Jump to content

Rate this topic

Recommended Posts

بہت یاد آتی ہیں __ باتیں پرانی
یہی زندگی ___ قہقہے شادمانی
ہمیشہ حسینوں سے آنکھیں لڑانی
سدا کامیابی، سدا کامرانی
بہت یاد آتی ہیں باتیں پُرانی
وہ دن رات کوئے نگاراں کے پھیرے
وہ کمرے فیروزاں وہ زینے اندھیرے
وہ زلفوں کے حلقے وہ بانہوں کے گھیرے
وہیں مدتوں جا کے راتیں بیتانی
بہت یاد آتی ہیں __ باتیں پرانی
سجی خلوتوں میں کبھی شغلِ مینا
وہ محبوب خوش ادا خوش قرینہ
کبھی اس کے ہاتھوں سے ضد کر کے پینا
کبھی اپنے ہاتھوں سے اسکو پلانی
بہت یاد آتی ہیں __ باتیں پرانی
وہ سردی کی راتیں _ وہ جاڑے کا جوبن
لحافوں میں کم سِن دلوں کی وہ دھڑکن
چھڑانا اُن ہاتھوں سے اپنا وہ دامن
وہ آنگن میں مہکی ہوئی رات رانی
بہت یاد آتی ہیں __ باتیں پرانی
نہ وہ دل نہ وہ دل کی نادانیاں ہیں
نہ وہ ہم نہ _ وہ بزم سامانیاں ہیں
نہ وہ دوستوں کی گل افشانیاں ہیں
نہ وہ فکرِ رنگیں کی جولانیاں ہیں
گئی شعر گوئی رہی نوحہ خوانی
وہ بیتی جوانی__ وہ بیتی جوانی
بہت یاد آتی ہیں __ باتیں پرانی

1.jpg

  • Like 1

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

  • Forum Statistics

    1,937
    Total Topics
    8,060
    Total Posts
×