Jump to content
Search In
  • More options...
Find results that contain...
Find results in...

Welcome to Fundayforum.com

Take a moment to join us, we are waiting for you.

Search the Community

Showing results for tags 'tum'.



More search options

  • Search By Tags

    Type tags separated by commas.
  • Search By Author

Content Type


Forums

  • Help Support
    • Announcement And Help
    • Funday Chatroom
  • Poetry
    • Shair-o-Shaa'eri
    • Famous Poet
  • Islam - اسلام
    • QURAN O TARJUMA قرآن و ترجمہ
    • AHADEES MUBARIK آحدیث مبارک
    • Ramazan ul Mubarik - رمضان المبارک
    • Deen O Duniya - دین و دنیا
  • Other Forums
    • Quizzes
    • Chitchat and Greetings
    • Urdu Adab
    • Entertainment
    • Common Rooms
  • Science, Arts & Culture
    • Education, Science & Technology
  • IPS Community Suite
    • IPS Community Suite 4.1
    • IPS Download
    • IPS Community Help/Support And Tutorials

Blogs

There are no results to display.

There are no results to display.

Categories

  • IPS Community Suite 4.3
    • Applications 4.3
    • Plugins 4.3
    • Themes 4.3
    • Language Packs 4.3
    • IPS Extras 4.3
  • IPS Community Suite 4
    • Applications
    • Plugins
    • Themes
    • Language Packs
    • IPS Extras
  • Books
    • Urdu Novels
    • Islamic
    • General Books
  • XenForo
    • Add-ons
    • Styles
    • Language Packs
    • Miscellaneous XML Files
  • Web Scripts
  • PC Softwares

Find results in...

Find results that contain...


Date Created

  • Start

    End


Last Updated

  • Start

    End


Filter by number of...

