Jump to content

Hareem Naz

Sweet Friend
  • Content count

    821
  • Joined

  • Last visited

  • Days Won

    60

Profile Song

Hareem Naz last won the day on August 6

Hareem Naz had the most liked content!

Community Reputation

1,528 Super Star

About Hareem Naz

  • Rank
    Celebration Time
  • Birthday 09/09/1997

Profile Information

  • Gender
    Female
  • Interests
    islamic books songs
  • Location
    lahore,pak

Contact Methods

Recent Profile Visitors

23,043 profile views
  1. Hareem Naz

    Shakayat nh koi zindagi se

    یہ شیشے یہ سپنے یہ رشتے یہ دھاگے کسے کیا خبر ہے کہاں ٹوٹ جائیں محبت کے دریا میں .."تنکے وفا " کے نہ جانے یہ کس موڑ پر ڈوب جائیں.. عجب دل کی بستی عجب دل کی وادی ہر اک موڑ موسم نئی خواہشوں کا لگائے ہیں ہم نے بھی سپنوں کے پودے مگر کیا بھروسہ یہاں بارشوں کا" مرادوں کی منزل کے سپنوں میں کھوئے محبت کی راہوں پہ ہم چل پڑے تھے ذرا دور چل کے جب آنکھیں کھلیں تو کڑی دھوپ میں ہم اکیلے کھڑے تھے جنہیں دل سے چاہا جنہیں دل سے پوجا نظر آرہے ہیں وہی "اجنبی سے" "روایت ہے شاید یہ صدیوں پرانی "شکایت نہیں ہے کوئی____ زندگی سے"...!! Image from facebook
  2. جو لوگ کہتے ہے کہ آجکل نیکی کا زمانہ 

    نہیں رہا دراصل وہ لوگ انسانوں سے نیکی 

    کا بدلہ چاہتے ہیں اور جو لوگ صرف اللہ رب العزت 

    کی رضا کیلئے نیکی کرتے ہیں اُن کیلئے ہر زمانہ نیکی کا ہے !!

  3. Hareem Naz

    poetry Share Your Favorite poetry Here

    آگ ہیں ، عمل میرے ، یا ثواب، رہنے دے۔۔ حشر میں ہی دیکھیں گے، یہ حساب، رہنے دے۔۔ زندگی معلِّم ہے، تجھ کو سب سِکھا دے گی، اس کو سِیکھ لے پڑھنا ، ہر کتاب رہنے دے۔۔ وصل کی ہر اِک خواہش، وصل سے بھی بہتر ہے، سامنے نگاہوں کے، یہ سراب رہنے دے۔۔ یہ نا ہو، کہیں تجھ کو، لاجواب کر دوں میں، کچھ سوال رہنے دے، کچھ جواب رہنے دے۔۔ عشق کی مسافت میں، پیار میں، مُحبت میں، کیا کسی نے پایا ہے، یہ حساب رہنے دے۔۔ غم کو غم سے بہلانا، آ کے سیکھ لے ہم سے، آنسوؤں کو پی لے تو اور شراب رہنے دے۔۔ ہم فقیر لوگوں کا، ایک ہی اثاثہ ہے، آنکھ کے کٹورے میں چند خواب رہنے دے۔
  4. Hareem Naz

    تبدیلی

    wah changi tabdeeli i
  5. Hareem Naz

    khuwab e Gul

    آنکھوں میں سِتارے تو کئی شام سے اُترے پر دِل کی اُداسی نہ در و بام سے اُترے کُچھ رنگ تو اُبھرے تِری گُل پیرہنی کا کُچھ زنگ تو آئینہء ایام سے اُترے ہوتے رہے دِل لمحہ بہ لمحہ تہہ و بالا وہ زینہ بہ زینہ بڑے آرام سے اُترے جب تک تِرے قدموں میں فروکش ہیں سبُو کش ساقی خطِ بادہ نہ لبِ جام سے اُترے بے طمع نوازش بھی نہیں سنگ دِلوں کی شاید وہ مِرے گھر بھی کسی کام سے اُترے اوروں کے قصیدے فقط آورد تھے جاناں جو تُجھ پہ کہے شعر وہ الہام سے اُترے اے جانِ فراز ؔاے مِرے ہر دُکھ کے مسیحا ہر زہر زمانے کا تیرے نام سے اُترے
  6. Hareem Naz

