Jump to content

Profile Song


Information

Group

Administrators

Content Count

335

Birthday

09/02/1995

Last visited


Joined

  1. وہ نہ آئے گا ہمیں معلوم تھا اس شام بھی انتظار اس کا مگر کچھ سوچ کر کرتے رہے ~ پروین شاکر
  2. Safa mughal

    Tera Ehsas chuno

    یہ تو اب جا کے جُنوں میں نے اُتارا سَر سے ورنہ دَر کھولنا آتا ہے مُجھے ٹھوکر سے کس کو معلُوم کہ ہم کتنے بھرے بیٹھے ہیں کس نے دیکھا ہے چٹانوں کا خلاء اندر سے منظرِ شامِ غریباں ہے دَمِ رُخصتِ خواب تعزیّے کی طرح اُٹھا ہے کوئی بستر سے ! بے تکلُّف ہے بہُت مُجھ سے اُداسی میری مُسکراؤں تو پکڑتی ہے مُجھے کالر سے
  3. Safa mughal

    Safa mughal

  4. Safa mughal

    poetry kahan hute hu

    . . . . . کوئی تو راہ نکالے گا وہ آسانی کی . . . . .فکر لاحق ہے جسے میری پریشانی کی . . . . اشک آنکھوں سے نکل آئے تو احساس ہوا . . . . قسم اک اور بھی ہے بہتے ہوئے پانی کی . . . رزق اُترے تو وہ مُفلس مجھے یاد آتا ہے . . . . جس نے قندیل بجھا کر مری مہمانی کی . . . . گردشِ وقت کے بپھرے ہوئے دریا ! تھم جا . . . . کیسے دیکھوں مٙیں تباہی تری طغیانی کی . . . . اُس کے دربار میں کیا عدل کی زنجیر ہلے . . . . رمز سمجھی ہی نہیں جس نے جہاں بانی کی . . . . ٹھیک ہے اہلِ جنوں ' اہلِ جنوں ہیں لیکن . . . . حد بھی ہوتی ہے کو ئی بے سر و سامانی کی . . . . مٙیں نے ہر چیز بڑے غور سے دیکھی ہے یہاں . . . . کوئی تمثیل نہیں صورت ِ انسانی کی . . . . ہر کوئی اپنے مسائل سے پریشاں ہے سعید . . . . کون فریاد سنے گا کسی زندانی کی . . . . . . . . . (ڈاکٹر سعید عاصم)
  5. ابھی تو عشق میں ایسا بھی حال ہونا ہے کہ اشک روکنا تم سے محال ہونا ہے ہر ایک لب پہ ہیں میری وفا کے افسانے تیرے ستم کو ابھی لازوال ہونا ہے بجا کہ خار ہیں لیکن بہار کی رت میں یہ طے ہے اب کے ہمیں بھی نہال ہونا ہے تمہیں خبر ہی نہیں تم تو لوٹ جاؤ گے تمہارے ہجر میں لمحہ بھی سال ہونا ہے ہماری روح پہ جب بھی عذاب اتریں گے تمہاری یاد کو اس دل کی ڈھال ہونا ہے کبھی توروئے گا وہ بھی کسی کی بانہوں میں کبھی تو اسکی ہنسی کو زوال ہونا ہے ملیں گی ہم کو بھی اپنے نصیب کی خوشیاں بس انتظار ہے کب یہ کمال ہونا ہے ہر ایک شخص چلے گا ہماری راہوں پر محبتوں میں ہمیں وہ مثال ہونا ہے زمانہ جس کے خم و پیچ میں الجھ جائے ہماری ذات کو ایسا سوال ہونا ہے وصی یقین ہے مجھ کو وہ لوٹ آئے گا !... اس کو بھی اپنے کیے کا ملال ہونا ہے ❤ وصی شاہ Wasi Shah
  6. تم کہ سنتے رہے اوروں کی زبانی لوگو ہم سُناتے ہیں تمہیں اپنی کہانی لوگو کون تھا دشمنِ جاں وہ کوئی اپنا تھا کہ غیر ہاں وہی دُشمنِ جاں دلبرِ جانی لوگو زُلف زنجیر تھی ظالم کی تو شمشیر بدن رُوپ سا رُوپ جوانی سی جوانی لوگو سامنے اُسکے دِکھے نرگسِ شہلا بیمار رُو برو اُسکے بھرے سَرو بھی پانی لوگو اُسکے ملبوس سے شرمندہ قبائے لالہ اُس کی خوشبو سے جلے رات کی رانی لوگو ہم جو پاگل تھے تو بے وجہ نہیں تھے پاگل ایک دُنیا تھی مگر اُس کی دِوانی لوگو ایک تو عشق کیا عشق بھی پھر میر سا عشق اس پہ غالب کی سی آشفتہ بیانی لوگو ہم ہی سادہ تھے کِیا اُس پہ بھروسہ کیا کیا ہم ہی ناداں تھے کہ لوگوں کی نہ مانی لوگو ہم تو اُس کے لئے گھر بار بھی تج بیٹھے تھے اُس ستمگر نے مگر قدر نہ جانی لوگو کس طرح بھُول گیا قول و قسم وہ اپنے کتنی بے صرفہ گئی یاد دہانی لوگو اب غزل کوئی اُترتی ہے تو نوحے کی طرح شاعری ہو گئی اب مرثیہ خوانی لوگو شمع رویوں کی محبت میں یہی ہوتا ھے رہ گیا داغ فقط دل کی نشانی لوگو ( احمد فراز ) AHMAD FRAZ
  7. میرا اصل اصیل اداس پیا دل جانی رمز شناس پیا کبھی آ مل تنہا لوگوں سے میرے خاصوں میں بھی خاص پیا تیری دید زیارت آنکھوں کی تیری دوری دشت کی پیاس پیا تیرا لمس ہوا کی سسکی میں تیری پھولوں میں بھی باس پیا میں مٹی بارش ترسی ہوں تو آوارا اک بدلی سا کبھی برس میرے بھی دامن پر میری جل جائے گی گھاس پیا اک تیرے گرد ہیں گردش میں میری سوچ بچار قیاس پیا میرا اصل اصیل اداس پیا دل جانی رمز شناس پیا
  8. Safa mughal