Joined

  • Start

    End


Group


Facebook ID


FB Page/Group URL


Bigo Live


Website URL


Instagram


Skype


Location


Interests

Found 13 results

  1. تم اک گورکھ دهنده ہو کھیل کیا تم نے اَزَل سے یہ رَچا رکھا ہے رُوح کو جسم کے پِنجرے کا بنا کر قیدی اُس پہ پھر موت کا پہرا بھی بٹھا رکھا ہے دے کے تدبیر کے پنچھی کو اُڑانیں تم نے دامِ تقدیر بھی ہر سَمْت بچھا رکھا ہے کر کے آرائشیں کونین کی برسوں تم نے ختم کرنے کا بھی منصوبہ بنا رکھا ہے لامکانی کا بہرحال ہے دعویٰ بھی تمہیں نَحْنُ اَقْرَبْ کا بھی پیغام سنا رکھا ہے یہ بُرائی، وہ بھلائی، یہ جہنّم، وہ بہشت اِس اُلْٹ پھیر میں فرماؤ تو کیا رکھا ہے؟ جُرم آدم نے کِیا اور سزا بیٹوں کو ! عدل و انصاف کا مِعیار بھی کیا رکھا ہے دے کے انسان کو دنیا میں خلافت اپنی اک تماشا سا زمانے میں بنا رکھا ہے اپنی پہچان کی خاطر ہے بنایا سب کو سب کی نظروں سے مگر خود کو چُھپا رکھا ہے تم اک گورکھ دھندا ہو نِت نئے نقش بناتے ہو، مٹا دیتے ہو جانے کس جُرمِ تمنّا کی سزا دیتے ہو کبھی کنکر کو بنا دیتے ہو ہیرے کی کَنی کبھی ہیروں کو بھی مٹی میں مِلا دیتے ہو زندگی کتنے ہی مردوں کو عطا کی جس نے وہ مسیحا بھی صلیبوں پہ سجا دیتے ہو خواہشِ دید جو کر بیٹھے سرِ طُور کوئی طُور ہی برقِ تجلّی سے جلا دیتے ہو نارِ نمرُود میں ڈلواتے ہو خود اپنا خلِیل خود ہی پھر نار کو گُلزار بنا دیتے ہو چاہِ کنعان میں پھینکو کبھی ماہِ کنعاں نُور یعقوب کی آنکھوں کا بجھا دیتے ہو بیچو یُوسُف کو کبھی مِصْر کے بازاروں میں آخرِ کار شَہِ مِصْر بنا دیتے ہو جذب و مستی کی جو منزل پہ پہنچتا ہے کوئی بیٹھ کر دل میں اَنا الْحَق کی صدا دیتے ہو خود ہی لگواتے ہو پھر کُفْر کے فتوے اُس پر خود ہی منصُور کو سُولی پہ چڑھا دیتے ہو اپنی ہستی بھی وہ اِک روز گنوا بیٹھتا ہے اپنے دَرْشَن کی لگن جس کو لگا دیتے ہو کوئی رانجھا جو کبھی کَھوج میں نکلے تیری تم اسے جھنگ کے بیلے میں رُلا دیتے ہو جستجو لے کے تمہاری جو چلے قَیس کوئی اس کو مجنوں کسی لیلیٰ کا بنا دیتے ہو جَوْت سَسّی کے اگر مَن مِیں تمہاری جاگے تم اسے تپتے ہوئے تَھل میں جلا دیتے ہو سوہنی گر تم کو مہینوال تصوُّر کر لے اس کو بِپھری ہوئی لہروں میں بہا دیتے ہو خود جو چاہو تو سرِ عرش بُلا کر محبوب ایک ہی رات میں مِعراج کرا دیتے ہو تم اک گورکھ دھندا ہو آپ ہی اپنا پردہ ہو تم اک گورکھ دھندا ہو جو کہتا ہوں، مانا، تمہیں لگتا ہے بُرا سا پھر بھی ہے مجھے تم سے بہرحال گِلہ سا چُپ چاپ رہے دیکھتے تم عرشِ بریں پر تپتے ہوئے کَربَل میں مؐحمد کا نوا سا کِس طرح پلاتا تھا لہو اپنا وفا کو خود تین دنوں سے وہ اگرچہ تھا پیاسا دُشمن تو بہر طور تھے دُشمن مگر افسوس تم نے بھی فراہم نہ کِیا پانی ذرا سا ہر ظلم کی توفیق ہے ظالم کی وِراثَت مظلوم کے حصّے میں تسلّی نہ دلاسا کل تاج سجا دیکھا تھا جس شخص کے سَر پر ہے آج اُسی شخص کے ہاتھوں میں ہی کاسہ یہ کیا ہے اگر پُوچُھوں تو کہتے ہو جواباً اِس راز سے ہو سکتا نہیں کوئی شناسا تم اک گورکھ دھندا ہو حیرت کی اک دنیا ہو تم اک گورکھ دھندا ہو ہر ایک جا پہ ہو لیکن پَتا نہیں معلوم تمہارا نام سُنا ہے، نِشاں نہیں معلوم تم اک گورکھ دھندا ہو دل سے اَرمان جو نکل جائے تو جُگنُو ہو جائے اور آنکھوں میں سِمَٹ آئے تو آنسو ہو جائے جاپ یا ہُو کا جو بے ہُو کرے ہُو میں کھو کر اُس کو سُلطانیاں مِل جائیں، وہ باہُو ہو جائے بال بِیکا نہ کسی کا ہو چُھری نیچے حَلْقِ اَصغَر میں کبھی تِیر ترازُو ہو جائے تم اک گورکھ دھندا ہو کس قدر بے نیاز ہو تم بھی داستانِ دراز ہو تم بھی مرکزِ جستجوِ عالمِ رنگ و بُو دَم بہ دَم جلوَہ گر تُو ہی تُو چار سُو ہُو کے ماحول مِیں، کچھ نہیں اِلّا ہُو تم بہت دِلرُبا، تم بہت خُوبرُو عرش کی عظمتیں، فَرش کی آبرو تم ہو کونین کا حاصلِ آرزو آنکھ نے کر لیا آنسوؤں سے وُضو اب تو کر دو عطا دید کا اِک سَبُو آؤ پَردے سے تم آنکھ کے روبرو چند لمحے مِلن، دو گھڑی گفتگو نازؔ جَپتا پِھرے جا بجا کُو بہ کُو ... وَحْدَہٗ، وَحْدَہٗ، لَا شَریک لَهٗ
  2. تم کہ سنتے رہے اوروں کی زبانی لوگو ہم سُناتے ہیں تمہیں اپنی کہانی لوگو کون تھا دشمنِ جاں وہ کوئی اپنا تھا کہ غیر ہاں وہی دُشمنِ جاں دلبرِ جانی لوگو زُلف زنجیر تھی ظالم کی تو شمشیر بدن رُوپ سا رُوپ جوانی سی جوانی لوگو سامنے اُسکے دِکھے نرگسِ شہلا بیمار رُو برو اُسکے بھرے سَرو بھی پانی لوگو اُسکے ملبوس سے شرمندہ قبائے لالہ اُس کی خوشبو سے جلے رات کی رانی لوگو ہم جو پاگل تھے تو بے وجہ نہیں تھے پاگل ایک دُنیا تھی مگر اُس کی دِوانی لوگو ایک تو عشق کیا عشق بھی پھر میر سا عشق اس پہ غالب کی سی آشفتہ بیانی لوگو ہم ہی سادہ تھے کِیا اُس پہ بھروسہ کیا کیا ہم ہی ناداں تھے کہ لوگوں کی نہ مانی لوگو ہم تو اُس کے لئے گھر بار بھی تج بیٹھے تھے اُس ستمگر نے مگر قدر نہ جانی لوگو کس طرح بھُول گیا قول و قسم وہ اپنے کتنی بے صرفہ گئی یاد دہانی لوگو اب غزل کوئی اُترتی ہے تو نوحے کی طرح شاعری ہو گئی اب مرثیہ خوانی لوگو شمع رویوں کی محبت میں یہی ہوتا ھے رہ گیا داغ فقط دل کی نشانی لوگو ( احمد فراز ) AHMAD FRAZ
  3. بیوفائی کے سِتم تم کو سمجھ آجاتے کاش ! تم جیسا اگر ہوتا تمھارا کوئی نہ وہ مِلتا ہے نہ مِلنے کا اِشارہ کوئی کیسے اُمّید کا چمکے گا سِتارہ کوئی حد سے زیادہ، نہ کسی سے بھی محبّت کرنا جان لیتا ہے سدا ، جان سے پیارا کوئی بیوفائی کے سِتم تم کو سمجھ آجاتے کاش ! تم جیسا اگر ہوتا تمھارا کوئی چاند نے جاگتے رہنے کا سبب پُوچھا ہے کیا کہَیں ٹُوٹ گیا خواب ہمارا کوئی سب تعلّق ہیں ضرورت کے یہاں پر، مُحسنؔ نہ کوئی دوست، نہ اپنا، نہ سہارا کوئی محسؔن نقوی
  4. Anabiya Haseeb

