Jump to content
Search In
  • More options...
Find results that contain...
Find results in...

Search the Community

Showing results for tags 'سنو'.



More search options

  • Search By Tags

    Type tags separated by commas.
  • Search By Author

Content Type


Forums

  • Help Support
    • Announcement And Help
    • Funday Chatroom
  • Poetry
    • Shair o Shairy
    • Famous Poet
  • Islam - اسلام
    • QURAN O TARJUMA قرآن و ترجمہ
    • AHADEES MUBARIK آحدیث مبارک
    • Ramazan ul Mubarik - رمضان المبارک
    • Deen O Duniya - دین و دنیا
  • Other Forums
    • Quizzes
    • Movies and Stars
    • Chit chat And Greetings
    • Urdu Adab
    • Entertainment
    • Common Rooms
  • Science, Arts & Culture
    • Education, Science & Technology
  • IPS Community Suite
    • IPS Community Suite 4.1
    • IPS Download
    • IPS Community Help/Support And Tutorials

Blogs

There are no results to display.

There are no results to display.

Categories

  • IPS Community Suite 4.4
    • Applications 4.4
    • Plugin 4.4
    • Themes/Ranks
    • IPS Languages 4.4
  • IPS Community Suite 4.3
    • Applications 4.3
    • Plugins 4.3
    • Themes 4.3
    • Language Packs 4.3
    • IPS Extras 4.3
  • IPS Community Suite 4
    • Applications
    • Plugins
    • Themes
    • Language Packs
    • IPS Extras
  • Books
    • Urdu Novels
    • Islamic
    • General Books
  • XenForo
    • Add-ons
    • Styles
    • Language Packs
    • Miscellaneous XML Files
  • Web Scripts
  • PC Softwares
  • Extras

Categories

  • Islamic
  • WhatsApp Status
  • Funny Videos
  • Movies
  • Songs
  • Seasons
  • Online Channels

Find results in...

Find results that contain...


Date Created

  • Start

    End


Last Updated

  • Start

    End


Filter by number of...

Joined

  • Start

    End


Group


Facebook ID


FB Page/Group URL


Bigo Live


Website URL


Instagram


Skype


Interests


Location


ZODIAC

Found 3 results

  1. اے رات کے راھی چاند سنو اے رات کے راھی چاند سنو میرا ایک ضروری کام کرو من میت کے شہر میں جانا تم اسے میرا حال سنانا تم میں ھر شب تم کو تکتی ھوں کیا وہ بھی رات کو سوتے وقت کچھ تم سے باتیں کرتا ھے کیا میری سونی آنکھوں کے پیغام کبھی وہ پڑھتا ھے اے رات کے راھی اس سے کہو کہ ،اس دل کو اک پل چین نھیں کیوں پریت کے بندھن باندھے تھے کیوں آس کے پھول تھمائے تھے وہ قسمیں وعدے بھول گئے کیوں ساجن ھم سے روٹھ گئے ھم تم بن جی نہ پائینگے ،یہ رشتے توڑ نہ پائینگے اے چاند اسے یہ کہنا تم کہ آنکھیں اشک بہاتی ھیں یہ ھجر ھراساں کرتا ھے میں راہ تمھاری تکتی ھوں اور بے کل بےکل پھرتی ھوں ھر ھر دن جیتی مرتی ھوں اے چاند جب لوٹ کے آنا تم اسے میر ے پاس لے آنا تم
  2. سنو اے محرمِ ہستی سنو اے زیست کی حاصل مجھے کچھ دن ہوئے شدت سے یہ محسوس ہوتا ہے کہ میں دنیا میں خود کو جس قدر بھی گم کروں مجھ کو تمہارا دھیان رہتا ہے میرے معمول کے سب راستے اب بھی تمہاری سوچ سے ہو کر گزرتے ہیں تمہاری مسکراہٹ آج بھی اس زندگی میں روشنی کا استعارہ ہے تمہارے ہجر سے اب تک میرے دل کے درودیوار پر وحشت برستی ہے میرے اندر کی ویرانی مجھے ہر آن ڈستی ہے بہت سے ان کہے جذبے جو ہم محسوس کرتے تھے وہ مجھ سے بات کرتے ہیں میری تنہائیاں اب بھی تمہارے عکس کی پرچھائیوں کو ڈھونڈ لیتی ہیں سنو اے محرمِ ہستی میں اپنے آپ سے کب تک لڑوں؟؟ کب تک میں خود سے جھوٹ بولوں میں تمہارے بعد زندہ ہوں، مکمل ہوں میں اپنے کھوکھلے پن کو چھپاؤں کس طرح خود سے؟؟ اٹھائے کب تلک رکھوں انا کا ماتمی پرچم؟؟ میں کب تک یہ کہوں سب سے؟؟ کہ میں اس ہجر میں خوش ہوں سنو اے زیست کی حاصل مجھے اقرار کرنا ہے، میں اپنے آپ سے لڑتے ہوئے اب تھک چکا ہوں کہ میں تو اس لڑائی میں کئی راتوں کی نیندیں اور کئی خوشیوں بھرے موسم فقط اک جھوٹ میں جینے کی خاطر ہار آیا ہوں سنو اے محرم ہستی تمہاری خواب سی آنکھوں نے مجھ کو باندھ رکھا ہے میں ان دیکھی یہ ڈوریں توڑنے کاسوچتا ہوں جب تو میری سانس رکتی ہے میں بزدل ہوں، تمہیں کھونے سے مجھ کو خوف آتا ہے تمہارے ہجر میں جینا تمہیں کھونے سے بہتر ہے سنو اے محرم ہستی مجھے تسلیم کرنے دو! میری اس زندگانی کا تمہی روشن حوالہ ہو میری تکمیل تم سے ہے ﺗﻤﮩﺎﺭﮮ ﮨﺠﺮ ﻣﯿﮟ ﺟﯿﻨﺎ ﺑﮩﺖ ﺩﺷﻮﺍﺭ ﮨﮯ ﻟﯿﮑﻦ ﺗﻤﮩﯿﮟ ﮐﮭﻮﻧﮯ ﺳﮯ ﺑﮩﺘﺮ ﮨﮯ تمہیں کھونے کا سوچوں بھی تو میری سانس رکتی ہے سنو اے محرمِ ہستی ..سنو اے زیست کی حاصل
  3. سنو تم جب کبھی تنہا کسی بھی پیڑ کے سائے میں بیٹھو تو کبھی کچھ بھی نہیں لکھنا نہ میرا نام اپنے ساتھ نہ اپنا علیحدہ سے محبت کا شجر سب کچھ سمجھتا ہے اُسے پڑھنا بھی آتا ہے تمہیں میں اس لیے محتاط کرتا ہوں کہ اُس کا بخت اپنا ہے تم اپنا اور میرا نام اپنے دل میں ہی لکھو تو بہتر ہے۔ جب اپنے بخت سے تم لڑ نہیں سکتیں تو پھر کس واسطے پیڑوں کو اپنا دکھ سناتی ہو وہ اپنے درد سے عاجز تمہارا دُکھ کہاں بانٹیں؟ محبت کے درختوں سے گرے ،بکھرے ہوئے پتے جہاں دیکھو اُٹھاؤ اپنے آنچل میں سمیٹو اور واپس لوٹ کر آؤ سو ممکن ہے تمہارا درد بَٹ جائے
×
×
  • Create New...