Jump to content

Welcome to Fundayforum. Please register your ID or get login for more access and fun.

Signup  Or  Login

house fdf.png

ADMIN ADMIN

Hareem Naz

Sweet Friend
  • Content Count

    851
  • Joined

  • Last visited

  • Days Won

    67

Hareem Naz last won the day on January 13

Hareem Naz had the most liked content!

Community Reputation

1,556 Super Star

About Hareem Naz

  • Rank
    Celebration Time
  • Birthday 09/09/1997

Profile Information

  • Gender
    Female
  • Interests
    islamic books songs
  • Location
    lahore,pak

Contact Methods

Recent Profile Visitors

25,979 profile views
  1. Hareem Naz

    Dard e tanhai

    اب جو بچھڑے ہیں تو احساس ہوا ہے ہم کو درد کیا ہوتا ہے تنہائی کسے کہتے ہیں چار سو گونجتی رسوائی کسے کہتے ہیں اب جو بچھڑے ہیں تو احساس ہوا ہے ہم کو کوئی لمحہ ہو تِری یاد میں کھو جاتے ہیں اب تو خود کو بھی میسر نہیں آپاتے ہیں رات ہو دن ہو ترے پیار میں ہم بہتے ہیں درد کیا ہوتا ہے تنہائی کسے کہتے ہیں اَب جو بچھڑے ہیں تو احساس ہوا ہے ہم کو جو بھی غم آئے اُسے دل پہ سہا کرتے تھے ایک وہ وقت تھا ہم مل کے رہا کرتے تھے اب اکیلے ہی زمانے کے ستم سہتے ہیں درد کیا ہوتا ہے تنہائی کسے کہتے ہیں اب جو بچھڑے ہیں تو احساس ہوا ہے ہم کو ہم نے خوداپنے ہی رستے میں بچھائے کانٹے گھر میں پھولوں کی جگہ لاکے سجائے کانٹے زخم اس دِل میں بسائے ہوئے خود رہتے ہیں درد کیا ہوتا ہے تنہائی کسی کہتے ہیں اب جو بچھڑے ہیں تو احساس ہوا ہے ہم کو یوں تو دنیا کی ہر اک چیزحسیں ہوتی ہے پیار سے بڑھ کے مگر کچھ بھی نہیں ہوتی ہے راستہ روک کے ہر اک سے یہی کہتے ہیں اب جو بچھڑے ہیں تو احساس ہوا ہے ہم کو درد کیا ہوتا ہے تنہائی کسے کہتے ہیں چار سو گونجتی رسوائی کسے کہتے ہیں اب جو بچھڑے ہیں تو……….!!
  2. میرے خمیر میں گُوندھی--- نہیں گئی ہجرت 

    میں تیرے بعد بھی تیرے نگر میں رہتی ہوں۔

  3. بہلتے کس جگہ ، جی اپنا بہلانے کہاں جاتے تری چوکھٹ سے اُٹھ کر تیرے دیوانے کہاں جاتے نہ واعظ سے کوئی رشتہ، نہ زاہد سے شناسائی اگر ملتے نے رندوں کو تو پیمانے کہاں جاتے خدا کا شکر ، شمعِ رُخ لیے آئے وہ محفل میں جو پردے میں چُھپے رہتے تو پروانے کہاں جاتے اگر ہوتی نہ شامل رسمِ دنیا میں یہ زحمت بھی کسی بے کس کی میّت لوگ دفنانے کہاں جاتے اگر کچھ اور بھی گردش میں رہتے دیدہِ ساقی نہیں معلوم چکّر کھا کے میخانے کہاں جاتے خدا آباد رکّھے سلسلہ اِس تیری نسبت کا وگرنہ ہم بھری دنیا میں پہچانے کہاں جاتے نصیرؔ اچھا ہوا در مل گیا اُن کا ہمیں ، ورنہ کہاں رُکتے ، کہاں تھمتے ، خدا جانے کہاں جاتے
  4. Hareem Naz