    poetry Khush haal Se Tum Bh lgty ho

    خوش حال سے تم بھی لگتے ہو۔۔ یوں افسردہ تو ہم بھی نہیں۔۔ پر جاننے والے جانتے ہیں، خوش ہم بھی نہیں، خوش تم بھی نہیں۔۔! تم اپنی خودی کے پہرے میں، اور دامِ غرور میں جکڑے ہوئے، ہم اپنے زعم کے نرغے میں، اَنا ہاتھ ہمارے پکڑے ہوئے، اک مدّت سے غلطاں پیچاں، تم ربط و گریز کے دھاروں میں، ہم اپنے آپ سے اُلجھے ہوئے، پچھتاوے کے انگاروں میں، محصورِ تلاطم آج بھی ہو، گو تم نے کنارے ڈھونڈ لیے، طوفان سے سنبھلے ہم بھی نہیں۔۔ کہنے کو سہارے ڈھونڈ لیے، خاموش سے تم ہم مُہر بہ لب، جُگ بِیت گئے ٹُک بات کیے، سنو کھیل ادھورا چھوڑتے ہیں، بِنا چال چلے بِنا مات کیے، جو بھاگتے بھاگتے تھک جائیں، وہ سائے رُک بھی سکتے ہیں۔۔ چلو توڑو قسم اقرار کریں۔۔ ہم دونوں جھک بھی سکتے ہیں۔۔???? ۔۔۔۔
  5. Momina Haseeb