    zindagi k Melay

    میں گھر میں ہونے والی ایک تلخی پر ناخوش ہو کر ﮔﮭﺮ ﺳﮯ ﻧﮑﻝ ﮐﺮ ﺮﻭﮈ ﭘﺮ ﭼﻼ ﺟﺎ ﺭﮨﺎ ﺗﮭﺎ کہ پڑوس میں رہنے والے بابا جی نے روک کر پوچھا۔ بیٹا اداس لگ رہے ہو خیریت تو ہے۔ بابا جی کی بات سن کر میں نے اپنی شکائتوں کا دفتر کھول دیا۔ بابا جی زیر لب مسکرائے اور ﺯﻣﯿﻦ ﺳﮯ ﭼﮭﻮﭨﯽ ﺳﯽ ﭨﮩﻨﯽ ﻟﯽ ﺍﻭﺭ ﻓﺮﺵ ﭘﺮ ﺭﮔﮍ ﮐﺮ اس کی چوب بنا کر بولے بھولے بادشاہ آ ﻣﯿﮟ ﺗﻤﮩﯿﮟ ﺍﻧﺴﺎﻥ ﮐﻮ ﺑﻨﺪﮦ ﺑﻨﺎﻧﮯ ﮐﺎ ﻧﺴﺨﮧ ﺑﺘﺎﺗﺎ ﮨﻮﮞ ﺍﭘﻨﯽ ﺧﻮﺍﮨﺸﻮﮞ ﮐﻮ ﮐﺒﮭﯽ ﺍﭘﻨﮯ ﻗﺪﻣﻮﮞ ﺳﮯ ﺁﮔﮯ ﻧﮧ ﻧﮑﻠﻨﮯ ﺩﻭ ‘ ﺟﻮ ﻣﻞ ﮔﯿﺎ ﺍﺱ ﭘﺮ ﺷﮑﺮ ﮐﺮﻭ ‘ ﺟﻮ ﭼﮭﻦ ﮔﯿﺎ ﺍﺱ ﭘﺮ ﺍﻓﺴﻮﺱ ﻧﮧ ﮐﺮﻭ ‘ ﺟﻮ ﻣﺎﻧﮓ ﻟﮯ ﺍﺱ ﮐﻮ ﺩﮮ ﺩﻭ ‘ ﺟﻮ ﺑﮭﻮﻝ ﺟﺎﺋﮯ ﺍﺳﮯ ﺑﮭﻮﻝ ﺟﺎؤ ‘ ﺩﻧﯿﺎ ﻣﯿﮟ ﺑﮯ ﺳﺎﻣﺎﻥ ﺁﺋﮯ ﺗﮭﮯ ‘ ﺑﮯ ﺳﺎﻣﺎﻥ ﻭﺍﭘﺲ ﺟﺎؤ ﮔﮯ ‘ ﺳﺎﻣﺎﻥ ﺟﻤﻊ ﻧﮧ ﮐﺮﻭ ‘ ﮨﺠﻮﻡ ﺳﮯ ﭘﺮﮨﯿﺰ ﮐﺮﻭ ‘ ﺟﺴﮯ ﺧﺪﺍ ﮈﮬﯿﻞ ﺩﮮ ﺭﮨﺎ ﮨﻮ ﺍﺱ ﮐﺎ ﮐﺒﮭﯽ ﺍﺣﺘﺴﺎﺏ ﻧﮧ ﮐﺮﻭ ‘ ﺑﻼ ﺿﺮﻭﺭﺕ ﺳﭻ ﻓﺴﺎﺩ ﮨﻮﺗﺎ ﮨﮯ ‘ ﮐﻮﺋﯽ ﭘﻮﭼﮭﮯ ﺗﻮ ﺳﭻ ﺑﻮﻟﻮ ‘ ﻧﮧ ﭘﻮﭼﮭﮯ ﺗﻮ ﭼﭗ ﺭﮨﻮ ‘ ﻟﻮﮒ ﻟﺬﺕ ﮨﻮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﺍﻭﺭ ﺩﻧﯿﺎ ﮐﯽ ﺗﻤﺎﻡ ﻟﺬﺗﻮﮞ ﮐﺎ ﺍﻧﺠﺎﻡ ﺑﺮﺍ ﮨﻮﺗﺎ ﮨﮯ ‘ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﻣﯿﮟ ﺟﺐ ﺧﻮﺷﯽ ﺍﻭﺭ ﺳﮑﻮﻥ ﮐﻢ ﮨﻮ ﺟﺎﺋﮯ ﺗﻮ ﺳﯿﺮ ﭘﺮ ﻧﮑﻞ ﺟﺎؤ ‘ ﺗﻤﮩﯿﮟ ﺭﺍﺳﺘﮯ ﻣﯿﮟ ﺳﮑﻮﻥ ﺑﮭﯽ ﻣﻠﮯ ﮔﺎ ﺍﻭﺭ ﺧﻮﺷﯽ ﺑﮭﯽ ‘ ﺩﯾﻨﮯ ﻣﯿﮟ ﺧﻮﺷﯽ ﮨﮯ ‘ ﻭﺻﻮﻝ ﮐﺮﻧﮯ ﻣﯿﮟ ﻏﻢ ‘ ﺩﻭﻟﺖ ﮐﻮ ﺭﻭﮐﻮ ﮔﮯ ﺗﻮ ﺧﻮﺩ ﺑﮭﯽ ﺭﮎ ﺟﺎﺋﻮ ﮔﮯ ‘ ﭼﻮﺭﻭﮞ ﻣﯿﮟ ﺭﮨﻮ ﮔﮯ ﺗﻮ ﭼﻮﺭ ﮨﻮ ﺟﺎﺋﻮ ﮔﮯ۔ ﺳﺎﺩﮬﻮﺋﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺑﯿﭩﮭﻮ ﮔﮯ ﺗﻮ ﺍﻧﺪﺭ ﮐﺎ ﺳﺎﺩﮬﻮ ﺟﺎﮒ ﺟﺎﺋﮯ ﮔﺎ ‘ ﺍﻟﻠﮧ ﺭﺍﺿﯽ ﺭﮨﮯ ﮔﺎ ﺗﻮ ﺟﮓ ﺭﺍﺿﯽ ﺭﮨﮯ ﮔﺎ ‘ ﻭﮦ ﻧﺎﺭﺍﺽ ﮨﻮ ﮔﺎ ﺗﻮ ﻧﻌﻤﺘﻮﮞ ﺳﮯ ﺧﻮﺷﺒﻮ ﺍﮌ ﺟﺎﺋﮯ ﮔﯽ ‘ ﺗﻢ ﺟﺐ ﻋﺰﯾﺰﻭﮞ ‘ ﺭﺷﺘﮯ ﺩﺍﺭﻭﮞ ‘ ﺍﻭﻻﺩ ﺍﻭﺭ ﺩﻭﺳﺘﻮﮞ ﺳﮯ ﭼﮍﻧﮯ ﻟﮕﻮ ﺗﻮ ﺟﺎﻥ ﻟﻮ ﺍللہ ﺗﻢ ﺳﮯ ﻧﺎﺭﺍﺽ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺗﻢ ﺟﺐ ﺍﭘﻨﮯ ﺩﻝ ﻣﯿﮟ ﺩﺷﻤﻨﻮﮞ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﺭﺣﻢ ﻣﺤﺴﻮﺱ ﮐﺮﻧﮯ ﻟﮕﻮ ﺗﻮ ﺳﻤﺠھ ﻟﻮ ﺗﻤﮩﺎﺭﺍ ﺧﺎﻟﻖ ﺗﻢ ﺳﮯ ﺭﺍﺿﯽ ﮨﮯ ﮨﺠﺮﺕ ﮐﺮﻧﮯ ﻭﺍﻻ ﮐﺒﮭﯽ ﮔﮭﺎﭨﮯ ﻣﯿﮟ ﻧﮩﯿﮟ ﺭﮨﺘﺎ ‘‘ ﺑﺎﺑﮯ ﻧﮯ ﺍﯾﮏ ﻟﻤﺒﯽ ﺳﺎﻧﺲ ﻟﯽ ‘ ﻣﯿﺮﮮ ﺳﺮ ﭘﺮ ہاتھ پھرا ﺍﻭﺭ ﻓﺮﻣﺎﯾﺎ ﷲ ﺗﻢ ﭘﺮ ﺭﺣﻤﺘﻮﮞ ﮐا سایہ ﺁﺧﺮﯼ ﺳﺎﻧﺲ ﺗﮏ ﺭﮨﮯ ‘ ’ ﺑﺲ ﺍﯾﮏ ﭼﯿﺰ ﮐﺎ ﺩﮬﯿﺎﻥ ﺭﮐﮭﻨﺎ ﮐﺴﯽ ﮐﻮ ﺧﻮﺩ ﻧﮧ ﭼﮭﻮﮌﻧﺎ ‘ ﺩﻭﺳﺮﮮ ﮐﻮ ﻓﯿﺼﻠﮯ ﮐﺎ ﻣﻮﻗﻊ ﺩﯾﻨﺎ ﮨﮯ اللہ ﮐﺒﮭﯽ ﺍﭘﻨﯽﻣﺨﻠﻮﻕﮐﻮ ﺗﻨﮩﺎ ﻧﮩﯿﮟ ﭼﮭﻮﮌﺗﺎ ‘ ﻣﺨﻠﻮﻕ ﺍﻟﻠﮧ ﮐﻮ ﭼﮭﻮﮌﺗﯽ ﮨﮯ ﺍﻭﺭ ﺩﮬﯿﺎﻥ ﺭﮐﮭﻨﺎ ﺟﻮ ﺟﺎ ﺭﮨﺎ ﮨﻮ ﺍﺳﮯ ﺟﺎﻧﮯ ﺩﯾﻨﺎ ﻣﮕﺮﺟﻮ ﻭﺍﭘﺲ ﺁ ﺭﮨﺎ ﮨﻮ ‘ ﺍﺱ ﭘﺮ ﮐﺒﮭﯽ ﺍﭘﻨﺎ ﺩﺭﻭﺍﺯﮦ ﺑﻨﺪ ﻧﮧ ﮐﺮﻧﺎ ‘ ﯾﮧ ﺑﮭﯽ ﺍللہ ﮐﯽ ﻋﺎﺩﺕ ﮨﮯ ‘ ﺍﻟﻠﮧ ﻭﺍﭘﺲ ﺁﻧﮯ ﻭﺍﻟﻮﮞ ﮐﮯ ﻟﯿﮯ ﮨﻤﯿﺸﮧ ﺍﭘﻨﺎ ﺩﺭﻭﺍﺯﮦ ﮐﮭﻼ ﺭﮐﮭﺘﺎ ﮨﮯ ﺗﻢ ﯾﮧ ﮐﺮﺗﮯ ﺭﮨﻨﺎ ‘ ﺗﻤﮩﺎﺭﮮ ﺩﺭﻭﺍﺯﮮ ﭘﺮ ﻣﯿلہ ﻟﮕﺎ ﺭﮨﮯ ﮔﺎ ‘‘ ﻣﯿرے قدموں کا رخ خود بخود گھر کی طرف ہوﮔﯿﺎ کیونکہ ﻣﺠﮭﮯ ﺍﻧﺴﺎﻥ ﺳﮯ ﺑﻨﺪﮦ ﺑﻨﻨﮯ ﮐﺎ نسخہ ء کیمیاء ﻣﻞ ﮔﯿﺎ تھا
  7. جہاں کسی کو معاف کرنا مُشکل ہو جائے وہیں سے درگزر کرنے کا مقام شروع ہو جاتا ہے معاف اُسی کو کیا جاتا ہے جسے معاف کرنا بہت ذیادہ مشکل لگتا ہو کیونکہ کبھی کبھی انسان واقعی ہار جاتا ہے اسے زندگی کی حقیقت سمجھ آ جاتی ہے خاموش رہتےرہتے یا پھر صبر کرتے کرتے کسی سے بلا وجہ امیدیں رکھتےرکھتے اور رشتے نبھاتے نبھاتے پھر ان رشتوں کو صفائیاں دیتے دیتے اپنوں کو مناتے مناتے سب حاصل ہو جاتا ہے تو جس سے محبت کی جائے تو پوری دیانت داری سے محبت کرتے رہو اور جِس سے محبت کرتے ہو اگر اس کی ذات سے تکلیف ہوئی ہو تو اسے معاف کر دو اور اُسے کہہ دو کہ جاؤ تُم اللّه سوہنے کے حوالےکیا اور خود کو بھی اللہ سوہنے کے حوالے کر کے جینا سیکھو روح کی تسکین اسی اللہ پاک کی محبت میں یے اور معاف کرنے سے اللہ خوش ہوتا ہے ۔۔۔

