Jump to content
Zarnish Ali

چاہے اس کو خدا کہے کوئی

Recommended Posts

 کب تلک مدعا کہے کوئی
نہ سنو تم تو کیا کہے کوئی

غیرت عشق کو قبول نہیں
کہ تجھے بے وفا کہے کوئی

منتِ ناخدا نہیں منظور
چاہے اس کو خدا کہے کوئی

ہر کوئی اپنے غم میں ہے مصروف
کس کو درد آشنا کہے کوئی

کون اچھا ہے اس زمانے میں
کیوں کسی کو برا کہے کوئی

کوئی تو حق شناس ہو یارب
ظلم کو ناروا کہے کوئی

وہ نہ سمجھیں گے ان کنایوں کو
جو کہے برملا کہے کوئی

آرزو ہے کہ میرا قصہء شوق
آج میرے سوا کہے کوئی

جی میں آتا ہے کچھ کہوں ناصر
کیا خبر سن کے کیا کہے کوئی

دیوان

(ناصر کاظمی)

 

  • Like 3

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

  • Forum Statistics

    1,934
    Total Topics
    8,057
    Total Posts
×