    poetry Mjhy tum yad atay ho

    "Hamein Ab KhO Ke Kehta Hai Mujhe Tum Yaad Aate Ho,, ----------------------------------------------------------- " Kisi Ka Ho Ke Kehta Hai Mujhe Tum Yaad Aate Ho,, ----------------------------------------------------------- "Samandar Tha To Zor-o-Shor Se Bahata Tha Lehren,, ----------------------------------------------------------- " Ab Qatra Ho Ke Kehta Hai Mujhe Tum Yaad Aate Ho,, ----------------------------------------------------------- " Bayaan Karte Jo Haal e Dil To Youn Muskura Dete,, ----------------------------------------------------------- " Ab Wohi To Ke Kehta Hai Mujhe Tum Yaad Aate Ho,, ----------------------------------------------------------- " Na Pooch Uss Ki Bad'naseebi Ka Aalam Mohsin,, ----------------------------------------------------------- " Wo Mujh Ko KhO Ke Kehta Hai Mujhe Tum Yaad Aate Ho..............!!!!!! ----------------------------------------------
  6. Anabiya Haseeb

    poetry Yeh Tum Acha nahi karte

    Akele chor jaty ho,Ye Tm acha nahi karty Hamara dil jalaty ho Ye Tum acha nahi kArty kaha b tha Muhabat hy Muhabat hi isy rakho Tamasha jo banaty ho Ye tum acha nahi kArty Uthaty ho Sar-e-Mehfil falak tak Tum Humay lekin Utha kar jo giraty ho ye Tum acha nahi kArty koi jo poch le Tumse k rishta kya hy ab Un se To Nazron ko jhukaty ho ye Tum acha nahi kArty Bikhar jayen andheron main sahara Tum hi dety ho Magar phir chor jaty ho ye Tum acha nahi karty.
  7. Anabiya Haseeb

    poetry Chalo Tum Chor Do Mujh Ko

    Chalo Tum Chor Do Mujh Ko Hum Wapis Laut Jate Hain Tumhe Manzil Mubarak Ho Naya Sathi Mubarak Ho Magar Phir Aye Mere Humdum Mujhe Itna To Batla Do K Wapis Kis Taraf Jaun Kahan Se Sath Laye The Mujhe Itna To Samjha Do Agar Aisa Nahi Mumkin To Mujh Ko Is Tarha Toro K Me Yaksar Bikhar Jaun Bhatakne Se To Behtar Hai Tumhare Pas Mar Jaun...
  8. Momina Haseeb

    poetry Mujhy tum se mohabbat ha

    مجھے وہ زخم مت دینا دواجس کی محبت ہو مجھے وہ خواب مت دینا حقیقت جس کی وحشت ہو مجھے وہ درد مت دینا کہ جس میں بس اذیت ہو مجھے وہ نام مت دینا کہ جسے لینا قیامت ہو مجھے وہ ہجر مت دینا جو مانند رفاقت ہو مجھے وہ نیند مت دینا جسے آڑنے کی عادت ہو میرے میں جب سوچوں توجہ خاص رکھنا تم مجھے تم سے محبت ہے بس اس کا پاس رکھنا تم
  9. Anabiya Haseeb

