Jump to content

Please Disable Your Adblocker. We have only advertisement way to pay our hosting and other expenses.  

Profile Song


Information

Group

Sweet Friend

Content Count

841

Birthday

09/09/1997

Last visited


Joined

  1. Hareem Naz

    _*ایک جملے کے لطائف*_ 

    Wah🔥 Supr Owsum♥️
  2. *ایک فارسی حکایت*

    ابوسعید ابوالخیر سے کسی نے کہا؛ 
    ’’کیا کمال کا انسان ھو گا وہ جو ھوا میں اُڑ سکے۔‘‘

    ابوسعید نے جواب دیا؛ ’’یہ کونسی بڑی بات ھے، یہ کام تو مکّھی بھی کر سکتی ھے۔‘‘

    ’’اور اگر کوئی شخص پانی پر چل سکے اُس کے بارے میں آپ کا کیا فرمانا ھے؟
    ’’یہ بھی کوئی خاص بات نہیں ھے کیونکہ لکڑی کا ٹکڑا بھی سطحِ آب پر تیر سکتا ھے۔‘

    '’تو پھر آپ کے خیال میں کمال کیا ھے؟‘‘

    ’’میری نظر میں کمال یہ ھے کہ لوگوں کے درمیان رھو اور کسی کو تمہاری زبان سے تکلیف نہ پہنچے۔
    جھوٹ کبھی نہ کہو، 
    کسی کا تمسخر مت اُڑاؤ۔ 
    کسی کی ذات سے کوئی ناجائز فائدہ مت اُٹھاؤ، یہ کمال ھیں۔

    یہ ضروری نہیں کہ کسی کی ناجائز بات یا عادت کو برداشت کیا جائے، یہ کافی ھے کہ کسی کے بارے میں بن جانے کوئی رائے قائم نہ کریں۔

    یہ لازم نہیں ھے کہ ھم ایک دوسرے کو خوش کرنے کی کوشش کریں، یہ کافی ھے کہ ایک دوسرے کو تکلیف نہ پہنچائیں۔

    یہ ضروری نہیں کہ ھم دوسروں کی اصلاح کریں، یہ کافی ھے کہ ھماری نگاہ اپنے عیوب پر ھو۔

    حتّیٰ کہ یہ بھی ضروری نہیں کہ ھم ایک دوسرے سے محبّت کریں، اتنا کافی ھے کہ ایک دوسرے کے دشمن نہ ھوں۔

    دوسروں کے ساتھ امن کے ساتھ جینا کمال ھے

     

  3. Hareem Naz

    Raah e zindagani

    میں راہِ زندگانی پر قدم جب بھی بڑھاتا ہوں کہیں کانٹوں سے بچنا ہے کہیں دل کو کچلنا ہے کہیں اپنوں کی بے رخیاں کہیں غیروں کے طعنے ہیں میں تھک کر بیٹھ جاتا ہوں نگاہ اوپر اٹھاتا ہوں خدایا رستہ مشکل ہے میں ہمت کم ہی پاتا ہوں کہیں پھر پاس سے دل کے صدا اک خوب آتی ہے کہ راہیں جنّتوں کی کب بھلا آسان ہوتی ہیں ،،؟ کہیں صحرا کی تپتی ریت کہیں طائف کے پتھر ہیں کہیں اپنے ہی تلواریں لیے اس جاں کے در پے ہیں اگرچہ ہے بہت مشکل مگر اس راہ سے پہلے بھی کتنے لوگ گزرے ہیں انہی قدموں پہ چلنا ہے کہ پھر اک حسین منزل تمہاری منتظر ہو گی بس یہ یاد رکھنا تم منازل جب حسیں ہوں تو راہیں دشوار ہوتی ہیں ۔۔۔۔۔
  4. زلف تھی جو بکھر گئی - رخ تھا کہ جو نکھر گیا

    ہائے وہ شام اب کہاں -- ہائے وہ اب سحر کہاں

     

     

