Jump to content

Welcome to Fundayforum. Please register your ID or get login for more access and fun.

Signup  Or  Login

house fdf.png

ADMIN ADMIN

Jannat malik

Sweet Friend
  • Content Count

    804
  • Joined

  • Last visited

  • Days Won

    51
  • Points

    883 [ Donate ]

Jannat malik last won the day on May 28

Jannat malik had the most liked content!

Community Reputation

2,172 Incredible

About Jannat malik

  • Rank
    Celebration Time
  • Birthday 07/12/1996

Profile Information

  • Gender
    Female
  • Interests
    Instagram , Sleeping
  • Location
    Pakistan

Contact Methods

  • Instagram
    jannat.aryan

Recent Profile Visitors

22,523 profile views
  1. Jannat malik

    Deewan-e-Urdu (دیوان اردو )

    ‏عین ممکن ہے کہ وہ اظہار پہ چھوڑ ہی دے ہم نے خاموش محبت کو غنیمت جانا- 🍁
  2. خاموش چاہتوں کی مہک اُس طرف بھی ہے جو میرے دل میں ہے وہ کسک اُس طرف بھی ہے کربِ شبانِ ہجر سے ہم بھی ہیں آشنا آنکھوں میں رتجگوں کی جھلک اُس طرف بھی ہے ہیں اُس طرف بھی تیز بہت، دل کی دھڑکنیں بے تاب چوڑیوں کی کھنک اِس طرف بھی ہے شامِ فراق اشک اِدھر بھی ہیں ضوفشاں پلکوں پہ جگنوؤں کی دمک اُس طرف بھی ہے سامان سب ہے اپنے تڑپنے کے واسطے ہے زخمِ دل ادھر تو نمک اس طرف بھی ہے باقی ہم اہلِ دل سے یہ دنیا بھی خوش نہیں جائیں کہاں کہ سر پہ فلک اس طرف بھی ہے۔
  3. ``《تیرے علاوہ اور کیا سوچیں.......♥
    یہ سوچ سوچ کے سر دکھتا ہے 》``♥♥

    1. Hareem Naz

      Hareem Naz

      Had e hogyi na socha kro

  4. ‏بہت مہنگی پڑتی ہے وہ محبت

    جہاں خود کو سستا کر دیا جائے ...!

  5. Jannat malik

    کچھ تو ہم بھی لکھیں گے

    . سڑک کنارے بیٹھا تھا کوئی جوگی تھا یا روگی تھا کیا جوگ سجائے بیٹھاتھا ؟ کیا روگ لگائے بیٹھا تھا ؟ تھی چہرے پر زردی چھائی اور نیناں اشک بہاتے تھے تھے گیسو بکھرے بکھرے سے جو دوشِ ھوا لہراتے تھے تھا اپنے آپ سے کچھ کہتا اور خود سن کے ھنس دیتا تھا کوئی غم کا مارا لگتا تھا کوئی دکھیاراسا لگتا تھا اس جوگی کو جب دیکھتے تھے ھر بار یہی ھم سوچتے تھے کیا روگ لگا ھے روگی کو کس شے کا سوگ ھے جوگی کو ؟ اک دن اس نے کوچ کیا اور سارے دھندے چھوڑ گیا وہ جوگی ، روگی ، سیلانی سارے ھی پھندے توڑ گیا پھر اپنا قصہ شروع ھوا اک مورت دل میں آ بیٹھی نین نشیلے ، ھونٹ رسیلے چال عجب متوالی سی روپ سنہرا ، چاند سا چہرا زلفیں کالی کالی سی ھنسے تو پائل بجتی تھی روئے تو جل تھل ھو جائے بینا کی لے تھی لہجے میں کہ سننے والا سو جائے وہ چلے تو دنیا ساتھ چلے جو رکے تو عالم تھم جائے ھو ساتھ تو دھڑکن تیز چلے دوری سے سانس یہ جم جائے کچھ قسمیں ، وعدے ، قول ھوئے انمول تھے وہ ، بِن مول ھوئے تھے سونے جیسے دن سارے راتیں سب چاندی کی تھیں امبر کا رنگ سنہرا تھا جہاں قوس و قزاح کا پہرا تھا اک دن یونہی بیٹھے بیٹھے کچھ بحث ھوئی ، تکرار ھوئی وہ چلدی روٹھ کے بس یونہی میں سوچ میں تھا بیکار ھوئی کچھ دن گذرے پھر ہفتہ بھی نا دیکھا ، نا ملاقات ہی کی ناراض تھی وہ ، ناراض رہی نا فون پہ اس نے بات ہی کی جب ملی تو صاف ہی کہہ ڈالا وہ بچپن تھا نادانی تھی کیا دل سے لگائے بیٹھے ھو ؟ وہ سب کچھ ایک کہانی تھی تھی دل پہ بیتی کیا اس پل ؟ تم لوگ سمجھ نہ پاؤگے جب تم پر یہ سب بیتے گا یہ روگ سمجھ ہی جاؤ گے سب یاد دلائے عہدِ وفا وہ قسمیں، قول، قرار سبھی سکھ، دکھ میں ساتھ نبھانے کے وہ وعدے اور اقرار سبھی وہ ہنس کے بولی ، پاگل ہو ؟ کبھی وعدے پورے ھوتے ہیں ؟ کیا اتنا بھی معلوم نہیں ؟ یہ عہد ادھورے ھوتے ہیں تمہیں علم نہیں نادان ھو تم کب قسم نبھائی جاتی ھے ؟ کس دیس کے رھنے والے ہو ؟ یہ قسم تو کھائی جاتی ہے وہ ہنس کے چلدی راہ اپنی اور صبر کا دامن چھوٹ گیا آنکھوں سے جھیلیں بہہ نکلیں اور ضبط بھی ہم سے روٹھ گیا میں آج وہاں پر بیٹھا ھوں جس جگہ پہ کل وہ جوگی تھا یہ آج سمجھ میں آیا ہے کس چیز کا آخر روگی تھا۔۔ ❤❤
  6. پھر اُس نے مختصر 
    کر دی گُفتگُو... 
    جب اُس کے رابطے میں
    کوئی اور آ گیا...💔