    Ishq zada

    thanks@pinkpari
  5. Hareem Naz

    Happy Birthday Hareem Naz

    Thanks
  6. Hareem Naz

    Ishq zada

    Nice
  7. Hareem Naz

    Ishq zada

    َموت بر حق ہے یہ ایمان ہے میرا لیکن تم مجھے مار کے کہتے ہو خدا نے مارا تم چراغوں کو بجھانے میں بہت ہو مشاق اور یہ الزام لگاتے ہو، ہوا نے مارا مجھ کو پہچان لو میں عشق زدہ، ہجر زدہ ہاں مرے بارے میں لکھ دو کہ وفا نے مارا بیچ کر جھوٹی مسیحائی منافعے کے لیے کتنے آرام سے کہتے ہو وبا نے مارا قتل کر پاتے مجھے کانٹے یہ جرات ان کی میں تو وہ گُل ہوں جسے دستِ صبا نے مارا کوئی مرتا ہے سڑک پر کوئی بیماری سے ہائے وہ شخص جسے چشمِ خفا نے مارا کیا ہی اچھا تھا کہ تُو چپ ہی کھڑا رہ جاتا اک مسافر تھا جسے تیری صدا نے مارا لوگ لکھیں گے مِرے بارے مرے مرنے پر ایک صحرائے محبت کو گھٹا نے مارا مرنے والا تری نفرت سے کہاں تھا فرحت میرے دل کو تو محبت کی شفا نے مارا !!
  8. Hareem Naz

    اے کوزہ گر

    Bht khoob
  9. Hareem Naz

    ♡Yadoon k silsaly♡

    رکو لہرو ا نہیں بھی سنگ لے جاؤ۔۔۔۔ میرے دامن سے کہیں دور لے جاؤ۔۔۔۔ مجھے یہ غم تیری یادوں سے۔۔۔۔ پل پل آشنا کرتے ہیں۔۔۔۔۔ مجھے جینے نہیں دیتے۔۔۔۔ مجھے رونے نہیں دیتے۔۔۔۔ نہیں دیتے مجھے سونے۔۔۔۔ مجھے الجھا کے رکھتے ہیں۔۔۔۔ بہت ہی تنگ کرتے ہیں۔۔۔ یہ میرے سنگ رہتے ہیں۔۔۔ انہیں تم ساتھ لے جاؤ۔۔۔۔۔ مجھے چند خوشیاں دے جاؤ۔۔۔ سنو لہرو میرے غموں کو سنبھل کر لے جانا۔۔۔ کے اس میں کہیں اجنبی لوگوں کی کچھ یادوں کے سلسلے ہیں۔۔۔۔۔ بے معانی وعدے ہیں اس کا کچھ احساس باقی ہے۔ کہے جو الفاظ جانے سے قبل ایک لمحہ پہلے۔۔۔۔ خداحافظ کے وہ الفاظ باقی ہیں۔۔۔۔۔
  10. اُس کی نظر کے سنگ سے__، مَیں آئنہ مثال..

    ٹوٹا تو ٹوٹ کر بھی____، اُسے دیکھتا رہا.. !

  11. مرد کی ذات ایک سمندر سے مشابہ ہے - 
    اس میں پرانے پانی بھی رستے بستے ہیں اور نئے دریا بھی آ کر گلے ملتے ہیں 
    سمندر سے پرانی وفا اور نیا پیار علیحدہ نہیں کیا جا سکتا - وہ ان دونوں کے لئے کٹ مرے گا 
    لیکن عورت اس جھیل کی مانند ہے 
    جس کا ہر چشمہ اس کے اندر سے ہی نکلتا ہے - ایسے میں جب کہ جھیل کی زندگی اور ہے اور سمندر اور طرح سے رہتا ہے 
    ان دونوں کا ہمیشہ یکجا رہنا کس قدر مشکل ہے مچھلی اور ابابیل کے سنجوگ کی طرح ۔۔۔۔۔۔!