  5. Hareem Naz

    Wajah e zindagi

    ﺁﺝ ﺍﯾﺴﺎ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﺑﮍﮮ ﺳﺎﺩﮦ سے ﻟﻔﻈﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﻭﺟﮧِ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﮐﮩﮧ ﮐﮯ ﻭﺻﻞ ﮐﯽ ﺿﺮﻭﺭﺕ ﭘﺮ ﭘﮭﺮ ﺳﮯ ﺯﻭﺭ ﺩﯾﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺁﺝ ﺍﯾﺴﺎ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﺫﮐﺮ ﻭﮦ ﮨﯽ ﮐﺮﺗﮯﮨﯿﮟ ﻧﺎﻡ ﺍﻭﺭ ﺩﯾﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺿﺒﻂ ﮐﮯ ﮐﻨﺎﺭﻭﮞ ﺳﮯ ، ﺩﺭﺩ ﺁﻥ ﻟﭙﭩﺎ ﮨﮯ ﭨﻮﭨﺘﮯ ﮐﻨﺎﺭﮮ ﺍﺏ ﺩﺭﺩ ﺍﻭﺭ ﺩﯾﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺁﺝ ﺍﯾﺴﺎ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﺩﺭﺩ ﺳﮯ ﺍﻟﺠﮭﺘﮯﮨﯿﮟ ﺿﺒﻂ ﭼﮭﻮﮌ ﺩﯾﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺗﺎﺭ ﺗﺎﺭ ﺩﺍﻣﻦ ﮐﻮ ﺧﺎﺭ ﺧﺎﺭ ﺭﺍﮨﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺭﻧﺠﺸﯿﮟ ﺑﮭﻼ ﮐﮯ ﮨﻢ ﺁ ﮐﮯ ﺟﻮﮌ ﺩﯾﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺁﺝ ﺍﯾﺴﺎ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﺧﻮﺩ ﻧﮩﯿﮟ ﭘﻠﭩﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺭﺍﮦ ﻣﻮﮌ ﺩﯾﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺳﺒﺰ ﺳﺒﺰ ﻣﻮﺳﻢ ﻣﯿﮟ ﻻﻝ ﻻﻝ ﺁﻧﮑﮭﻮﮞ ﮐﮯ ﺧﻮﺍﺏ ﮐﯽ ﺭﮔﻮﮞﺳﮯ ﮨﻢ ﺧﻮﮞ ﻧﭽﻮﮌ ﺩﯾﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺁﺝ ﺍﯾﺴﺎ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﯾﮧ ﺑﮭﯽ ﮐﺮ ﮔﺰﺭﺗﮯﮨﯿﮟ ﺧﻮﺍﺏ ﺗﻮﮌ ﺩﯾﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺁﺅ ﺍﺏ ﺩُﻋﺎﺅﮞ ﮐﻮ ﻣﺎﺗﻤﯽ ﺭﺩﺍﺅﮞ ﻣﯿﮟ ﭘﮭﺮ ﺳﮯ ﮐﺮ ﮐﮯ ﺍﻟﻮﺩﺍﻉ ﻣﻮﻗﻊ ﺍﻭﺭ ﺩﯾﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﺁﺝ ﺍﯾﺴﺎ ﮐﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﺩﺭﯾﺎ ﻣﯿﮟ ﺍُﺗﺮﺗﮯ ﮨﯿﮟ ﺭﺏ ﭘﮧ ﭼﮭﻮﮌ ﺩﯾﺘﮯ ﮨﯿﮟ
  6. Hareem Naz

