Jump to content

Welcome to Fundayforum.com

Take a moment to join us, we are waiting for you.

News Ticker

Search the Community

Showing results for tags 'کہیں'.



More search options

  • Search By Tags

    Type tags separated by commas.
  • Search By Author

Content Type


Forums

  • Help Support
    • Announcement And Help
    • Funday Chatroom
  • Poetry
    • Shair-o-Shaa'eri
    • Famous Poet
  • Islam - اسلام
    • QURAN O TARJUMA قرآن و ترجمہ
    • AHADEES MUBARIK آحدیث مبارک
    • Ramazan ul Mubarik - رمضان المبارک
    • Deen O Duniya - دین و دنیا
  • Other Forums
    • Quizzes
    • Chitchat and Greetings
    • Urdu Adab
    • Entertainment
    • Common Rooms
  • Music, Movies, and Dramas
    • Movies Song And Tv.Series
  • Science, Arts & Culture
    • Education, Science & Technology
  • IPS Community Suite
    • IPS Community Suite 4.1
    • IPS Download
    • IPS Community Help/Support And Tutorials

Blogs

There are no results to display.

There are no results to display.

Categories

  • Books
    • Urdu Novels
    • Islamic
    • General Books
  • IPS Community Suite 4
    • Applications
    • Plugins
    • Themes
    • Language Packs
    • IPS Extras
  • IPS Community Suite 3.4
    • Applications
    • Hooks/BBCodes
    • Themes/Skins
    • Language Packs
    • Miscellaneous XML Files
  • XenForo
    • Add-ons
    • Styles
    • Language Packs
    • Miscellaneous XML Files
  • Web Scripts
  • PC Softwares

