Jump to content

Please Disable Your Adblocker. We have only advertisement way to pay our hosting and other expenses.  

Search the Community

Showing results for tags 'bohat'.



More search options

  • Search By Tags

    Type tags separated by commas.
  • Search By Author

Content Type


Forums

  • Help Support
    • Announcement And Help
    • Funday Chatroom
  • Poetry
    • Shair-o-Shaa'eri
    • Famous Poet
  • Islam - اسلام
    • QURAN O TARJUMA قرآن و ترجمہ
    • AHADEES MUBARIK آحدیث مبارک
    • Ramazan ul Mubarik - رمضان المبارک
    • Deen O Duniya - دین و دنیا
  • Other Forums
    • Quizzes
    • Chit chat And Greetings
    • Urdu Adab
    • Entertainment
    • Common Rooms
  • Science, Arts & Culture
    • Education, Science & Technology
  • IPS Community Suite
    • IPS Community Suite 4.1
    • IPS Download
    • IPS Community Help/Support And Tutorials

Blogs

There are no results to display.

There are no results to display.

Categories

  • Premium Files
  • IPS Community Suite 4.3
    • Applications 4.3
    • Plugins 4.3
    • Themes 4.3
    • Language Packs 4.3
    • IPS Extras 4.3
  • IPS Community Suite 4
    • Applications
    • Plugins
    • Themes
    • Language Packs
    • IPS Extras
  • Books
    • Urdu Novels
    • Islamic
    • General Books
  • XenForo
    • Add-ons
    • Styles
    • Language Packs
    • Miscellaneous XML Files
  • Web Scripts
  • PC Softwares

Find results in...

Find results that contain...


Date Created

  • Start

    End


Last Updated

  • Start

    End


Filter by number of...

