Jump to content

Please Disable Your Adblocker. We have only advertisement way to pay our hosting and other expenses.  

Jannat malik

Sweet Friend
  • Content Count

    751
  • Joined

  • Last visited

  • Days Won

    43
  • Points

    488 [ Donate ]

Profile Song

My Favorite Songs

Jannat malik last won the day on December 13 2018

Jannat malik had the most liked content!

Community Reputation

2,136 Incredible

About Jannat malik

  • Rank
    Celebration Time
  • Birthday 07/12/1996

Profile Information

  • Gender
    Female
  • Interests
    Instagram , Sleeping , Fighting , Taunting
  • Location
    Pakistan

Recent Profile Visitors

20,737 profile views
  1. Jannat malik

    Happy New Year 2019

    Happy New Year 2019 Wave a goodbye to the old & embrace the new with full of hope, dream and ambition. Wishing you a happy new year full of happiness! New is the year, new are the hopes, new is the resolution, new are the spirits, and new are my warm wishes just for you. Have a promising and fulfilling New Year! “Cheers to a new year and another chance for us to get it right.” May the joys of new year last forever in your life. May you find the light that guide you towards your desired destination.(Ameen) Happy New Year
  2. Best actor Shahrukh khan Movies and biography etc
  3. Jannat malik

    poetry Share Your Favorite poetry Here

    مجھے روشنی کی تھی جستجو میرا دن ھوا __کسی رات سا !
  4. Jannat malik

    poetry Ishq mai koi raiyaat nahi milne wali

    ترے نام کی تھی جو روشنی اسے خود ہی تونے بجھا دیا نہ جلاسکی جسے دھوپ بھی اَسے چاندنی نے جلادیا میں ہوں گردشوں میں گھرا ہوا مجھے آپ اپنی خبر نیہں وہ شخص تھا میرا رہنما اُسے راستوں میں گنوادیا جسے تو نے سمجھا رقیب تھا وہی شخص تیرا نصیب تھا ترے ہاتھ کی وہ لکیر تھا اسے ہاتھ سے ہی مٹادیا مجھے عشق ہے کہ جنون ہے ابھی فیصلہ ہی نہ ہوسکا مرا نام زینت ِدشت تھا مجھے آندھیوں نے مٹا دیا یہ اداسیوں کا جمال ہے کہ ہمارا اوجِ ِکمال ہے کبھی ذات سے چھپا لیا کبھی شہر بھر کو بتا دیا مری عمر کا ابھی گلستان تو کھلا ہوا ضرور پر وہ پھول تھے تیری چاہ کے انھیں موسموں نے گرا دیا۔!!🌷
  5. Jannat malik

    آپ سے مل کے ہم کچھ بدل سے گئے

    ھمیں شوق اذیت ہے وگرنہ اس زمانے میں تری یادیں بھلانے کو بہت سامان رکھا ہے
  6. اداس شامیں۔۔۔، تلخ باتیں۔۔۔۔،ان کہے الفاظ۔۔۔۔۔
    ،اذیت بھری یادیں، ۔۔۔۔۔سرد جذبات ۔۔۔۔۔نم آنکھیں۔۔۔۔۔ چیختی ہوئی خاموشی۔۔۔۔۔ 
    بے اثر شاعری، 
    تمہارے بنا پھیکی چائے ......
    تمہاری منتظر میں!!!
    ہے نا سب عجیب ......... ؟
    تو چھوڑیے یہ سب ....
    بس ....... شاعری ... چائے ... تُم ... اور ..... میں

    www.fundayforum.com

  7. کبھی کبھی انسان ایک نا معلوم سی کیفیت کا شکار ہو جاتا ہے___ 
    سمجھ نہیں پاتا کہ وہ کس چیز سے نا خوش ہے___
    اپنی زندگی سے؟ حالات سے؟ لوگوں سے؟ یا پھر اپنے آپ سے؟_____
    ماں باپ' بہن بھائی'دوست احباب سب کے پاس ہوتے ہوئے بھی عجیب سا خلا محسوس کرتا ہے____
    ایک بے نام سی کمی____
    گویا وہ کسی اور دنیا کا باسی ہے اور غلطی سے اس دنیا کی طرف آ نکلا ہے___
    وہ جو ہر پل دوسروں کو خوش کرنے میں لگا رہتا ہے اس وقت خود سے ناراض سا ہونے لگتا ہے____
    اس پل وہ ہر چیز سے کٹ جانا چاہتا ہے___
    خاموشی کے جنگل میں گم ہو جانا چاہتا ہے' جہاں اسے خود اپنے وجود کا بھی پتہ نہ مل سکے____ 
    تب وہ بے بس ہو کر سوائے آنسو بہانے کے کچھ نہیں کر سکتا___ 
    آنسو بھی وہ جو نظر نہیں آتے___پونچھے نہیں جا سکتے____ 
    پھر وہ ہوتا ہے اسکی ذات کی الجھنیں ہوتی ہیں اور اسکا اللہ ہوتا ہے____
    وہ جو دنیا کے سامنے ٹوٹنے سے ڈرتا ہے خود پہ مضبوطی کا خول چڑھائے رکھتا ہے 'اس رب تعالی کے آگے ٹوٹ جاتا ہے' بکھر جاتا ہے'کھل جاتا ہے______
    اور وہ____
    وہ ذات اسے سمیٹ لیتی ہے____
    خود سپردگی کا یہ عالم اسے زندگی کی حقیقت سمجھا دیتا ہے___!

