Jump to content
Search In
  • More options...
Find results that contain...
Find results in...
Admin

waqas dar

Administrators
  • Content Count

    11,515
  • Joined

  • Last visited

  • Days Won

    494

Status Updates posted by waqas dar

  1. hello @Zarsha Sheikh  welcome to fundayforum.com

    hope u will like it here.. if u need any help please let me know.

    :wcff:

  2. مُدتوں ہــــــــم نے وہاں خَاک اُڑائی یَارو
    وہ گَلی پِھر بھی ہمیں رَاس نہ آئی یَارو

    1. Hareem Naz

      Hareem Naz

      Wah wah

      rope-line-animated.gif


      New Content added Less than in a minutes & merged.

      animated-smiley-line.gif

       

      دل کو غم راس ہے یوں گل کو صبا ہو جیسے 

       

      اب تو یہ درد کی صورت ہی دوا ہو جیسے

  3. پہلے مجھے لگتا تھا 
    کہ جذبوں کے پیمانے نہیں ہوتے
    آپ یا تو کسی سے محبت کرتے ہیں 
    یا نہیں کرتے
    نفرت کرتے ہیں یا نہیں کرتے
    کم یا زیادہ محبت اور کم یا زیادہ نفرت
    ایسا کچھ نہیں ہوتا
    مگر اب مجھے لگتا ہے 
    کہ جذبے بھی ناپے جا سکتے ہیں
    ....کچھ لوگوں کی نفرت ہر نفرت سے بڑھ جاتی ہے

    1. Hareem Naz

      Hareem Naz

      خوبصــــــورت

  4. عشق میں غیرتِ جذبات نے رونے نہ دیا
    ورنہ کیا بات تھی کس بات نے رونے نہ دیا
    ایک دو روز کا صدمہ ہو تو رو لیں فاکر
    ہم کو ہر روز کے صدمات نے رونے نہ دیا

  5. ‏اٙب نہیں دِل میں وُہ سوزِ انتظار
    زندگی شاید گزاری جا چکی ہے..
    جون ایلیاء

  6. یوں کیجیئے کہ زھر دیجیئے
    محبت تو آپ سے دی نہیں جاتی

    جون ایلیا

  7. مجھ پہ نظرِ کرم کر مخاطب ہو مجھ سے
    مجھے یہ بتا میں ترا کون ہوں
    اس تعلق کی کیاری میں اگتے ہوئے پھول کو نام دے
    مجھ کو تیری محبت پہ شک تو نہیں
    پر مرے نام سے تیرے سینے میں رکھی ہوئی اینٹ دھڑکے تو مانوں
    کب تلک میں تری خامشی سے یونہی
    اپنی مرضی کے مطلب نکالوں گا

  8. مجھ پہ نظرِ کرم کر مخاطب ہو مجھ سے
    مجھے یہ بتا میں ترا کون ہوں
    اس تعلق کی کیاری میں اگتے ہوئے پھول کو نام دے
    مجھ کو تیری محبت پہ شک تو نہیں
    پر مرے نام سے تیرے سینے میں رکھی ہوئی اینٹ دھڑکے تو مانوں
    کب تلک میں تری خامشی سے یونہی
    اپنی مرضی کے مطلب نکالوں گا

  9. ‏وہ __ آفتاب لانے کا دے کر ہمیں فریب
    ‏ہم سے ہماری رات کے جگنو بھی لے گیا

  10. زمانے بھر کو اداس کر کے
    خوشی کا ستیا ناس کر کے
    میرے رقیبوں کو خاص کر کے
    بہت ہی دوری سے پاس کر کے
    تمہیں یہ لگتا تھا
    جانے دیں گے ؟
    سبھی کو جا کے ہماری باتیں
    بتاؤ گے اور
    بتانے دیں گے ؟
    تم ہم سے ہٹ کر وصالِ ہجراں
    مناؤ گے اور
    منانے دیں گے ؟
    میری نظم کو نیلام کر کے
    کماؤ گے اور
    کمانے دیں گے ؟

    تو جاناں سن لو
    اذیتوں کا ترانہ سن لو

    کہ اب کوئی سا بھی حال دو تم
    بھلے ہی دل سے نکال دو تم
    کمال دو یا زوال دو تم
    یا میری گندی مثال دو تم

    میں پھر بھی جاناں ۔۔۔۔۔۔۔!
    میں پھر بھی جاناں ۔۔۔
    پڑا ہوا ہوں ، پڑا رہوں گا
    گڑا ہوا ہوں ، گڑا رہوں گا
    اب ہاتھ کاٹو یا پاؤں کاٹو
    میں پھر بھی جاناں کھڑا رہوں گا