Joined

  • Start

    End


Group


Facebook ID


FB Page/Group URL


Bigo Live


Website URL


Instagram


Skype


Interests


Location


ZODIAC

Found 5 results

  1. Mai Ishq Ki Shidat Sy Pereshan Bohat Hun میں عشق کی شدت سے پریشان بہت ہوں اے جاں تری چاہت سے پریشان بہت ہوں ہاں شورشِ ہجراں سے یہ دل شاد بہت تھا ہاں وصل کی راحت سے پریشان بہت ہوں چاہوں تو تجھے چھوڑ دوں میں غیر کی خاطر بس نکتہ وحدت سے پریشان بہت ہوں انصاف کی دنیا ہے فقط خواب کی دنیا یا رب میں حقیقت سے پریشان بہت ہوں جگنو، یہ چاند، تارے، بہاریں صدایئں دیں اف، میں تیری شہرت سے پریشان بہت ہوں ! غنچہ یا کوئی پھول کہوں، پنکھڑی کہوں ہونٹوں کی نزاکت سے پریشان بہت ہوں کیوں اے دل کم فہم تو مانے ہے انا کی؟ آمر کی حکومت سے پریشان بہت ہوں ہر ایک عمل پہ کہے 'یوں تو نہیں، یوں۔۔۔' ناصح تیری عادت سے پریشان بہت ہوں لڑکی ہوں، پگھل جاتی ہوں نظروں کی تپش سے میں حسن کی نعمت سے پریشان بہت ہوں وہ جان تکلم نہ بنا لے مجھے مداح اس زور خطابت سے پریشان بہت ہوں دنیا یہ فقط تجھ پہ جیا! کیوں ہے مہربان لہجوں کی ملاحت سے پریشان بہت ہوں
  2. ہم رات بہت روئے، بہت آہ و فغاں کی دل درد سے بوجھل ہو تو پھر نیند کہاں کی اس گھر کی کھلی چھت پہ چمکتے ہوئے تارو کہتے ہو کبھی جا کے وہاں بات یہاں کی ؟ اللہ کرے میرؔ کا جنت میں مکاں ہو مرحوم نے ہر بات ہماری ہی بیاں کی ہوتا ہے یہی عشق میں انجام سبھی کا باتیں یہی دیکھی ہیں محبت زدگاں کی پڑھتے ہیں شب و روز اسی شخص کی غزلیں غزلیں یہ حکایات ہیں ہم دل زدگاں کی تم چرخِ چہارم کے ستارے ہوئے لوگو تاراج کرو زندگیاں اہلِ جہاں کی انشاؔ سے ملو، اس سے نہ روکیں گے وہ، لیکن اُس سے یہ ملاقات نکالی ہے کہاں کی مشہور ہے ہر بزم میں اس شخص کا سودا باتیں ہیں بہت شہر میں بدنام، میاں کی اے دوستو! اے دوستو! اے درد نصیبو گلیوں میں، چلو سیر کریں، شہرِ بتاں کی ہم جائیں کسی سَمت، کسی چوک میں ٹھہریں کہیو نہ کوئی بات کسی سود و زیاں کی انشاؔ کی غزل سن لو، پہ رنجور نہ ہونا دیوانا ہے، دیوانے نے اک بات بیاں کی
  3. Shadi ky jo afsaane hain rangeen bohat hain شادی کے جو افسانے ہیں رنگین بہت ہیں لیکن جو حقائق ہیں وہ سنگین بہت ہیں ابلیس بچارے ہی کو بے کار نہ کوسو انسان کے اندر بھی شیاطین بہت ہیں بخشیش کی صورت انہیں دیتے رہو رشوت سرکار کے دفتر میں مساکین بہت ہیں اس دور کے مردوں کی جو کی شکل شماری ثابت ہوا دنیا میں خواتین بہت ہیں جب حضرت ناصح نے کیا مرغ تناول فرمایا کہ دالوں میں پروٹین بہت ہیں محسوس ہوا سن کے تقاریر مغلظ اب اہل سیاست میں بھی چرکین بہت ہیں تنخواہ کا ہو جائے گا پل بھر میں کباڑا بیگم تری فرمائشیں دو تین بہت ہیں خدشہ ہے کہ اس شوخ کا بڑھ جائے نہ بی پی شاہدؔ ترے اشعار جو نمکین بہت ہیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ سرفراز شاہد ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
  4. ، بہت کوشش کرو گے تُم !!کہ اب موسم جو بدلیں تو، ہماری یاد نہ آۓ ۔۔۔ ،،،،،،مگر ایسا نہیں ہوگا ۔۔۔۔۔۔۔۔ ،کہیں جو ۔۔۔۔۔۔۔ سرد موسم میں دِسمبر کی ہواؤں میں ۔۔۔۔۔ تُمھارے دل کے گوشوں میں ۔۔۔۔۔ جمی ہیں برف کی طرح ۔۔۔۔۔ وہ یادیں کیسے پگھلیں گی ۔۔۔۔۔ ؟؟؟ ،کبھی گرمی کی تپتی سُرخ گھڑیوں میں میرے ماضی کو سوچو گے ۔۔۔۔۔۔۔ تو آنکھیں بھیگ جائیں گی ۔۔ گھڑی پیچھے کو دوڑے گی ۔۔۔۔ کئی سالوں کی گُم گشتہ، ہماری یاد آۓ گی بچھڑ جاؤ !! مگر سُن لو ۔۔۔۔۔ ہمارے درمیان، ایسی کوئی تو بات بھی ہوگی ۔۔۔۔۔۔۔۔ جِسے تُم یاد رکھو گے ۔۔۔۔۔ مُجھے تُم یاد رکھو گے ۔۔۔۔
  5. Zakhm jhele daagh bhi khaaye bahut, dil laga kar hum toh pachhtaaye bahut. Jab na tab jagah se tum jaaya kiye, hum toh apni or se aaye bahut. Dair se su-e-haram aaya na tuk, hum mizaaj apna idhar laaye bahut. Phool gul shams-o-qamar saare hi the, par humen un mein tumhin bhaaye bahut. Gar buka iss shor se shab ko hai toh, rowenge sone ko hum-saaye bahut. Woh jo nikla subh jaise aaftaab, rashk se gul phool murjhaaye bahut. ‘Meer’ se poochha jo main aashiq ho tum, ho ke kuchh chupke se sharmaaye bahut
×