    1. waqas dar

      waqas dar

      true but sometimes jisse lagaow hu us ki kuch harkatoo per maaf kerna or un se samna kerna b mushkil huta. 

      bahter yahi k un se side maar li jaye.. 

  8. Hareem Naz

    [Quiz] General Knowledge Level 1

    I just completed this quiz. My Score 30/100 My Time 111 seconds  
  9. Hareem Naz

    Khaliq se taulaq

  10. Hareem Naz

    ilhami Mohabbat

    وہ دل جو محبت کر چکا ہو دنیا میں کسی کو محبت کیوں عطا ہوتی ہے؟ یہ ہے وہ سوال جو ہم میں سے بہت کم سمجھ پاتے ہیں۔ محبت صرف اسلئے نہیں ہوتی کہ کسی کو حاصل کر لیا جائے۔ کسی کو حاصل کرنے کیلئے تو اور دوسرے ہزاروں معمولی راستے موجود ہیں۔ نہیں جناب! اگر کسی کو یہاں محبت عطا ہوتی ہے تو اسکا ہرگز یہ مطلب نہیں ہوتا کہ کسی کو حاصل کرنے کے گرد زندگی بن لی جائے۔ محبت تو وہ ضرب ہے جس کے بعد دل پہلے سا نہیں رہتا۔ محبت کی بھٹی میں سمجھیں جل کر کندن ہو جاتا ہے۔ ایک پارس پتھر بن جاتا ہے جس سے ٹکرا کر ہم کسی بھی شئے کو سونا بنانے پر قادر ہو جاتے ہیں۔ اسی محبت کی ضرب سے دنیا کا سب سے خوبصورت آرٹ جنم لیتا ہے، بے حقیقت سا چراوہا بادشاہتیں چھین لیتا ہے، رب ملتا ہے۔۔۔۔۔۔ محبت میں ہارنے والوں کو لگتا ہے کہ جانے والا محبوب شائید انکا سب کچھ لے گیا۔۔۔۔۔۔۔ کہ اب نہ تو ستاروں میں روشنی باقی رہی، نہ پھولوں میں خوشبو اور نہ بلبل میں نغمہ۔ پر وہ سب سے قیمتی شئے تو آپ کے پاس ہی چھوڑ گیا۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ وہ دل جو محبت کر چکا ہو۔ جس کے پاس یہ دل ہے وہ اس دنیا سے ہزار ہا درجے خوبصورت دنیا خود تخلیق کر سکتا ہے اگر وہ محبت کو اصل طاقت کو جان جائے۔۔۔!!
  11. زندگی اور قسمت کا پتا اگر زائچوں،پانسوں، اعداد،لکیروں اور ستاروں سے لگنے لگتا تو پھر اللہ انسان کو عقل نہ دیتا ،صرف یہی چیزیں دے کر دنیا میں اتار دیتا ۔۔۔۔جب مستقبل بدل نہیں سکتے تو اسے جان کر کیا کریں گے ؟بہتر ہے غیب،غیب ہی رہے،اللہ سے اس کی خبر کی بجائے اس کا رحم اور کرم مانگنا زیادہ بہتر ہے۔

  12. Hareem Naz

    انصاف کرو

    behtreen
  13. #انسان سمجھتا ہے کہ وہ دنیا کی طرف قدم بڑھا رہا ہے مگر سوچنے پر یہ کھلتا ہے کہ موت کی سمت اس کے قدموں کا فاصلہ گھٹتا جا رہا ہے۔ وہ سمجھتا ہے کہ دنیا صرف اسی کی ہے اور دنیا اسے ہر دن ایک انچ اپنے اندر سے نکال کر موت کی وادی کی طرف دھکیل دیتی ہے۔۔۔۔۔!!

     مگر یہ قدموں کے فاصلے کون گنتا ہے۔ یہاں تو صرف دوڑ ہے۔ ایک مسمریزم کی دوڑ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔!!

     آگے اور بہتر سے بہتر پانے کی دوڑ۔ کیا کچھ گنوانا پڑتا ہے اس دوڑ میں۔ دل، آرزوئیں، تمنائیں، محبتیں۔ سبھی کچھ۔ مگر کوئی #خسارے سے پہلے کچھ سوچتا ہی کب ہے۔"

  14. Hareem Naz

    سمجھتا نہیں ہے وہ

    کوئی محوِ رقص ہے, تو ____کوئی گُم ہے خیالِ یار میں یہ عشق کے رنگ ہیں, نہیں کچھ کسی کے اختیار میں....... !!
  15. Hareem Naz

    سمجھتا نہیں ہے وہ

    لاجواب شاندار زبردست
  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

×