    بتاؤں تم کو ؟
    میں کیا کروں گا ؟

    میں اب زخم کو زبان دوں گا
    میں اب اذیت کو شان دوں گا
    میں اب سنبھالوں گا ہجر والے
    میں اب سبھی کو مکان دوں گا
    میں اب بلاؤں گا سارے قاصد
    میں اب جلاؤں گا سارے حاسد
    میں اب تفرقے کو چیر کر پھر
    میں اب مٹاؤں گا سارے فاسد
    میں اب نکالوں گا سارا غصہ
    میں اب اجاڑوں گا تیرا حصہ
    میں اب اٹھاؤں گا سارے پردے
    میں اب بتاؤں گا تیرا قصہ

    مزید سُن لو۔۔۔

    میں اب نظم کا سہارا لوں گا
    میں ہر ظلم کا کفارہ لوں گا
    اگر تو جلتا ہے شاعری سے
    تو یہ مزہ میں دوبارہ لوں گا

    میں اتنی سختی سے کھو گیا ہوں
    کہ اب سبھی کا میں ہو گیا ہوں
    کوئی بھی مجھ سا نہی ملا جب
    خود اپنے قدموں میں سو گیا ہوں

    میں اب اذیت کا پیر ہوں جی
    میں عاشقوں کا فقیر ہوں جی
    کبھی میں حیدر کبھی علی ہوں
    جو بھی ہوں اب اخیر ہوں جی

    جون ایلیا

  11. آپ ہیں شہر کے قاضی__ تو گزارش سن لیں
    میں ہوں حساس , میری عمر گھٹا دی جائے!

  12. ماضی شریکِ حال ہے کوشِش کے ___ باوجود ​
    دُھندلے سے کچھ نقُوش ابھی تک نظر میں ہیں

  13. ضربُ‌ المِثل ہیں اب مِری مشکل پسندیاں
    سُلجھا کے ہر گِرَہ کو پِھر اُلجھا رہا ہوں میں

  14. اس نے مجھے دراصل کبھی چاہا ہی نہیں تھا

    خود کو دے کر یہ بھی دھوکا، دیکھ لیا ہے

  15. تجھے معلوم کہاں خون کے آنسو رونا
    تجھے معلوم کہاں آنکھ میں آنا دل کا 

  16. ضدی ہوں پلٹ آتا ہوں _پھر تیری گلی میں
    پتھر تو مجھے پہلے بھی _ سو بار لگے ہیں____

  17. نہ جانے تُم کب بدل جاؤ ، حالات کی مانند
     مُوسم کی طرح يا پھر اپنی کسی بات کی مانن

  18. جہاں ملتے تھے وہ دونوں،ٹھکانہ یاد آتا ہے
     وفا کا دل کی چاہت فسانہ یاد آتا ہے
    کہ اسکا خواب میں آکر ستانا یاد آتا ہے
    وہ نازک نرم انگلی اب بھی مجھکو گدگداتی ہے

  19. دل هو چکا هے واقفِ انجامِ زندگی
    کس دل سے زندگی کی تمنّا کرے کوئی

  20. ‏اثر بھی لے رہا ہوں تیری چپ کا
    تجھے قائل بھی کرتا جا رہا ہوں

  21. میں نے کبھی رعایتی نمبر نہیں لیے
    تم دے رہے ہو مجھ کو محبت بچی کُچی

  22. آیینہ ہی مجھے یاد دلاتا ہے کہ میں ہوں۔۔
    ورنہ تو مُجھے بھول ہی جاتا ہے کہ میں ہوں

  23. ‏ہمارے معیار کے الفاظ نہ ملیں گے تم کو۔۔۔

     تعریف تو کیا تم تو تنقید بھی نہ کر پاؤ گے

  24. دل وہ درویش ہے جو آنکھ اُٹھاتا ہی نہیں
    اس کے دروازے پہ سو اہلِ کرم آتے ہیں

    https://fundayforum.com

  25. ﻣﯿﺮﮮ ﮨﻮﻧﮯ ﺳﮯ ﺟﻮ ﺑﮍﮬﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﻣﺴﺎﺋﻞ ﺍﻥ ﮐﮯ
    ﻣﯿﮟ ﺟﻮ ﻣﺮ ﺟﺎﺅﮞ ﺗﻮ ﺍﭘﻨﻮﮞ ﮐﻮ ﺳﮩﻮﻟﺖ ﮨﻮ ﮔﯽ

    hijer.jpg

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

×
×
  • Create New...