    poetry Dil Dhondata Hy Phir Wohi Fursat Ky Raat Din

    صبر ____ تہذیب ہے محبت کی تم سمجھتے ہو بے زبان ہیں ہم ؟
  9. تر ی پنا ہو ں میں سات رنگو ں کا جال ہوگا کمال ہوگا مرے سنور نے کا سلسلہ جب بحال ہوگا کمال ہوگا یہ جھیل آنکھیں جو کھینچتی ہیں نظر کی ڈوریں محبّتوں سے اگر میں ان میں اتر گئی تو وصال ہوگا کمال ہوگا وہ رہبر ِ کاروان ِ الفت میں نقش ِِ مقصود ِ دلبری ہوں سو اب دم ِ وصل وحشتوں کا زوال ہوگا کمال ہوگا نوید ِ شاہ ِ محب کو سن کر تمام درباری جھومتے ہیں خبر اڑی ہے کہ اس برس بھی دھما ل ہوگا کمال ہوگا میں بچ بچا کے غلا ظتو ں سے بس اس بھروسے پہ چل رہی ہوں صنم جو میرا نصیب ہوگا غزال ہوگا کمال ہوگا نگاہ ِ من میں جواں محبّت کا ابر ِ بارا ں ہے محو ِ رقصا ں جمال ِ حسن ِ نظر میں جو یر غما ل ہوگا کمال ہوگا برستی بارش اور اسکی یادیں پھر اس پہ یہ جنو ری کا موسم حرا تمھارا جو ایسے موسم میں حال ہوگا کمال ہوگا ڈاکٹر حرا ارشد
  10. Safa mughal

    poetry Share Your Favorite Punjabi Poetry

    سن وے ماہی پیاریا مینوں ھجر تیرے نے ماریا مکھ ویکھ کے تیرا بیلیا میں جیندی جانیں ہاریا مینوں عشق سمندر سٹ کے نہ ڈوبیا تے نہ تاریا اکھ روندی اڑیا نئیں سک دی میرا سینہ ھجر نے ساڑیا تینوں پاون خاطر یار میرے میں تن من اپنا واریا تیری چاہ وچہ ہو مجذوب گئے نہ اپ۔ا آپ سنواریا میں ہور تے کجھ نہ کیتا من ذکر فکر نال چاریا اے روح تے بت دا کھیڈ سی میں جیندی جانیں ہاریا سن وے ماہی پیاریا۔
  11. Safa mughal

    poetry Agar Be ....

