Jump to content
Search In
  • More options...
Find results that contain...
Find results in...

Welcome to Fundayforum.com

Take a moment to join us, we are waiting for you.

Search the Community

Showing results for tags 'دِل'.



More search options

  • Search By Tags

    Type tags separated by commas.
  • Search By Author

Content Type


Forums

  • Help Support
    • Announcement And Help
    • Funday Chatroom
  • Poetry
    • Shair-o-Shaa'eri
    • Famous Poet
  • Islam - اسلام
    • QURAN O TARJUMA قرآن و ترجمہ
    • AHADEES MUBARIK آحدیث مبارک
    • Ramazan ul Mubarik - رمضان المبارک
    • Deen O Duniya - دین و دنیا
  • Other Forums
    • Quizzes
    • Chitchat and Greetings
    • Urdu Adab
    • Entertainment
    • Common Rooms
  • Science, Arts & Culture
    • Education, Science & Technology
  • IPS Community Suite
    • IPS Community Suite 4.1
    • IPS Download
    • IPS Community Help/Support And Tutorials

Blogs

There are no results to display.

There are no results to display.

Categories

  • IPS Community Suite 4.3
    • Applications 4.3
    • Plugins 4.3
    • Themes 4.3
    • Language Packs 4.3
    • IPS Extras 4.3
  • IPS Community Suite 4
    • Applications
    • Plugins
    • Themes
    • Language Packs
    • IPS Extras
  • Books
    • Urdu Novels
    • Islamic
    • General Books
  • XenForo
    • Add-ons
    • Styles
    • Language Packs
    • Miscellaneous XML Files
  • Web Scripts
  • PC Softwares

Find results in...

Find results that contain...


Date Created

  • Start

    End


Last Updated

  • Start

    End


Filter by number of...

