Jump to content
Jannat malik

نہ کوئی خواب ہمارے ہیں نہ تعبیریں ہیں

Rate this topic

Recommended Posts

نہ کوئی خواب ہمارے ہیں نہ تعبیریں ہیں

ہم تو پانی پہ بنائی ہوئی تصویریں ہیں

کیا خبر کب کسی انسان پہ چھت آن گرے

قریۂ سنگ ہے اور کانچ کی تعمیریں ہیں

لُٹ گئے مفت میں دونوں، تری دولت مرا دل

اے سخی! تیری مری ایک سی تقدیریں ہیں

ہم جو ناخواندہ نہیں ہیں تو چلو آؤ پڑھیں

وہ جو دیوار پہ لکھی ہوئی تحریریں ہیں

ہو نہ ہو یہ کوئی سچ بولنے والا ہے قتیل

....جس کے ہاتھوں میں قلم پاؤں میں زنجیریں ہیں

 

FB_IMG_1483548610856.jpg

  • Like 2

Share this post


Link to post
Share on other sites

 

Bohaaat Khoob :) @Jannat malik  

rope-line-animated.gif


New Content added Less than in a minutes & merged.

animated-smiley-line.gif

 

ایک احساس 
جو مرے دل کو 
روز و شب اضطراب دیتا ہے 
سوچتا رہتا ہوں کہ تو کیا ہے 
پھول ہے 
خوشبو ہے 
کہ رنگت ہے 
پھول تجھ کو کہوں تو ٹھیک نہیں
تجھ کو رنگت کہوں تو ٹھیک نہیں 
چونکہ 
یہ دونوں مٹنے والے ہیں
پھول احساس کا ذریعہ ہے 
ہے یہ رنگت لباس کی مانند 
میرے نزدیک ایک خوشبو ہے 
جو فضاوءں میں رہنے والی ہے
اب سوال ایک پیدا ہوتا ہے 
پھول ہے تجھ میں
یا ہے پھول میں تو ؟
اس کی عقدہ کشائی کی خاطر 
ذہن و دل پر سوار رہتا ہے 
ایک احساس 
 بس یہی احساس

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

  • Forum Statistics

    1,925
    Total Topics
    8,043
    Total Posts
×