Jump to content

Please Disable Your Adblocker. We have only advertisement way to pay our hosting and other expenses.  

Search the Community

Showing results for tags 'mirza ghalib'.



More search options

  • Search By Tags

    Type tags separated by commas.
  • Search By Author

Content Type


Forums

  • Help Support
    • Announcement And Help
    • Funday Chatroom
  • Poetry
    • Shair-o-Shaa'eri
    • Famous Poet
  • Islam - اسلام
    • QURAN O TARJUMA قرآن و ترجمہ
    • AHADEES MUBARIK آحدیث مبارک
    • Ramazan ul Mubarik - رمضان المبارک
    • Deen O Duniya - دین و دنیا
  • Other Forums
    • Quizzes
    • Chit chat And Greetings
    • Urdu Adab
    • Entertainment
    • Common Rooms
  • Science, Arts & Culture
    • Education, Science & Technology
  • IPS Community Suite
    • IPS Community Suite 4.1
    • IPS Download
    • IPS Community Help/Support And Tutorials

Blogs

There are no results to display.

There are no results to display.

Categories

  • Premium Files
  • IPS Community Suite 4.3
    • Applications 4.3
    • Plugins 4.3
    • Themes 4.3
    • Language Packs 4.3
    • IPS Extras 4.3
  • IPS Community Suite 4
    • Applications
    • Plugins
    • Themes
    • Language Packs
    • IPS Extras
  • Books
    • Urdu Novels
    • Islamic
    • General Books
  • XenForo
    • Add-ons
    • Styles
    • Language Packs
    • Miscellaneous XML Files
  • Web Scripts
  • PC Softwares

Genres

  • English
  • New Movie Songs
  • Old Movies Songs
  • Single Track
  • Classic
  • Ghazal
  • Pakistani
  • Indian Pop & Remix
  • Romantic
  • Punjabi
  • Qawalli
  • Patriotic
  • Islam

Find results in...

Find results that contain...


Date Created

  • Start

    End


Last Updated

  • Start

    End


Filter by number of...