    Shikwa jwb e shikwa

    شکوہ جوابِ شکوہ شکوہ : عمرِ درازی کی صنم بس وحشتیں ہیں عشق میں ہر ایک لمحہ جان لیوا دہشتیں ہیں عشق میں دیکھا جو میں نے جھانک کر حیرت کدوں میں بارہا دیکھی نہیں ہیں باخدا جو حیرتیں ہیں عشق میں ان کی حزینِ داستاں سن کر بڑا ہی دکھ ہوا ساری کی ساری لٹ گئیں جو راحتیں ہیں عشق میں وعدہ وفا کی آڑ میں کرتے رہے بیوپار جو ہیں تخمِ ناہنجار لوٹیں عصمتیں ہیں عشق میں بے چینیوں کا طبل بجتا ہی رہا دل میں مرے یہ جھوٹ ہے کہتے ہیں جو کہ راحتیں ہیں عشق میں مقتل میں جا کے روٹھ بیٹھے ہیں مرے ارمانِ دل پالا تھا ہم کو شوق سے کہ چاہتیں ہیں عشق میں ان کی جفاوؑں کا صنم جب بھی ہوا ہے تذکرہ دلبر گماں ہوتا رہا بس نفرتیں ہیں عشق میں جوابِ شکوہ : عمرِ درازی کی صنم بس راحتیں ہیں عشق میں ہر ایک لمحہ یار کی بس چاہتیں ہیں عشق میں حیرت کدوں میں جھانک کر دیکھا تو ہے تُو نے صنم حیران ہے جن سے جہاں وہ حاجتیں ہیں عشق میں کہتے نہیں اس کو حزیں یہ دلبری شیوہ نہیں دلدار پر کردو فدا جو راحتیں ہیں عشق میں بیوپار جو کرتے رہے جسموں پہ وہ مرتے رہے نفسِ طلب کی باخدا کب حاجتیں ہیں عشق میں دلدار کو دلدار سے فرصت کبھی ملتی نہیں اک پل قضا ہوتا نہیں وہ ساعتیں ہیں عشق میں پالا ہے جن کو شوق سے میرے جنونِ عشق نے ارمانِ دل وہ آج سارے قربتیں ہیں عشق میں جب بھی وصالِ یار کا دلبر گماں ہوتا رہا کامل یقیں ہوتا رہا کہ صحبتیں ہیں عشق میں
  7. ہم سب انسان ہیں الحمداللہ لیکن ہماری شکلوں کی طرح رویے،سوچ اور کردار بھی مختلف ہے اور ہمارا روز مرہ بھی انسانوں میں ہی ہے الحمداللہ یہ بھی ایک نعمت ہے کہ اللہ کریم نے ہم انسانوں کا لشکر وسیع کیا اور اشرف المخلوقات کے مقام پر جا پہنچایا لیکن ہم میں ذیادہ لوگوں کو ایک دوجے سے ہی زیادہ تکلیف پہچتی ہے اورسب سے مزے کی بات جسمانی تکلیف کم اور زبان سے زیادہ سے زیادہ ایک دوسرے کو چوٹ پہچانے کی کوشش کی جاتی ہے اگر ہم ایک دوسرے سے پیار کرنے والے بن جائیں تو بہت حد تک ایسی زبانی جنگوں کے حادثات سے بچا جاسکتا ہے ہمیشہ یاد رکھیں جو آپ کو تکلیف میں دیکھ کر خوش ہو اسے برا نہ کہیں نہ سمجھیں وہ اسکا اپنا رویہ ہے اور جو آپ کا ساتھ دے کر خوش ہو اس پر بھی آمین کریں اور زیادہ توقعات نہ باندھی جائیں کیونکہ ہم انسان ہیں ہماری سوچ ،کردار،روپ بدلتے رہتے ہیں توقعات ہمیشہ غارت کی ڈگر پر چلنے کی عادی ہوتی ہیں لہذا توقعات کو پس پشت ڈال کر معتدل سوچنے کے عادی بنیں تاکہ کوئی بھی آپ کو زخم دینے کا ارداہ بھی کرے تو دے نہ پائے ۔۔۔

    جزاک اللہ خیر

  8. Hareem Naz

    ghazal غزل

    ﺩﻝ ﮨﯽ ﺟﻠﻨﮯ ﺩﻭ ﺷﺐ_ ﻏﻢ ﺟﻮ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﻮﺋﯽ ﭼﺮﺍغ 🖤 ﮐﭽﮫ ﺍﺟﺎﻻ ﺗﻮ ﺭﮨﮯ ﮔﮭﺮ ﻣﯿﮟ ﺳﺤر ﮨﻮﻧﮯ تک!🖤
  9. Hareem Naz

    ghazal غزل

    Bht khoob
  10. Hareem Naz

    گناہ نظم

    لاجوااااااااااااااااب...!!
  11. تیری یادوں کے میلے روز لگتے ہیں

     آ دیکھ یوں سرِ شام مجھے__________________♥

  12. Hareem Naz

    Dhoop Chaaon ka Mosam

    کوئی دھوپ چھاؤں کا موسم ہو. اور مدھم مدھم بارش ہو💕 ہم گہری سوچ میں بیٹھے ہوں سوچوں میں سوچ تمھاری ہو💕 اُس وقت تم ملنے آجاؤ اور خوشی سے پلکیں بھاری ہو💕 ہم تم دونوں خاموش رہیں اور زباں پہ آنکھیں ہاوی ہو💕 تم تھام لو میرے ہاتھوں کو اور لفظ زباں سے جاری ہوں💕 میں تم سے محبت کرتی ہوں اور جذبوں میں سرشاری ہو💕 ہاتھوں کی لیکریں مل جائیں سنگ چلنے کی تیاری ہو💕 سب خوابوں کو تعبیر ملے اور ہم پر خوشیاں واری ہو💕 کوئی دھوپ چھاؤں کا موسم ہو اور مدھم مدھم بارش ہو💕
  13. ہر وقت فضاؤں میں، محسوس کرو گے تم
    میں پیار کی خوشبو ہوں مہکوں گی زمانوں تک,,,,,,

Community Reputation

Hareem Naz last won the day on November 19

Hareem Naz had the most liked content!

1,541 Super Star

Recent Profile Visitors

24,992 profile views
  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

×