    میں خود زمیں ہوں مگر ظرف آسمان کا ہے کہ ٹوٹ کر بھی میرا حوصلہ چٹان کا ہے بُرا نہ مان میرے حرف زہر زہر سہی میں کیا کروں کہ یہی ذائقہ زبان کا ہے ہر ایک گھر پہ مسلط ہے دِل کی ویرانی تمام شہر پہ سایہ میرے مکان کا ہے بچھڑتے وقت سے اب تک میں یوں نہیں رویا وہ کہہ گیا تھا یہی وقت امتحان کا ہے مسافروں کی خبر ہے نہ دُکھ ہے کشتی کا ہوا کو جتنا بھی غم ہے وہ بادبان کا ہے یہ اور بات عدالت ہے بے خبر ورنہ تمام شہر میں چرچہ میرے بیان کا ہے اثر دِکھا نہ سکا اُس کے دل میں اشک میرا یہ تیر بھی کسی ٹوٹی ہوئی کمان کا ہے بچھڑ بھی جائے مگر مجھ سے بدگمان بھی رہے یہ حوصلہ ہی کہاں میرے بدگمان کا ہے قفس تو خیر مقدر میں تھا مگر محسن ہوا میں شور ابھی تک میری اُڑان کا ہے
  12. *ہم تو موجود تھے راتوں میں اجالوں کی طرح* *تم نے ڈھونڈا ہی نہیں ڈھونڈنے والوں کی طرح*
  13. Safa mughal

    Faisalabaad ki larkiyun ki urdu ki misaal

    تین حبشی دوست اکٹھے رہتے تھے۔ ایک دن ایک پری ان کے پاس آئی اور کہا میں تم تینوں کی ایک ایک خواہش پوری کروں گی۔ ایک بولا : مجھے گورا چٹا اور ہینڈسم بنا دو۔ پری نے چھڑی گھمائی اور وہ گورا چٹا اور ہینڈسم بن گیا۔ دوسرے نے بھی یہی خواہش کی۔ اس کی خواہش بھی پوری ہو گئی۔ تیسرے کی باری آئی تو اس نے بے تحاشا ہنسنا شروع کر دیا۔ پر بولی : ہنسو مت اپنی خواہش بتاو تیسرا بولا : ان دونوں کو پھر سے کالا کر دو۔ 😂😂😂😂😂
  14. Safa mughal

    poetry Share Your Favorite poetry Here

    مٹی سے,پھرمٹی پر؛پھرمٹی میں ؛ سمجھ گئے ھو؛توچھوڑ دو مغروری
  15. یار کو ہم نے جا بجا دیکھا کہیں ظاہر کہیں چھپا دیکھا کہیں ممکن ہوا کہیں واجب کہیں فانی کہیں بقا دیکھا دید اپنے کی تھی اسے خواہش آپ کو ہر طرح بنا دیکھا صورتِ گُل میں کھل کھلا کے ہنسا شکل بلبل میں چہچہا دیکھا شمع ہو کر کے اور پروانہ آپ کو آپ میں جلا دیکھا کر کے دعویٰ کہیں انالحق کا بر سرِ دار وہ کھنچا دیکھا تھا وہ برتر شما و ما سے نیاز پھر وہی اب شما و ما دیکھا کہیں ہے بادشاہ تخت نشیں کہیں کاسہ لئے گدا دیکھا کہیں عابد بنا کہیں زاہد کہیں رندوں کا پیشوا دیکھا کہیں وہ در لباسِ معشوقاں بر سرِ ناز اور ادا دیکھا کہیں عاشق نیاز کی صورت سینہ بریاں و دل جلا دیکھا

Community Reputation

Safa mughal last won the day on June 29 2017

Safa mughal had the most liked content!

487 Marvelous

Recent Profile Visitors

8,255 profile views
  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

×