Jump to content
Jannat malik

کِسی کا درد ہو دِل بے قرار اپنا ہے

Recommended Posts


کِسی کا درد ہو دِل بے قرار اپنا ہے
ہَوا کہِیں کی ہو، سینہ فگار اپنا ہے
ہو کوئی فصل مگر زخم کِھل ہی جاتے ہیں
سدا بہار دلِ داغدار اپنا ہے
بَلا سے ہم نہ پیئیں، میکدہ تو گرم ہُوا
بقدرِ تشنگی رنجِ خُمار اپنا ہے
جو شاد پھرتے تھے کل، آج چُھپ کے روتے ہیں
ہزار شُکر غمِ پائیدار اپنا ہے
اِسی لیے یہاں کُچھ لوگ ہم سے جلتے ہیں
کہ جی جلانے میں کیوں اِختیار اپنا ہے
نہ تنگ کر دلِ مخزوں کو اے غمِ دنیا !
خُدائی بھر میں یہی غم گسار اپنا ہے
کہیں مِلا تو کِسی دن منا ہی لیں گے اُسے
وہ ذُود رنج سہی ، پھر بھی یار اپنا ہے
وہ کوئی اپنے سِوا ہو تو اُس کا شِکوہ کرُوں
جُدائی اپنی ہے اور انتظار اپنا ہے
نہ ڈھونڈھ ناصرِ آشفتہ حال کو گھر میں
وہ بُوئے گُل کی طرح بے قرار اپنا ہے

ناصرکاظمی

………………………………………

FB_IMG_1481648010036.jpg

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

  • Forum Statistics

    1,934
    Total Topics
    8,057
    Total Posts
×