Joined

  • Start

    End


Group


Facebook ID


FB Page/Group URL


Bigo Live


Website URL


Instagram


Skype


Location


Interests

Found 5 results

  1. دیارِ دِل کی رات میں چراغ سا جلا گیا مِلا نہیں تو کیا ہُوا ، وہ شکل تو دِکھا گیا وہ دوستی تو خیر اب نصیبِ دُشمناں ہُوئی وہ چھوٹی چھوٹی رنجِشوں کا لُطف بھی چلا گیا جُدائیوں کے زخم دردِ زندگی نے بھر دیئے تجھے بھی نِیند آگئی، مُجھے بھی صبر آگیا پُکارتی ہیں فُرصتیں، کہاں گئیں وہ صحبتیں؟ زمِیں نِگل گئی اُنہیں، کہ آسمان کھا گیا یہ صُبح کی سفیدِیاں ، یہ دوپہر کی زردِیاں اب آئینے میں دیکھتا ہُوں مَیں کہاں چلا گیا یہ کِس خوشی کی ریت پر ،غموں کو نِیند آگئی وہ لہر کِس طرف گئی، یہ میں کہاں سما گیا گئے دِنوں کی لاش پر پڑے رہوگے کب تلک الَم کشو ! اُٹھو کہ آفتاب سر پہ آگیا ناصؔر کاظمی
  2. کِسی کا درد ہو دِل بے قرار اپنا ہے ہَوا کہِیں کی ہو، سینہ فگار اپنا ہے ہو کوئی فصل مگر زخم کِھل ہی جاتے ہیں سدا بہار دلِ داغدار اپنا ہے بَلا سے ہم نہ پیئیں، میکدہ تو گرم ہُوا بقدرِ تشنگی رنجِ خُمار اپنا ہے جو شاد پھرتے تھے کل، آج چُھپ کے روتے ہیں ہزار شُکر غمِ پائیدار اپنا ہے اِسی لیے یہاں کُچھ لوگ ہم سے جلتے ہیں کہ جی جلانے میں کیوں اِختیار اپنا ہے نہ تنگ کر دلِ مخزوں کو اے غمِ دنیا ! خُدائی بھر میں یہی غم گسار اپنا ہے کہیں مِلا تو کِسی دن منا ہی لیں گے اُسے وہ ذُود رنج سہی ، پھر بھی یار اپنا ہے وہ کوئی اپنے سِوا ہو تو اُس کا شِکوہ کرُوں جُدائی اپنی ہے اور انتظار اپنا ہے نہ ڈھونڈھ ناصرِ آشفتہ حال کو گھر میں وہ بُوئے گُل کی طرح بے قرار اپنا ہے ناصرکاظمی ………………………………………
  3. دلِ پُر شوق کو پہلو میں دبائے رکھا تجھ سے بھی ھم نے تیرا پیار چھپائے رکھا چھوڑ اس بات کو اے دوست کہ تجھ سے پہلے ھم نے کس کس کو خیالوں میں بسائے رکھا غیرممکن تھی زمانے کے غموں سے فرصت پھر بھی ھم نے تیرا غم دل میں بسائے رکھا پھول کو پھول نہ کہتے تو اسے کیا کہتے؟ کیا ھوا غیر نے کالر پہ سجائے رکھا جانے کس حال میں ہیں, کونسےشہروں میں ھیں وہ؟ زندگی اپنی جنہیں ھم نے بنائے رکھا ھائے کیا لوگ تھے, وہ لوگ, پری چہرہ لوگ ھم نے جن کے لیے دنیا کو بھلائے رکھا اب ملیں بھی تو نہ پہچان سکیں ھم انکو جن کو اک عمر خیالوں میں بسائے رکھا
  4. ﺩِﻝِ ﮔﻤﺸﺪﮦ ! ﮐﺒﮭﯽ ﻣﻞ ﺫﺭﺍ ﮐﺴﯽ ﺧﺸﮏ ﺧﺎﮎ ﮐﮯ ﮈﮬﯿﺮ ﭘﺮ ﯾﺎ ﮐﺴﯽ ﻣﮑﺎﮞ ﮐﯽ ﻣﻨﮉﯾﺮ ﭘﺮ ﺩِﻝِ ﮔﻤﺸﺪﮦ ! ﮐﺒﮭﯽ ﻣِﻞ ﺫﺭﺍ ﺟﮩﺎﮞ ﻟﻮﮒ ﮨﻮﮞ، ﺍُﺳﮯ ﭼﮭﻮﮌ ﮐﺮ ﮐﺴﯽ ﺭﺍﮦ ﭘﺮ، ﮐﺴﯽ ﻣﻮﮌ ﭘﺮ ﺩِﻝِ ﮔﻤﺸﺪﮦ ! ﮐﺒﮭﯽ ﻣِﻞ ﺫﺭﺍ ! ﻣﺠﮭﮯ ﻭﻗﺖ ﺩﮮ، ﻣﺮﯼ ﺑﺎﺕ ﺳُﻦ ! ﻣﺮﯼ ﺣﺎﻟﺘﻮﮞ ﮐﻮ ﺗﻮ ﺩﯾﮑﮫ ﻟﮯ ! ﻣﺠﮭﮯ ﺍﭘﻨﺎ ﺣﺎﻝ ﺑﺘﺎ ﮐﺒﮭﯽ ! ﮐﺒﮭﯽ ﭘﺎﺱ ﺁ ! ﮐﺒﮭﯽ ﻣِﻞ ﺳﮩﯽ ! ﻣﺮﺍ ﺣﺎﻝ ﭘﻮﭼﮫ ! ﺑﺘﺎ ﻣﺠﮭﮯ ﻣﺮﮮ ﮐﺲ ﮔﻨﺎﮦ ﮐﯽ ﺳﺰﺍ ﮨﮯ ﯾﮧ؟؟؟ ﺗُﻮ ﺟﻨﻮﻥ ﺳﺎﺯ ﺑﮭﯽ ﺧﻮﺩ ﺑﻨﺎ ﻣﺮﯼ ﻭﺟﮧِ ﻋﺸﻖ ﯾﻘﯿﮟ ﺗﺮﺍ ﻣِﻼ ﯾﺎﺭ ﺑﮭﯽ ﺗﻮ، ﺗﺮﮮ ﺳﺒﺐ ﻭﮦ ﮔﯿﺎ ﺗﻮ ، ﺗُﻮ ﺑﮭﯽ ﭼﻼ ﮔﯿﺎ؟؟؟ ﺩِﻝِ ﮔﻤﺸﺪﮦ؟؟؟ ﯾﮧ ﻭﻓﺎ ﮨﮯ ﮐﯿﺎ؟؟؟ ﺍِﺳﮯ ﮐِﺲ ﺍﺩﺍ ﻣﯿﮟ ﻟﮑﮭﻮﮞ ﺑﺘﺎ؟؟؟ ﺍِﺳﮯ ﻗﺴﻤﺘﻮﮞ ﮐﺎ ﺛﻤﺮ ﻟﮑﮭﻮﮞ؟؟؟ ﯾﺎ ﻟﮑﮭﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺍِﺱ ﮐﻮ ﺩﻏﺎ، ﺳﺰﺍ؟؟؟ ﺩِﻝِ ﮔﻤﺸﺪﮦ ! ﺩِﻝِ ﮔﻤﺸﺪﮦ حافظ
  5. نہ گنواؤ ناوکِ نیم کش، دلِ ریزہ ریزہ گنوا دیا جو بچے ہیں سنگ سمیٹ لو، تنِ داغ داغ لُٹا دیا مرے چارہ گرکو نوید ہو، صفِ دشمناں کو خبر کرو و ہ جو قرض رکھتے تھے جان پر وہ حساب آج چکا دیا کرو کج جبیں پہ سرِ کفن ، مرے قاتلوں کو گماں نہ ہو کہ غرورِ عشق کا بانکپن ، پسِ مرگ ہم نے بھلا دیا اُ دھر ایک حرف کے کشتنی ، یہاں لاکھ عذر تھا گفتنی جو کہا تو ہنس کے اُڑا دیا ، جو لکھا تو پڑھ کے مٹا دیا جو رکے تو کوہِ گراں تھے ہم، جو چلے تو جاں سے گزر گئے رہِ یار ہم نے قدم قدم تجھے یاد گار بنا دیا
×