Jump to content

Please Disable Your Adblocker. We have only advertisement way to pay our hosting and other expenses.  

Zarnish Ali

کوئی نالہ یہاں رَسا نہ ہُوا

Rate this topic

Recommended Posts

کوئی نالہ یہاں رَسا نہ ہُوا
اشک بھی حرفِ مُدّعا نہ ہُوا
تلخی درد ہی مقدّر تھی
جامِ عشرت ہمیں عطا نہ ہُوا
ماہتابی نگاہ والوں سے
دل کے داغوں کا سامنا نہ ہُوا
آپ رسمِ جفا کے قائل ہیں
میں اسیرِ غمِ وفا نہ ہوا
وہ شہنشہ نہیں، بھکاری ہے
جو فقیروں کا آسرا نہ ہُوا
رہزن عقل و ہوش دیوانہ
عشق میں کوئی رہنما نہ ہُوا
ڈوبنے کا خیال تھا ساغرؔ
ہائے ساحل پہ ناخُدا نہ ہُوا
(ساغر صدیقی)

images.jpg

  • Like 4

Share this post


Link to post
Share on other sites

یہ آنکھیں ____تیری دید کے

فاقوں سے _____مر گئی ہیں

  • Like 1

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

  • Forum Statistics

    1,829
    Total Topics
    8,184
    Total Posts
×