  7. 🔸ســـبق آموز تحــریر ضرورپڑھـــیں🔸🔸 🔶ایک کـــوا جنـــگل میں رہتا تھا اور اپنی زنـــدگی سے مطمئـــن تھا ، لیکن ایک دن اس نے ہنـــس کو دیکھ لیااور سوچا ہنـــس اتنا سفـــید ہے اور میں اتنا کالا ، یہ ہنـــس دنیا کا سب سے خـــوش پرندہ ہوگا.🔸 🔶کـــوے نے اپنے خیالات ہنـــس کو بتائے ، ہنـــس نے کہا ، اصل میں مجھـــے لگتا تھا میں سب سے زیادہ خوش ہوں جب تکـــ میں نے طـــوطا نہیں دیکھا تھا ، طوطـــے کے پاس دو مختـــلفـــ رنگ ہیں ، اب میں سوچتا ہوں طـــوطا سب سے زیادہ خـــوش ہوگا🔸 🔶کـــوا طـــوطـــے کے پاس پہنچا ، طـــوطے نے کـــوے کو بتایا ، میں بہت خـــوش زندگی گـــزار رہا تھا ، پھر میں نے مـــور دیکھا ، مـــیرے پاس تو صرف دو رنگـــ ہیں جبکہ مـــور کے پاس کئی رنگـــ ہیں ۔🔸 🔶کـــوا مـــور سے ملنے چـــڑیا گھـــر جا پہنچا ، وہاں کـــوے نے دیکھا کـــہ سیـــنکڑوں لوگـــ مـــور کو دیکھنـــے آئے ہوئے ہیں ، لوگـــوں کے روانہ ہونـــے کے بعد کـــوا مـــور کے قـــریب گیا ۔🔸 🔶کـــوے نے کہا پیارے مـــور ! تم بہت خوبصـــورت ہو ، تمہیں دیکھنے روزانہ ہزاروں افـــراد آتے ہیں ، مجھے لگتا ہے تم دنیا کے سب سے خوش رہنے والے پـــرندے ہو ۔ مـــور نے جواب دیا ، میں بھی سوچتا تھا میں سب ســـے خوبصـــورت اور خوش پـــرندہ ہو لیکن میں اپنی خوبصـــورتی کی وجہ سے میں چڑیا گھـــر میں مقـــید ہوں ۔ میں نے چڑیا گھـــر پر کافی غورکیا اور مجھے اندازہ ہوا کہ صرف کـــوا وہ واحـــد پـــرندہ ہے جو چـــڑیا گھـــر کے کسی پنجـــرے میں قید نہیں ، پچھلـــے کچھ دنوں سے مجھـــے لگتا ہے اگر میں کـــوا ہوتا تو آزاد ہوتا ۔🔸 🔶ہم انســـانوں کا بھی یہی مســـئلہ ہے ، ہم دوســـروں سے موازنہ کر کـــر کے اپنی خوشـــیاں بـــرباد کر لیتے ہیں ، ہمـــارے پاس جو ہے ہم اس کی قـــدر نہیں کرتے اور یہ سوچ ہمـــیں افســـردگی کے چکـــر میں پھـــنسا لیـــتی ہـــے ۔🔶🔸🔶
  8. پیارے نبی ﷺ نے فرمایا: «إذا دخل رمضانُ فتحت أبواب الجنّة وغلّقت أبواب جهنم وسُلسلت الشیاطین» وفي روایة «أبواب الرحمة» ''جب رمضان آتا ہے تو جنت کے دروازے کھول دیئے جاتے ہیں او رجہنم کےدروازے بند کردیے جاتے ہیں۔ شیاطین جکڑ دیئے جاتے ہیں اور ایک روایت کے مطابق رحمتوں کے دروازے کھول دیے جاتے ہیں۔'' صحیح بخاری: 3035
  9. Jannat malik