  8. _*ایک جملے کے لطائف*_ *ہر آدمی اتنا برا نہیں ہوتا جتنا اس کی بیوی اس کو سمجھتی ہے اور اتنا اچھا بھی نہیں ہوتا جتنا اس کی ماں اس کو سمجھتی ہے۔* *ہر عورت اتنی بری نہیں ہوتی جتنی پاسپورٹ اور شناختی کارڈ کی فوٹو میں نظر آتی ہے اور اتنی اچھی بھی نہیں ہوتی جتنی فیس بک اور واٹس اپ پر نظر آتی ہے۔* *آج کل ‎صابن کےاشتہارت دیکھ کرسمجھ نہیں آتی کہ انہیں کھانا ہے یا ان سے نہانا ہے دودھ،بادام اور انڈے سے بنا بس ذرا سا (LUX)۔* *شوگر کی بیماری اتنی بڑھ گئی ہے کہ لوگ میٹها کهانا پینا تو کیا میٹھا بولنا بهی چهوڑ گئے ہیں۔* *اکثر میاں بیوی ایک دوسرے سے سچا پیار کرتے ہیں اور "سچ ہمیشہ کڑوا ہوتا ہے"۔* *اگر سلاد کھانے سے وزن کم ہوتا تو ایک بھی بھینس موٹی نہ ہوتی۔* *کچھ شادی شدہ افراد گھر میں بیوی سے ٹھڈے کھا کہ باہر دوستوں سے کہتے ہیں آج میں بھینس کے پائے کھا کر آیا ہوں۔* *بےشک دکھ ، حالات اور بیوٹی پارلر انسان کو بدل کر رکھ دیتے ہیں۔* *کچھ خواتین کو کچھ یاد رہے نہ رہے یہ ضرور یاد رہتا ہے کہ ہماری ایک پلیٹ اس کے ہاں گئی تھی ایک پلیٹ اس کے یہاں گئی تھی ابھی تک واپس نہیں آئی۔* *سیلفی کی ابتدا کے بارے میں مختلف نظریات پائے جاتے ہیں. فیس بکی علماء اسے علامہ اقبال کی ایجاد قرار دیتے ہیں ان علماء نے خودی اور سیلفی کا یہ تعلق حال ہی میں دریافت کیا ہے۔* *کچھ لوگوں کی شکل تو بس دال چاول جیسی ہوتی ہے جب کے نخرے بریانی جیسے۔* *آج بہت غور و فکر اور ادراک کی گہرائیوں جاکر دریافت ہوا ہے کہ ناک کو الٹا لکھیں تو کان بنتا ہے۔* *شکر ہے شوہر عام طور پر خوبصورت ہوتے ہیں ورنہ سوچیں اس مہنگائی میں دو لوگوں کا بیوٹی پارلر کا خرچا کتنا بھاری پڑتا۔* *لوگ پتہ نہیں کیسے پرفیکٹ لائف گزار لیتے ہیں ہمارے تو ناشتے میں کبھی پراٹھا پہلے ختم ہوجاتا ہے اور کبھی انڈا۔* *ہم پاکستانی واحد قوم ہیں جو کہتے ہیں بھائی ایک ٹھنڈی Cold Drink تو دینا ۔* *ایک نئی تحقیق کے مطابق، سکون صرف اس گھر میں ہوتا ہے جہاں ایک سے زیادہ چارجر موجود ہوں۔* *اکثر اوقات ہمارا انٹرنیٹ ایسا چلتا ہے جیسے شادی کے دن دلہن لہنگا پکڑ کر چلتی ہے ۔* *شادی کے بعد ہمیں سمجھ آئی کہ ہیرو ہیروین کے ملتے ہی فلم ختم کیوں کر دیتے ہیں۔* *اگر ماں باپ بیٹے کو مولوی بنانے کی کوشش کریں اوربیٹا شاہ رخ خان بننا چاہے تو وہ عامر لیاقت بن جاتا ہے۔* *جو بیوی اپنے شوہر کی ساری غلطیاں معاف کر دیتی ہے وہ بیوی صرف ڈرامے کی آخری قسط میں پائی جاتی ہے۔* *اچھی بیوی وہ ہوتی ہے جو غلطی کر کے شوہر کو معاف کر دیتی ہے۔* *اگر بیوی سے کوئی غلطی ہو جائے تو غلطی ہمیشہ غلطی کی ہی ہوتی ہے۔* *جو لوگ گوشت کھاتے وقت داخلہ پالیسی پہ دھیان نہیں دیتے ان کی خارجہ پالیسی خود مختار ہوجاتی ہے ۔* *پاکستان میں گھی کے ڈبے سے کار تونکل سکتی ہے پر اصلی گھی نہیں۔* *ہسپتال کی نوکری بھی بدترین ہوتی ہے بندہ یہ بھی نہیں کہہ سکتا “میں بیمار ہوں آ نہیں سکتا۔* *ننانوے فیصد پاکستانیوں کو وچلی گل جاننے کا بہت شوق ہوتا ہے۔* *محبت اور نوکری تقریباً تقریباً ایک جیسی ہی ہوتی ہے، بندہ کرتا بھی رہتا ہے اور روتا بھی رہتا ہے۔* *ہم نے ان سب دکانداروں کی لسٹ بنالی ہے جن کا کہنا تھا عمران خان کے وزیراعظم بننے تک ادھار بند ہے۔* *ایمبولنس ہو یا بارات دونوں کو جلدی راستہ دے دینا چاہئے کیونکہ دونوں ہی زندگی کی جنگ لڑنے جا رہے ہوتے ہیں ۔* *صرف ننانوے فیصد پھوپھیوں کی وجہ سے ساری پھوپھو بدنام ہیں۔* *کون کہتا ہے خواتین کی عزت نہیں اگر کوئی خاتون فیس بک پر ا ب ت بھی لکھ دے تو 540 لائیکس اور 890 کمنٹس ایک گھنٹے میں آ جاتے ہیں۔* *ادھیڑ عمری میں عشق ہونا کوئی تعجب کی بات نہیں پرانی گیند ہی ریورس سوئنگ کرتی ہے۔* *کتنی عجیب دنیا ہے، جہاں عورتیں دوسری عورتوں کی شكايت کرتے نہیں تھكتيں جبکہ مرد دوسری عورتوں کی تعریف کرتے نہیں تھکتے, مرد واقعی عظیم ہیں۔* *پرانے زمانے میں جب کوئی اکیلا بیٹھ کر ہنستا تھا، تو لوگ کہتے تھے کہ اس پر کوئی بھوت پریت کا سايا ہے اور آج کوئی اکیلے میں بیٹھ کر ہنستا ہے تو کہتے ہیں مجھے بھی SEND کرو۔* *غور کرو تو دُم دار جانوروں میں کتا ہی تنہا ایسا جانور ہے جو اپنی دُم کو بطور آلہء اظہار خوشی میں استعمال کرتا ہےجبکہ باقی ماندہ جانور تو دُم سے صرف مکھیاں ہی اُڑاتے ہیں۔ اور دنبہ یہ بھی نہیں کر سکتا۔* *(مشتاق احمد یوسفی -مرحوم)* *شادی وہ بندھن ہے جس میں ایک فریق ہمیشہ درست ہوتا ہے... اور دوسرا خاوند۔* *یہ دنیا بھی بڑی عجیب ہے یہاں جو ٹیڑھا ہو اسے چھوڑ دیا جاتا ہے اور جو سیدھا ہو اسے ٹھوک دیا جاتا ہے ۔
  9. ‏انا کے قید خانے کا میں وہ باغی سا مجرم ہوں
    جسے پھانسی چڑھا ڈالا محبّت کے وکیلوں نے.

