Jump to content
Search In
  • More options...
Find results that contain...
Find results in...

Welcome to Fundayforum.com

Take a moment to join us, we are waiting for you.

Search the Community

Showing results for tags 'shaher'.



More search options

  • Search By Tags

    Type tags separated by commas.
  • Search By Author

Content Type


Forums

  • Help Support
    • Announcement And Help
    • Funday Chatroom
  • Poetry
    • Shair-o-Shaa'eri
    • Famous Poet
  • Islam - اسلام
    • QURAN O TARJUMA قرآن و ترجمہ
    • AHADEES MUBARIK آحدیث مبارک
    • Ramazan ul Mubarik - رمضان المبارک
    • Deen O Duniya - دین و دنیا
  • Other Forums
    • Quizzes
    • Chitchat and Greetings
    • Urdu Adab
    • Entertainment
    • Common Rooms
  • Science, Arts & Culture
    • Education, Science & Technology
  • IPS Community Suite
    • IPS Community Suite 4.1
    • IPS Download
    • IPS Community Help/Support And Tutorials

Blogs

There are no results to display.

There are no results to display.

Categories

  • IPS Community Suite 4.3
    • Applications 4.3
    • Plugins 4.3
    • Themes 4.3
    • Language Packs 4.3
    • IPS Extras 4.3
  • IPS Community Suite 4
    • Applications
    • Plugins
    • Themes
    • Language Packs
    • IPS Extras
  • Books
    • Urdu Novels
    • Islamic
    • General Books
  • XenForo
    • Add-ons
    • Styles
    • Language Packs
    • Miscellaneous XML Files
  • Web Scripts
  • PC Softwares

Find results in...

Find results that contain...


Date Created

  • Start

    End


Last Updated

  • Start

    End


Filter by number of...

Joined

  • Start

    End


Group


Facebook ID


FB Page/Group URL


Bigo Live


Website URL


Instagram


Skype


Location


Interests

Found 3 results

  1. waqas dar

    Shaher dil ki galiyun mai.

    شہرِ دل کی گلیوں میں شام سے بھٹکتے ہیں !چاند کے تمنائی بے قرار سودائی دل گداز تاریکی روح جاں کو ڈستی یے روح و جاں میں بستی ہے شہرِ دل کی گلیوں میں تاک شب کی بیلوں پر شبنمیں سر شکوں کی بے قرار لوگوں نے بے شمار لوگوں نے یاد گار چھوڑی ہے اتنی بات تھوڑی ہے صد ہزار باتیں تھیں حیلۂ شکیبائی صورتوں کی زیبائی قامتوں کی رعنائی ان سیاہ راتوں میں ایک بھی نہ یاد آئی جا بجا بھٹکتے ہیں کس کی راہ تکتے ہیں چاند کے تمنائی یہ نگر کبھی پہلے اس قدر نہ ویراں تھا کہنے والے کہتے ہیں قریہ نگاراں تھا خیر اپنے جینے کا یہ بھی ایک ساماں تھا آج دل میں ویرانی ابر بن کے گھر آئی آج دل کو کیا کہیے با وفا نہ ہرجائی پھر بھی لوگ دیوانے آ گئے ہیں سمجھانے اپنی وحشت دل کے بن لیے ہیں افسانے خوش خیال دنیا نے گرمیاں تو جاتی ہیں وہ رتیں بھی آتیں ہیں جب ملول راتوں میں دوستوں کی باتوں میں جی نہ چین پائے گا اور اوب جائے گا آہٹوں سے گونجے گی شہرِ دل کی پہنائی اور چاند راتوں میں چاندنی کے شیدائی ہر بہانے نکلیں گے آزمانے نکلیں گے آرزو کی گہرائی ڈھونڈنے کو رسوائی سرد سرد راتوں کو زرد چاند بخشے گا بے حساب تنہائی بے حجاب تنہائی !!!شہرِ دل کی گلیوں میں ابنِ انشاء
  2. دَرد کا شَہر بساتے ہُوئے رو پڑتا ہُوں روز گھر لوٹ کے آتے ہُوئے رو پڑتا ہُوں جانے کیا سوچ کے لے لیتا ہُوں تازہ گجرے اور پھر پھینکنے جاتے ہُوئے رو پڑتا ہُوں جسم پہ چاقو سے ہنستے ہُوئے جو لکھا تھا اَب تو وُہ نام دِکھاتے ہُوئے رو پڑتا ہُوں راہ تکتے ہُوئے دیکھوں جو کسی تنہا کو جانے کیوں آس دِلاتے ہُوئے رو پڑتا ہُوں لوگ جب روگ کی تفصیل طلب کرتے ہیں سخت اِک بات چھپاتے ہُوئے رو پڑتا ہُوں گرم تھی چوٹ تبھی لکھ سکا یہ غم کی بیاض اَب تو اِک شعر سناتے ہُوئے رو پڑتا ہُوں روز دِل کرتا ہے منہ موڑ لوں میں دُنیا سے روز میں دِل کو مناتے ہُوئے رو پڑتا ہُوں اِسمِ لیلیٰ کو فقط اِس لیے رَکھا مخفی پھُوٹ کر نام بتاتے ہُوئے رو پڑتا ہُوں دُور جاتا ہو کوئی ، یار سبھی کہتے ہیں صرف میں ہاتھ ہلاتے ہُوئے رو پڑتا ہُوں چند چپ چاپ سی یادوں کا ہے سایہ مجھ پر قیس بارِش میں نہاتے ہُوئے رو پڑتا ہُوں
  3. اس شہر میں ـــ ایسی بھی قیامت نہ ہوئی تھی تنہا تھے ـــ مـــگر خود سے تو وحشت نہ ہوئی تھی یہ دن ہیں ـ ـ ـ کہ یاروں کا بھروسا بھی نہیں ہے وہ دن تھے ـــ کہ دشـــمن سے بھی نفرت نہ ہوئی تھی اب سانس کا احساس بھی ـ ـ ـ اک بار گراں ہے خود اپنے خلاف ـــ ایسی بغاوت نہ ہوئی تھی اجڑے ہوئے اس دل کے ـ ـ ـ ہر اک زخم سے پوچھو! اس شہر میں ـــ کس کس سے مـــحبت نہ ہوئی تھی اب تیرے قریب آ کے بھی ـ ـ ـ کچھ سوچ رہا ہوں پہلے تجھے کھو کر بھی ـــ ندامت نہ ہوئی تھی ہر شام ابھرتا تھا ـ ـ ـ اسی طور سی مہتاب لیکن ــــــ دل وحشی کی یہ حالت نہ ہوئی تھی خوابوں کی ہوا راس تھی ـ ـ ـ جب تک مجھے "محسن" یوں جاگتے رہنا ـــ میری عادت نہ ہوئی تھی ..
×