    ماں جی بانو قدسیہ  ۔  ۔  ۔

  12. میں اپنے گھر میں ہی۔۔۔ اجنبی سا ہو گیا ہوں!

    مُجھے یہاں دیکھ کر ۔۔۔ میری رُوح ڈر گئی ہے!

    شام کی سب آرزؤئیں۔۔۔ کونوں میں جا چُھپی ہیں!

    لوئیں بُجھا دی ہیں۔۔۔ اپنے چہروں کی، حسرتوں نے،

    کہ شوق پہچانتا ہی نہیں!

    مُرادیں۔۔۔ دہلیز پر سر رکھ کر مر گئی ہیں!

    میں کسی وطن کی تلاش میں،

    یوں چلا تھا گھر سے،

    کہ اپنے گھر میں بھی۔۔۔ اجنبی ہو گیا ہوں!

  13. قرآن کا مکھی کے بارے میں حیرت انگیز چینلج ۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    " لوگو! ایک مثال بیان کی جا رہی ہے، ذرا کان لگا کر سن لو!  اللہ کے سوا جن جن کو تم پکارتے رہے ہو وہ ایک مکھی بھی پیدا نہیں کر سکتے گو سارے کے سارے ہی جمع ہو جائیں، بلکہ اگر مکھی ان سے کوئی چیز لے بھاگے تو یہ تو اسے بھی اس سے چھین نہیں سکتے (الحج)
    مکھی بنانا تو خیر بہت دور کی بات ہے لیکن چیلنج کا دوسرا حصہ کافی دلچسپ ہے کہ اگر وہ کوئی چیز لے کر بھاگ جائے تو وہ بھی واپس نہیں لے سکتے ۔
    کیا آپ جانتے ہیں کہ یہ واقعی نا ممکن ہے ؟
    بھلا کیسے ؟
    شائد آپ کے علم میں نہ ہو کہ مکھی غالباً دنیا کا واحد جانور ہے جو خوارک اپنے منہ میں ڈالنے سے پہلے ہی ہٖضم کرنا شروع کر دیتا ہے ۔ مکھی خوراک اپنی ٹانگوں میں اٹھاتے ہی اس پر اپنے منہ سے ایک کیمائی محلول ڈالتی ہے یا یوں کہہ لیں کہ الٹی کرتی ہے جو فوراً اس چیز پر پھیل کر اس کے اجزاء کو توڑ مروڑ کر تحلیل کر لیتی ہے اور اسکو ایک قابل ہضم محلول میں تبدیل کر دیتی ہے ۔ یاد رہے کہ مکھی صرف کھانے پینے کی چیزیں لے کر بھاگتی ہے ۔
    اس انتہائی پیچیدہ کیمیائی عمل کے بعد مکھی کے لیے آسان ہو جاتا ہے کہ وہ اپنی خوراک کو چوس لے ۔ تب وہ اپنے منہ سے ایک ٹیوب نکالتی ہے جسکا منہ ویکیوم کلینر کی طرح چوڑا ہوتا ہے ۔ اس ٹیوب سے وہ اس چیز کو چوس لیتی ہے ۔
    مکھی اپنی لے کر بھاگی ہوئی چیز کو چند ہی لمحوں میں کسی اور چیز میں تبدیل کر دیتی ہے ۔ جسکو دنیا کی جدید ترین لیبارٹریز اور سارے سائنس دان مل کر بھی اپنی اصل حالت میں واپس نہیں لا سکتے ۔
    بلکہ اگر مکھی ان سے کوئی چیز لے بھاگے تو یہ تو اسے بھی اس سے چھین نہیں سکتے ۔۔۔۔ یہ قیامت تک لے لیے اللہ کا چیلنج ہے اللہ کا انکار کرنے والوں اور تمام جھوٹے خداؤوں کے لیے

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

×