Joined

  • Start

    End


Group


Facebook ID


FB Page/Group URL


Bigo Live


Website URL


Instagram


Skype


Interests


Location


ZODIAC

Found 4 results

  1. Dard Sy Mere Hai Tujh Ko Beqarari Haye Haye درد سے میرے ہے تجھ کو بیقراری ہائے ہائے کیا ہوئی ظالم تری غفلت شعاری ہائے ہائے تیرے دل میں گر نہ تھا آشوب غم کا حوصلہ تو نے پھر کیوں کی تھی میری غم گساری ہائے ہائے کیوں مری غم خوارگی کا تجھ کو آیا تھا خیال دشمنی اپنی تھی میری دوست داری ہائے ہائے عمر بھر کا تو نے پیمان وفا باندھا تو کیا عمر کو بھی تو نہیں ہے پائیداری ہائے ہائے زہر لگتی ہے مجھے آب و ہوائے زندگی یعنی تجھ سے تھی اسے نا سازگاری ہائے ہائے گل فشانی ہائے ناز جلوہ کو کیا ہو گیا خاک پر ہوتی ہے تیری لالہ کاری ہائے ہائے شرم رسوائی سے جا چھپنا نقاب خاک میں ختم ہے الفت کی تجھ پر پردہ داری ہائے ہائے خاک میں ناموس پیمان محبت مل گئی اٹھ گئی دنیا سے راہ و رسم یاری ہائے ہائے ہاتھ ہی تیغ آزما کا کام سے جاتا رہا دل پہ اک لگنے نہ پایا زخم کاری ہائے ہائے کس طرح کاٹے کوئی شب ہائے تار برشگال ہے نظر خو کردۂ اختر شماری ہائے ہائے گوش مہجور پیام و چشم محروم جمال ایک دل تس پر یہ نا امید واری ہائے ہائے عشق نے پکڑا نہ تھا غالبؔ ابھی وحشت کا رنگ رہ گیا تھا دل میں جو کچھ ذوق خواری ہاے ہائے مرزا غالب
  2. ہر ایک بات پہ کہتے ہو تم کہ تو کیا ہے تمہی کہو کہ یہ انداز گفتگو کیا ہے رگوں میں دوڑتے پهر نے کہ ہم نہیں قائل جب آنکھ ہی سے نہ ٹپکا تو پهر لہو کیا ہے چپک رہا ہے بدن پر لہو سے پیراہن ہماری جیب کو اب حاجت رفو کیا ہے جلا ہے جسم جہاں دل بهی جل گیا ہو گا کریدتے ہو جو اب راکه جستجو کیا ہے رہی نہ طاقت گفتار اور اگر ہو بهی تو کس امید پہ کہئے کہ آرزو کیا ہے
  3. نعل آتش میں ہے، تیغِ یار سے نخچیر کا کاؤکاوِ سخت جانی ہائے تنہائی نہ پوچھ صبح کرنا شام کا، لانا ہے جوئے شیر کا جذبۂ بے اختیارِ شوق دیکھا چاہیے سینۂ شمشیر سے باہر ہے دم شمشیر کا آگہی دامِ شنیدن جس قدر چاہے بچھائے مدعا عنقا ہے اپنے عالمِ تقریر کا خشت پشتِ دستِ عجز و قالب آغوشِ وداع پُر ہوا ہے سیل سے پیمانہ کس تعمیر کا وحشتِ خوابِ عدم شورِ تماشا ہے اسدؔ جو مزہ جوہر نہیں آئینۂ تعبیر کا بس کہ ہوں غالبؔ، اسیری میں بھی آتش زیِر پا !!...موئے آتش دیدہ ہے حلقہ مری زنجیر کا
  4. غزل" - - - - - ("مرزا اسد اللہ خان غالب") ﺁﮦ ﮐﻮ ﭼﺎﮨﯿﮯ ﺍِﮎ ﻋُﻤﺮ ﺍﺛﺮ ﮨﻮﻧﮯ ﺗﮏ ﮐﻮﻥ ﺟﯿﺘﺎ ﮨﮯ ﺗﺮﯼ ﺯُﻟﻒ ﮐﮯ ﺳﺮ ﮨﻮﻧﮯ ﺗﮏ ﺩﺍﻡِ ﮨﺮ ﻣﻮﺝ ﻣﯿﮟ ﮨﮯ ﺣﻠﻘۂ ﺻﺪ ﮐﺎﻡِ ﻧﮩﻨﮓ ﺩﯾﮑﮭﯿﮟ ﮐﯿﺎ ﮔُﺰﺭﮮ ﮨﮯ ﻗﻄﺮﮮ ﭘﮧ ﮔُﮩﺮ ﮨﻮﻧﮯ ﺗﮏ ﻋﺎﺷﻘﯽ ﺻﺒﺮ ﻃﻠﺐ ، ﺍﻭﺭ ﺗﻤﻨّﺎ ﺑﯿﺘﺎﺏ ﺩﻝ ﮐﺎ ﮐﯿﺎ ﺭﻧﮓ ﮐﺮﻭﮞ ﺧﻮﻥِ ﺟﮕﺮ ﮨﻮﻧﮯ ﺗﮏ ﮨﻢ ﻧﮯ ﻣﺎﻧﺎ ﮐﮧ ﺗﻐﺎﻓﻞ ﻧﮧ ﮐﺮﻭ ﮔﮯ ، ﻟﯿﮑﻦ ﺧﺎﮎ ﮨﻮ ﺟﺎﺋﯿﮟ ﮔﮯ ﮨﻢ، ﺗﻢ ﮐﻮ ﺧﺒﺮ ﮨﻮﻧﮯ ﺗﮏ ﭘﺮﺗﻮِ ﺧُﻮﺭ ﺳﮯ ، ﮨﮯ ﺷﺒﻨﻢ ﮐﻮ ﻓﻨﺎ ﮐﯽ ﺗﻌﻠﯿﻢ ﻣﯿﮟ ﺑﮭﯽ ﮨﻮﮞ ، ﺍﯾﮏ ﻋﻨﺎﯾﺖ ﮐﯽ ﻧﻈﺮ ﮨﻮﻧﮯ ﺗﮏ ﯾﮏ ﻧﻈﺮ ﺑﯿﺶ ﻧﮩﯿﮟ ﻓُﺮﺻﺖِ ﮨﺴﺘﯽ ﻏﺎﻓﻞ ! ﮔﺮﻣﺊِ ﺑﺰﻡ ﮨﮯ ﺍِﮎ ﺭﻗﺺِ ﺷﺮﺭ ﮨﻮﻧﮯ ﺗﮏ ﻏﻢِ ﮨﺴﺘﯽ ﮐﺎ ، ﺍﺳﺪؔ ! ﮐﺲ ﺳﮯ ﮨﻮ ﺟُﺰ ﻣﺮﮒ ، ﻋﻼﺝ ﺷﻤﻊ ﮨﺮ ﺭﻧﮓ ﻣﯿﮟ ﺟﻠﺘﯽ ﮨﮯ ﺳﺤﺮ ﮨﻮﻧﮯ ﺗﮏ
×