Jump to content

Welcome to Fundayforum. Please register your ID or get login for more access and fun.

Signup  Or  Login

house fdf.png

ADMIN ADMIN

Search the Community

Showing results for tags 'رنگِ'.



More search options

  • Search By Tags

    Type tags separated by commas.
  • Search By Author

Content Type


Forums

  • Help Support
    • Announcement And Help
    • Funday Chatroom
  • Poetry
    • Shair o Shairy
    • Famous Poet
  • Islam - اسلام
    • QURAN O TARJUMA قرآن و ترجمہ
    • AHADEES MUBARIK آحدیث مبارک
    • Ramazan ul Mubarik - رمضان المبارک
    • Deen O Duniya - دین و دنیا
  • Other Forums
    • Quizzes
    • Movies and Stars
    • Chit chat And Greetings
    • Urdu Adab
    • Entertainment
    • Common Rooms
  • Science, Arts & Culture
    • Education, Science & Technology
  • IPS Community Suite
    • IPS Community Suite 4.1
    • IPS Download
    • IPS Community Help/Support And Tutorials

Blogs

There are no results to display.

There are no results to display.

Categories

  • Premium Files
  • IPS Community Suite 4.3
    • Applications 4.3
    • Plugins 4.3
    • Themes 4.3
    • Language Packs 4.3
    • IPS Extras 4.3
  • IPS Community Suite 4
    • Applications
    • Plugins
    • Themes
    • Language Packs
    • IPS Extras
  • Books
    • Urdu Novels
    • Islamic
    • General Books
  • XenForo
    • Add-ons
    • Styles
    • Language Packs
    • Miscellaneous XML Files
  • Web Scripts
  • PC Softwares

Find results in...

Find results that contain...


Date Created

  • Start

    End


Last Updated

  • Start

    End


Filter by number of...

Joined

  • Start

    End


Group


Facebook ID


FB Page/Group URL


Bigo Live


Website URL


Instagram


Skype


Interests


Location


ZODIAC

Found 3 results

  1. عجب ہے رنگ ِ چمن، جا بجا اُداسی ہے مہک اُداسی ہے، باد ِ صبا اُداسی ہے نہیں نہیں، یہ بھلا کس نے کہہ دیا تم سے؟ میں ٹھیک ٹھاک ہوں، ہاں بس ذرا اُداسی ہے میں مبتلا کبھی ہوتا نہیں اُداسی میں میں وہ ہوں جس میں کہ خود مبتلا اُداسی ہے طبیب نے کوئی تفصیل تو بتائی نہیں بہت جو پوچھا تو اتنا کہا، اُداسی ہے گداز ِ قلب خوشی سے بھلا کسی کو ملا؟ عظیم وصف ہی انسان کا اداسی ہے شدید درد کی رو ہے رواں رگ ِ جاں میں بلا کا رنج ہے، بے انتہا اُداسی ہے فراق میں بھی اُداسی بڑے کمال کی تھی پس ِ وصال تو اُس سے سِوا اداسی ہے تمہیں ملے جو خزانے، تمہیں مبارک ہوں مری کمائی تو یہ بے بہا اُداسی ہے چھپا رہی ہو مگر چھپ نہیں رہی مری جاں جھلک رہی ہے جو زیر ِ قبا اُداسی ہے دماغ مجھ کو کہاں کائناتی مسئلوں کا مرا تو سب سے بڑا مسئلہ اُداسی ہے فلک ہے سر پہ اُداسی کی طرح پھیلا ہُوا زمیں نہیں ہے مرے زیر ِ پا، اُداسی ہے غزل کے بھیس میں آئی ہے آج محرم ِ درد سخن کی اوڑھے ہوئے ہے ردا، اُداسی ہے عجیب طرح کی حالت ہے میری بے احوال عجیب طرح کی بے ماجرا اُداسی ہے وہ کیف ِ ہجر میں اب غالباً شریک نہیں کئی دنوں سے بہت بے مزا اُداسی ہے وہ کہہ رہے تھے کہ شاعر غضب کا ہے عرفان ہر ایک شعر میں کیا غم ہے، کیا اُداسی ہے
  2. یہ رنگِ خوُ ں ہے گلوں پر نکھار اگر ہے حنائے پائے خزاں ہےٙ بہار اگر ہےٙ بھی یہ پیش خیمئہِ بیدادِ تازہ ہو نہ کہیں بدل رہی ہے ہوا ساز گار اگر ہے بھی لہوُ کی شمعیں جلاوٴ قدم بڑھائے چلو سروں پہ سایئہ شب ہائے تارا اگر ہے بھی ابھی تو گرم ہے میخانہ جام کھنکاءو بلا سے سر پہ کسی کا ادھار اگر ہے بہی حیاتِ درد کو آلوُ دہ نشاط نہ کر یہ کاروبار کوئی کاروبار اگر ہے بھی یہ امتیاز ِ من و توُ خدا کے بندوں سے وہُ آدمی نہیں طاعت گزار اگر ہے بھی نہ پوُ چھ کیسے گزُ رتی ہے ذِ ندگی ناصرِ بس ایک جبر ہے یہ اختیار اگر ہے بھی ناصر_کاظمی کلام؛ کلیاتِ ناصر ۔۔۔12-3-1969 ریڑیو لاہور
  3. کسی پیاسے کو اپنے حصّے کا پانی پلانا بھی مُحبت ہے بھنور میں ڈوبتے کو ساحلوں تک لے کے جانا بھی مُحبت ہے کسی کے واسطے ننھی سی قُربانی مُحبت ہے کہیں ہم، راز سارے کھول سکتے ہوں مگر پھر بھی کسی کی بے بسی کو دیکھ کر خاموش رہ جانا مُحبت ہے ہو دل میں دَرد، ویرانی مگر پھر بھی کسی کے واسطے جبرًا ہی ہونٹوں پر ہنسی لانا زبردستی ہی مُسکانا مُحبت ہے کہیں بارش میں سہمے، بھیگتے بلی کے بچے کو ذرا سی دیر کو گھر لے کے آنا بھی مُحبت ہے کوئی چڑیا جو کمرے میں بھٹکتی آن نکلی ہو تو اس چڑیا کو پنکھے بند کرکے راستہ باہر کا دِکھلانا مُحبت ہے کسی کے زخم سہلانا کسی روتے ہوئے کے دل کو بہلانا مُحبت ہے کہ میٹھا بول، میٹھی بات، میٹھے لفظ، سب کیا ہے؟ مُحبت ہے مُحبت ایک ہی--- بس ایک ہی انسان کی خاطر مگن رہنا ہمہ وقت اُس کی باتوں ، خُوشبوؤں میں ڈولنا کب ہے مُحبت صرف اُس کی زُلف کے بل کھولنا کب ہے مُحبت کے ہزاروں رنگ لاکھوں استعارے ہیں کسی بھی رنگ میں ہو یہ مجھے اپنا بناتی ہے یہ میرے دل کو بھاتی ہے---
×