  10. Jannat malik

    poetry Share Your Favorite poetry Here

    پرندوں کی فطرت سے آۓ تھے وہ میرے دل میں ذرا سے پنکھ نکل آۓ تو آشیانہ ہی چھوڑ دیا
  11. Jannat malik

    poetry Share Your Favorite poetry Here

    نمک کو ہاتھ میں لے کر ستم گر سوچتے کیا ہو ہزاروں زخم ہیں دل پر جہاں چاہو چھڑک ڈالو
  12. مستقل محرومیوں پر بھی تو دل مانا نہیں لاکھ سمجھایا کہ اس محفل میں اب جانا نہیں خود فریبی ہی سہی کیا کیجئے دل کا علاج تو نظر پھیرے تو ہم سمجھیں کہ پہچانا نہیں ایک دنیا منتظر ہے اور تیری بزم میں اس طرح بیٹھے ہیں ہم جیسے کہیں جانا نہیں جی میں جو آتی ہے کر گزرو کہیں ایسا نہ ہو کل پشیماں ہوں کہ کیوں دل کا کہا مانا نہیں زندگی پر اس سے بڑھ کر طنز کیا ہوگا فراز اس کا یہ کہنا کہ تو شاعر ہے دیوانہ نہیں احمد فراز
  13. Jannat malik

