Jump to content

Welcome to Fundayforum. Please register your ID or get login for more access and fun.

Signup  Or  Login

house fdf.png

ADMIN ADMIN

Hareem Naz

Sweet Friend
  • Content Count

    866
  • Joined

  • Last visited

  • Days Won

    69
  • Points

    527 [ Donate ]

Hareem Naz last won the day on July 5

Hareem Naz had the most liked content!

Community Reputation

1,565 Super Star

About Hareem Naz

  • Rank
    Celebration Time
  • Birthday 09/09/1997

Profile Information

  • Gender
    Female
  • Interests
    islamic books songs
  • Location
    lahore,pak

Contact Methods

Recent Profile Visitors

28,031 profile views

Single Status Update

See all updates by Hareem Naz

  1. مجهے مارکیٹ جا نا تها ، دوست کے لئے

    بہترین سا گفٹ خریدنا تها.گاڑی نکال هی رها تها ،کہ ایک مرد قریب آکر کهڑا

    هو گیا، بولا بھائی جی!بہت غریب هوں کچه مدد کر دیں،

    مجهے غصہ آگیا ،بس تم لوگ جہاں گاڑی دیکهتے هو

    فورا پہنچ جاتے هو اپنی ضرورتیں بتانے، وہ بولا!

    نہیں بھائی جی ،جهوٹ نہیں کہه رها میں واقعی

    ضرورتمند هوں ،سردی بہت هے اور میرے پاس کوئی

    گرم کپڑا نہیں مجهے کوئی گرم کپڑا دے دیں

    آپ کا بهلا هو گا،

    هو گیئں تمہاری فرمائشیں شروع ،اگلی بات بهی ساتهہ

    هی بتا دو،میں نے طنز کیا ،وہ گاڑی کے ساتهہ ساتهہ چلنے

    لگا ،نہیں بھائی جی اور کچهہ نہیں مانگتا بس گرم کپڑا

    دے دو ،اپنی کوئی اترن دے دو میرا وقت گزر جائے گا ،اپنی اترن دے دو بھائی جی ،میرا غصہ اور بڑهہ گیا .هٹو راستے سے .مجهے دیر هو رهی هے، وہ سہم کر پیچهے هٹ گیا اور میں نے گاڑی کی رفتار تیز کر دی مارکیٹ ابهی دور تهی کہ گاڑی ٹریفک جام میں پهنس گئی

    پتہ چلا کہ سڑک پر مرمت کا کام هو رها هے اس لئے نکلنے میں ٹائم لگے گا ،سخت کوفت هوئی مگر مجبوری تهی ،رکنا پڑا وقت گزارنے کے لئے ادهر ادهر دیکهنے لگا ،

    قریب هی فٹ پاتهہ پر ایک بهکارن پاوں پهیلائے

    بیٹهی تهی ،میری نظر اس پر ٹک گئی ,اس کے بائیں

    هاتهہ میں دو روٹیاں تهیں ،ان پر سالن نام کی کوئی

    چیز رکهی تهی ،پهیلی هوئی گود میں بهی روٹی کے

    کچهہ ٹکڑے پڑے تهے ،اس نے اپنے هاتهہ میں پکڑی هوئی

    روٹی کا نوالا توڑا ،اسے سالن میں ڈبویا اور اپنے منہ میں

    ڈال لیا ،پهر گود میں پڑے هوئے ٹکڑوں میں سے ایک ٹکڑا

    اٹهایا اور خود سے تهوڑے فاصلے پر بیٹهے هو ئے کتے کے

    آگے رکهہ دیا ,وہ بهی شائد بهوکا تها ،فورا کهانے لگا .

    میں توجہ سے اسے دیکهنے لگی .وہ بار بار ایسا هی

    کرتی، ایک نوالہ اپنے منہ میں ڈالتی اور ایک ٹکڑا کتے کے

    آگے رکهہ دیتی ،پهر یہ هوا کہ گود میں رکهے هوے ٹکڑے

    ختم هو گئے،اسنے اپنے لئے نوالہ بنایا، منہ میں رکهنے لگی تو اس کی نظر کتے پر پڑی، وہ اسے هی دیکهہ رها تها، جانے کیا سوچ کر اس نے اپنے هاتهہ میں پکڑی هوئی بقیہ روٹی اس کے آگے رکهہ دی، لے ،تو کها لے، میں اس کی آواز بخوبی سن سکتا تها وہ بولی میرا کیا هے اتنی گاڑیاں کهڑی هیں، ابهی اٹهہ کے مانگوں گی،کوئی ڈانٹے گا،کوئی دهتکارے گا، اور کوئی مدد بهی کر دے گا ،میرا پیٹ بهر جائے گا مگر تو بے زبان کیسے اٹهے گا ،تیرا تو پاوں زخمی هے، یہ کہه کر وہ بے نیازی سے اٹهی اور گاڑیوں کی لمبی قطار میں گم هو گئی، مجهے یوں

    لگا جیسے میں آسمان سے زمین پر آ گرا هوں

    مجهہ سے تو اس نے صرف اترن مانگی تهی ،منہ کا نوالہ نہیں...

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

×