    poetry Suno Tum Chalay Jaao,,

    Suno Daikho Aj Kitni Udasi Hai Hawa Bhi Tham Si Gai Hai Yon Lagta Hai Jaisay Har Soo Ho Ka Aalam Hai Pat'ton Ki Sarsarahat Sey Ajab Sa Shor Berpa Hai Parindon Ki Chahchahat Bhi Aik Ajab Ahsas Dilati Hai Jaisay Jaisay Koi Bicharnay Wala Ho Jaisay Koi Totnay Wala Ho Aankhain Chalak Rhi Hain Baytabi Ka Sa Aalam Hai Dil Duaain Mang Raha Hai Kapkapatay Hath Daikho Gang Zaban Ki Rehnumai Bamushkil Ker Rahay Hain Tumhain Alwoda Kehnay K Liay Yeh Palkain Jhuk Gai Hain Umeedon Ka Bandhan Ab Tot'ta Jata Hai Lab Sil Sey Gay Hain Qadam Jam Say Gay Hain Waqt Bhi Daikho Kaisay Sakat Khara Hai Zindagi Ki Roshni Ab Mand Per Gai Hai Judai Ki Wehshat Apna Phan Phailaay Yoon Khari Hai Jaisay Abhi Hamain Das Lay Gi Jaisay Ham Kabhi Mil Naa Paa'ain Gay Jaisay Ab Kabhi Ham Hans Na Pa'ain Gay Jaisay Ab Wo Qehqahay Kabhi Khamoshi Cheer Na Paain Gay Is Sey Pehlay K Zabt Ka Daman Choot Jaay Is Say Pehlay K Yeh Dil Toot Ja'ay Is Sey Pehlay K Rooh Perwaz Ker Jaay Suno Tum Apni Raftar Berha Lo Suno Pechay Mur Ker Mat Daikhna K Pechay Daikhnay Walay Aksar Haar Jatay Hain Suno Main Tumhain Hara Hoa Daikh Nahi Sakti Suno Tum Chalay Jao Khudara Mairay Zabt Ka Aor Imtihan Mat Laina Khudara Pechay Mat Daikho Suno Tum Chalay Jao Alwida Aay Ham Nashin Alwida Ab Tum Chalay Jaao Bas Tum Chalay Jaao,
  10. ، بہت کوشش کرو گے تُم !!کہ اب موسم جو بدلیں تو، ہماری یاد نہ آۓ ۔۔۔ ،،،،،،مگر ایسا نہیں ہوگا ۔۔۔۔۔۔۔۔ ،کہیں جو ۔۔۔۔۔۔۔ سرد موسم میں دِسمبر کی ہواؤں میں ۔۔۔۔۔ تُمھارے دل کے گوشوں میں ۔۔۔۔۔ جمی ہیں برف کی طرح ۔۔۔۔۔ وہ یادیں کیسے پگھلیں گی ۔۔۔۔۔ ؟؟؟ ،کبھی گرمی کی تپتی سُرخ گھڑیوں میں میرے ماضی کو سوچو گے ۔۔۔۔۔۔۔ تو آنکھیں بھیگ جائیں گی ۔۔ گھڑی پیچھے کو دوڑے گی ۔۔۔۔ کئی سالوں کی گُم گشتہ، ہماری یاد آۓ گی بچھڑ جاؤ !! مگر سُن لو ۔۔۔۔۔ ہمارے درمیان، ایسی کوئی تو بات بھی ہوگی ۔۔۔۔۔۔۔۔ جِسے تُم یاد رکھو گے ۔۔۔۔۔ مُجھے تُم یاد رکھو گے ۔۔۔۔
  11. Ek Roz Tum Ne Thama Tha Hath Mera Mere Hath Se Tumhare Hath Ki Khushbu Nahi Jati Tum Bohat Pyar Se Pukarty Thy Naam Mera Mere Kaano Se Tumhari Wo Awaaz Nahi Jati Main Bulati Bhi Nahi Thi Aur Tum Aa Jaty Thy Ab Bulane Par Bhi Meri Awaaz Tum Tak Nahi Jati Bas Chuky Ho Tum Meri Nas Nas Mein Lahu Ki Tarha Meri Ulfat Tumhari Rooh Mein Utar Kyun Nahi Jati Main Jantani Hoon Yeh Sheher Yeh Rastay Tumhare Nahi Phir Bhi Mere Dil Se Intezar Ki Aadat Nahi Jati...
  12. Uss Ne Kaha Tum Mein Pehli Si Baat Nahi Main Ne Kaha Zindagi Main Tera Saath Nai Uss Ne Kaha Ab Bhi Kisi Ki Aankhon Main Doob Jatay Ho? Main Ne Kaha Ab Kisi Aankh Main Wo Baat Nai Uss Ne Kaha Kyon Itna Toot Kai Chaaha Muje? Main Ne Kaha Insaan Hoon Pathar Zaat Nai Uss Ne Kaha Kya Main Bewafa Hoon? Main Ne Kaha Mujhe Ab Wafa Ki Talash Nai Uss Ne Kaha Bhool Ja Muj Ko!!! Main Ne Kaha Tum Haqeeqat Ho Koi Khawab Nai.....
  13. Suzain Khan

    poetry tum ne bhi thukra diya

    Tum ne bhi thukraa hi diya duniya se bhi duur huye, Apni anaa ke saaray sheeshe akhir chikna-chuur huye, Hum ne jin pr ghazlen sochin un ko chaaha logon ne, Hum kitne badnaam huye thay, woh kitne mashoor huye, Tark-e-wafaa ki saari qasmen un ko dekh ke toot gayin, Un ka naaz salaamat thehra, hum hi zara majboor huye, Aik gharri ko ruk kr pucha us ne to ehwaal magar, Baaqi umar na murr kar dekha, hum aese maghroor huye, Ab ke un ki bazm main jaye ga gar mohsin azn mile, Zakham hi un ki nazar guzaaren, ashk to na-manzoor huye..
×