respect
  • and respect only what I at least know.” ― Adolf Hitler
  •  Click Here To Watch Latest Movie Jumanji (2017) 

Welcome to Funday Urdu Forum

Guest Image

Welcome to Funday Urdu Forum, like most online communities you must register to view or post in our community, but don't worry this is a simple free process that requires minimal information for you to signup. Be apart of Funday Urdu Forum by signing in or creating an account via default Sign up page or social links such as: Facebook, Twitter or Google.

  • Start new topics and reply to others
  • Subscribe to topics and forums to get email updates
  • Get your own profile page and make new friends
  • Send personal messages to other members.
  • Upload or Download IPS Community files such as:  Applications, Plugins etc.
  • Upload or Download your Favorite Books, Novels in PDF format. 

  • Radio

    Live Radio

ADMIN

poetry
صورت صبح بہاراں چمن آراستہ ہے 

Rate this topic

2 posts in this topic

 

صورت صبح بہاراں چمن آراستہ ہے 
چہرہ شاداب ہے اور پیرہن آراستہ ہے

شہر آباد ہے اک زمزمہء ہجر سے اور
گھر تری یاد سے اے جان من ! آراستہ ہے

جیسے تیار ہے آگے کوئی ہنگامہء زیست
اس طرح راہ میں باغ عدن آراستہ ہے

کوئی پیغام شب وصل ہوا کیا لائی
روح سرشار ہوئی ہے، بدن آراستہ ہے

اے غم دوست ! تری آمد خوش رنگ کی خیر
تیرے ہی دم سے یہ بزم سخن آراستہ ہے

دل کے اک گوشہء خاموش میں تصویر تری
پاس اک شاخ گل یاسمن آراستہ ہے

رامش و رنگ سے چمکے ہے مرا خواب ایسے
نیند میں جیسے کوئی انجمن آراستہ ہے

اس نے سورج کی طرح ایک نظر ڈالی تھی
رشتہء نور سے اب بھی کرن آراستہ ہے

کیا کسی اور ستارے پہ قدم میں نے رکھا
کیسی پیراستہ دنیا، زمن آراستہ ہے

کیسے آئے گا زمانہ مجھے ملنے کے لیے
میرے رستے میں تو دنیائے فن آراستہ ہے

23658766_867741203395010_338891591591830

1 person likes this

Share this post


Link to post
Share on other sites

مرتی ہوئی زمیں کو بچانا پڑا مجھے 
بادل کی طرح دشت میں آنا پڑا مجھے 

وہ کر نہیں رہا تھا میری بات کا یقیں 
پھر یوں ہوا کہ مر کے دکھانا پڑا مجھے 

بھولے سے میری سمت کوئی دیکھتا نہ تھا 
چہرے پہ ایک زخم لگانا پڑا مجھے 

اس اجنبی سے ہاتھ ملانے کے واسطے 
محفل میں سب سے ہاتھ ملانا پڑا مجھے 

یادیں تھیں دفن ایسی کہ بعد از فروخت بھی 
اس گھر کی دیکھ بھال کو جانا پڑا مجھے 

اس بے وفا کی یاد دلاتا تھا بار بار 
کل آئینے پہ ہاتھ اٹھانا پڑا مجھے 

ایسے بچھڑ کے اس نے تو مر جانا تھا 
اس کی نظر میں خود کو گرانا پڑا مجھے

23755819_868240190011778_840428681354427

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!


Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.


Sign In Now

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

  • Forum Statistics

    1,769
    Total Topics
    7,772
    Total Posts