    ﻓﺮﯾﺐِ ﺫﺍﺕ ﺳﮯ ﻧﮑﻠﻮ

    ﺭُﻭﺋﮯ ﺩِﻟﺒﺮ ﺑﮭﯽ ﻭﮨﯽ، ﭼﮩﺮۂ ﻗﺎﺗﻞ ﺑﮭﯽ ﻭﮨﯽ ﺗﻮُ ﮐﺒﮭﯽ ﺁﻧﮑﮫ ﻣﻼﺋﮯ ﺗﻮ ﻣﯿﮟ ﭘﮩﭽﺎﻥ ﺳﮑﻮﮞ ﻭﻗﺖ ﯾﮧ ﺍﻭﺭ ﮨﮯ، ﻣﺠﮫ ﻣﯿﮟ ﯾﮧ ﮐﮩﺎﮞ ﺗﺎﺏ ﮐﮧ ﻣﯿﮟ ﯾﺎﺭﯾﺎﮞ ﺟﮭﯿﻞ ﺳﮑﻮﮞ، ﺩُﺷﻤﻨﯿﺎﮞ ﭨﮭﺎﻥ ﺳﮑﻮﮞ
  10.  کہیں دور کھڑی محبت 

    میری بےبسی پہ ہستی ہو گی

  11. ‏مجھے اس کے بنا رہنا نہیں آتا بہت کچھ دل میں آتا ہے مگر کہنا نہیں آتا بہت ہی سخت جاں ہوں میں بہت سے غم اٹھاتی ہوں بس ایک درد جدائی ہے کہ جو سہنا نہیں آتا ہمیشہ نم کناروں کو میری آنکھوں کے رکھتا ہے یہ آنسو کیسا آنسو ہے جسے بہنا نہیں آتا ‏ہمارا مسئلہ شاید کبھی ہل ہو نہ پائے گا تجھے سننا نہیں آتا مجھے کہنا نہیں آتا سزا دیتا ہے دل تیرے ہجر میں یوں خود کو وہاں رہتا ہے اب اکثر جہاں رہنا نہیں آتا....
  12. *گلاب کو دیکھنے کی فرصت ہی نہیں ہے*

    *گلاب سے بھی خوبصورت کوئی آنکھوں میں بس گیا

  13. Jannat malik

    poetry بازوؤں کی چھـتری تھی

    تو نے دیکھا ہی نہیں میرے ساتھ چل کے کبھی میں تو تنہائی کا بھی ساتھ نبھاتا رہا صدیوں💗
  14. یہ ہے مے کدہ یہاں رند ہیں یہاں سب کا ساقی امام ہے یہ حرم نہیں ہے اے شیخ جی یہاں پارسائی حرام ہے جو ذرا سی پی کے بہک گیا اسے میکدے سے نکال دو یہاں تنگ نظر کا گزر نہیں یہاں اہل ظرف کا کام ہے کوئی مست ہے کوئی تشنہ لب تو کسی کے ہاتھ میں جام ہے مگر اس پہ کوئی کرے بھی کیا یہ تو میکدے کا نظام ہے یہ جناب شیخ کا فلسفہ ہے عجیب سارے جہان سے جو وہاں پیو تو حلال ہے جو یہاں پیو تو حرام ہے اسی کائنات میں اے جگرؔ کوئی انقلاب اٹھے گا پھر کہ بلند ہو کے بھی آدمی ابھی خواہشوں کا غلام ہے جگر مراد آبادی
  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

×