    احساس

    احساس محبت خود تلاش کرتی ہے وہ شخص جو بھینٹ چڑھنا چاہتا ہے ۔ ہم جیسے سیدھے سادھے لوگ پیار کی راہ پہ محبوب کی انگلی تھامے اندھا دھند چل پڑتے ہیں ۔ اور ناسمجھ مر جاتے ہیں کب پتا نہیں چلتا ۔ کیوںکہ ایک شخص کو ہم اپنی کل کائنات سمجھ بیٹھتے ہیں ۔ اور جب وہ شخص ہی دھوکہ دیتا ہے نا تو ایک آنسوئوں کی لڑی آنکھوں سے نکلتی ہے۔ اور ضبط کا شیرازہ بکھر جاتا ہے ۔ جی چاہتا ہے روئیں دھاڑیں ماریں ہمارے ساتھ ہی ایسا کیوں ؟ پھر جواب ملتا ہے صاحب تم کیا سمجھتے تھے محبت کیا حسین باغ ہے جہاں پہ تتلیاں پر پھیلاتی ہیں ۔ جہاں ہر وقت بہار رہتی ہے ۔ نہیں بلکل بھی نہیں ۔ محبت ایک باغ تو ہے جہاں جب خزاں آتی ہے نا تو انسان کی ذات بھی اس خزاں کا شکار ہو جاتی ہے مان لو بچ جاؤ۔ دل کو سنبھالو اپنے کہیں تم بھی ریزہ ریزہ نا ہو جانا کیونکہ محبت اپنا شکار خود چنتی ہے ۔ کبھی چکور کو دیکھا جو پورے چاند کی رات اس کی دیوانگی میں پوری قوت کے ساتھ چاند کی طرف اڑتا ہے لیکن گر جاتا ہے لیکن پھر بھی اس کی محبت میں کمی نہیں آتی ۔ فرق اتنا ہے کہ وہ محبت دل سے کرتا ہے لیکن ہم لوگ اب محبت دماغ سے کرتے ہیں ۔ اور کسی کے جزباتوں کا قتل کرکے کہتے ہیں کہ میں نے کیا کیا ۔
  14. کچھ الفاظ بے معنی سے انسان کی زندگی سے یہی سیکھا ہے جو چیز ملتی ہے وہ کھو ہی جاتی ہی بچپن ملا جوانی نے چھین لیا، جوانی ملی بڑھاپے نے چھین لی، کھونا کھونا بس کھونا انسان کو ملتا بہت کچھ ہے مگر ہم اس کی گنتی کرتے ہیں جو چھن جائے ایک دن ایسا آئے گا کہ موت زندگی ہی چھین لے گی اور یہی سب سے بڑی حقیقت ہے زندگی گزارتے بہت سے لوگ ملتے لیکن کچھ لوگ ہوتے ہیں جو رگوں میں بس جاتے ہیں انسان کی عادتوں میں بس جاتے ہیں جن سے جب ہم بچھڑتے ہیں یوں لگتا ہے جیسے کسی نے دل میں باہر سے ہاتھ ڈالا ہو اور پورا دل مٹھی میں لے کر کھینچ لیا ہو ایسے لگتا ہے جیسے کسی نے رسی کا پھندہ اچانک ہی گلے میں ڈالا ہو اور ایک جھٹکے سے روح نکال لی ہو جس پہ بندہ چیخ بھی نہ پایا ہو یوں لگتا ہے جیسے کائنات میں کچھ رہا ہی نہ ہو لیکن انسان پھر بھی جیتا ہے کن کیلیے گھر والوں کیلیے بظاہر تو جیتا جاگتا انسان ہوتا ہے لیکن اندر سے وہ مردہ ہو چکا ہوتا ہے تب اسے ایک ایسے شخص کی تلاش ہوتی ہے جو اس کے باطن میں شور مچاتے کہرام کو سنے پر اس دنیا میں اسے ایسا کوئی ملتا بھی ہے تو صرف اپنے مقصد کیلیے خود اس کے درد پہ مرحم لگاتا ہے کچھ پل لیکن جب اسکا مطلب پورا ہو جائے تو وہ یوں اجنبی بن جاتا ہے جیسے کبھی واسطہ ہی نہ پڑا ہو تب وہ ٹوٹا ہوا شخص یہ دیکھ کر کہ اس کی تکلیفوں سے بھی کوئی کھیل گیا ہے تو وہ مکمل ٹوٹ جاتا ہے تب اس کے ظاہر سے نہیں باطن سے چیخیں نکلتی ہیں پر اس وقت بھی وہ اکیلا ہی ہوتا ہے ضبط کرنے کی گنجائش ہی نہیں رہتی پھر وہ روتا ہے کہ آنسوؤں کا سیلاب آ جاتا ہے چیخیں سات آسمانوں کو چیرتی ہیں تب جتنا بھی بڑا مرد ہو ریت کے کچے مکان کی طرح گر جاتا ہے تبھی اس انسان کا انسانیت سے اعتبار اٹھ جاتا ہے رشتوں کی طمانیت کہیں پیچھے رہ جاتی ہے پھر کوئی جتنا بھی چاھے اسکو دوبارہ نہیں جوڑ سکتا میں اختلاف رکھتی ہوں اس انسان سے جو کہتا ہے وقت ہر زخم کا مرہم ہوتا ہے
  15. ‏اُسے پَسند نہیں ہے
    میرا نَظَر آنا
    سَو اَب یہ ٹَھان لیا ہے
    کہ نا دِکھائی دُوں

    اَب اَگر آَسمَان سےاُترے
    فَیصلَہءِ وَصل
    میری خُواھِش ہے میں
    مَر کراُسےجُدائی دُوں..

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

×