Categories

  • Islam
  • General Knowledge
  • Sports

Found 5 results

  1. ﮐﮩﯿﮟ ﺗﻮ ﺁﺧــــــــﺮ ﺳﺮﺍﺏ ﭨﻮﭨﯿﮟ ! ﯾﮧ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﺑﮭﯽ ﻋﺠﯿﺐ ﺷﮯ ﮨﮯ ﯾﮧ ﺩﺷﺖِ ﺍﻣﮑﺎﮞ ﮐﯽ ﺍِﮎ ﻣﺴﺎﻓﺖ، ﻧﮧ ﮐﻮﺋﯽ ﺭﺳﺘﮧ، ﻧﮧ ﮐﻮﺋﯽ ﻣﻨﺰﻝ ﻧﮧ ﺁﺋﮯ ﺍﺱ ﮐﮯ ﮐﻮﺋﯽ ﻣﻘﺎﺑﻞ ﻋﺠﯿﺐ ﺳﺎ ﮨﮯ ﯾﮧ ﺳﻠﺴﻠﮧ ﺑﮭﯽ ﻧﮧ ﺭﻭﺯ ﻭ ﺷﺐ ﮐﺎ ﻃﻠﺴﻢ ﭨﻮﭨﮯ ﻧﮧ ﻭﺍﮨﻤﻮﮞ ﺳﮯ ﯾﮧ ﺟﺎﻥ ﭼﮭﻮﭨﮯ ﻋﺠﯿﺐ ﮨﮯ ﯾﮧ ﺟﮩﺎﻥِ ﻓﺎﻧﯽ ﺑﺲ ﺍﮎ ﻓﺴﺎﻧﮧ، ﺑﺲ ﺍﮎ ﮐﮩﺎﻧﯽ ﻧﮧ ﺁﻧﮑﮭﯿﮟ ﺍﭘﻨﯽ، ﻧﮧ ﺧﻮﺍﺏ ﺍﭘﻨﮯ، ﺳﻮﺍﻝ ﺻﻮﺭﺕ ﺟﻮﺍﺏ ﺍﭘﻨﮯ ﺟﻮ ﮨﻮﺵ ﺁﺋﮯ ﺗﻮ ﺧﻮﺍﺏ ﭨﻮﭨﯿﮟ ﮐﮩﯿﮟ ﺗﻮ ﺁﺧﺮ ﺳﺮﺍﺏ ﭨﻮﭨﯿﮟ
  2. کہیں تو آخــــــــر سراب ٹوٹیں ! یہ زندگی بھی عجیب شے هے ! یہ دشتِ امکاں کی اِک مسافت، نہ کوئی رستہ، نہ کوئی منزل ! نہ آئے اس کے کوئی مقابل ! عجیب سا ہے یہ سلسلہ بھی نہ روز و شب کا طلسم ٹوٹے ! نہ وہموں سے یہ جان چھوٹے ! عجیب ہے یہ جہانِ فانی ۔۔۔۔۔۔۔ بس اک فسانہ، بس اک کہانی ! نہ آنکھیں اپنی، نہ خواب اپنے، سوال صورت جواب اپنے ! جو ہوش آئے تو خواب ٹوٹیں ! .......کہیں تو آخر سراب ٹوٹیں
  3. دور تک چھائے تھے بادل اور کہیں سایہ نہ تھا اس طرح برسات کا موسم کبھی آیا نہ تھا کیا ملا آخر تجھے، سایوں کے پیچھے بھاگ کر اے دلِ ناداں، تجھے کیا ہم نے سمجھایا نہ تھا اف یہ سناٹا کہ آہٹ تک نہ ہو جو جس میں مخل زندگی میں اس قدر ہم نے سکوں پایا نہ تھا خوب روئے چھپ کے گھر کی چار دیواری میں ہم حال دل کہنے کے قابل کوئی ہمسایا نہ تھا ہو گئے قلاش جب سے آس کی دولت لٹی پاس اپنے، اور تو کوئی بھی سرمایہ نہ تھا وہ پیمبر ہو کہ عاشق، قتل گاہ شوق میں تاج کانٹوں کا کسے دنیا نے پہنایا نہ تھا صرف خوشبو کی کمی تھی غور کے قابل قتیل ورنہ گلشن میں کوئی بھی پھول مرجھایا نہ تھا
  4. آ ئینہ کیوں نہ دوں کہ تماشا کہیں جسے ایسا کہاں سے لاؤں کہ تجھ سا کہیں جسے حسرت نے لا رکھا تری بزمِ خیال میں گلدستۂ نگاہِ سویدا کہیں جسے پھونکا ہے کس نے گوشِ محبت میں اے خدا افسونِ انتظار، تمنا کہیں جسے سر پر ہجومِ دردِ غریبی سے ڈالیے وہ ایک مشتِ خاک کہ صحرا کہیں جسے ہے چشمِ تر میں حسرتِ دیدار سے نہاں شوقِ عناں گسیختہ، دریا کہیں جسے درکار ہے شگفتنِ گلہائے عیش کو صبحِ بہار پنبۂ مینا کہیں جسے غالب برا نہ مان جو واعظ برا کہے ایسا بھی کو ئی ہے کہ سب اچھا کہیں جسے؟
  5. مرے پہلو میں رہ کر بھی کہیں رُوپوش ہو جانا مجھے پھر دیکھنا اور دیکھ کر خاموش ہو جانا قسم ہے چشمِ ذیبا کی مجھے بھولے نہیں بھولا تجھے کلیوں کا ایسے دیکھ کر مدہوش ہو جانا تجھے یہ شہر والے پھر مرے بارے میں پوچھیں گے نظر سے مسکرانا اور پھر خاموش ہو جانا زمانہ سانس بھی لینے نہیں دیتا ہمیں لیکن ہمارے واسطے تم چین کی آغوش ہو جانا نہ مجھ میں وصفِ موسیٰ تھے نہ میں محوِ تکلم تھا مرا بنتا نہیں تھا اس طرح بے ہوش ہو جانا مرے زخموں مرے نالوں کا اکلوتا محافظ ہے مرے شانوں پہ تیرے ہجر کا بَردوش ہو جانا سو اب اس نازنیں کی عادتوں میں یہ بھی شامل ہے چمن میں رات کر لینا، وہیں گُل پوش ہو جانا
×