Jump to content

Rate this topic

Recommended Posts

 

🔸خلیفہ عمر بن خطاب رضی اللہ عنہ نے جب دور سے لوگوں کے ایک گروہ کو آگ جلائے دیکھا تو انکے قریب ہوئے اور پکارا 
"اے روشنی والوں! "
یہ نہیں کہا" اے آگ والوں "
اس ڈر سے کہ انکو یہ کلمہ اذیت دے گا ۔

🔸حسن اور حسین رضی اللہ عنهما نے دیکھا ایک بڑی عمر کا  آدمی وضو صحیح نہیں کر رہا 
تو انہوں نے اس سے کہا:
ہم چاہتے ہیں کہ آپ ہمارے درمیان فیصلہ کریں کون اچھا وضو کرتا ہے ؟!
جب انہوں نے وضو کیا تو وہ ہنسنے لگا کہ میں ہی ہوں جو اچھا وضو نہیں کر رہا تھا۔

🔸امام غزالی کے پاس ایک شخص آیا اور کہا 
تارک نماز کے بارے میں کیا حکم ہے ؟
تو کہا اسکا حکم یہ ہے کہ ہم اسکو  اپنے ساتھ نماز کیلئے مسجد لیکر جائیں ۔

✨زندگی کا حسن خوش اسلوبی کے ساتھ ہے نہ کہ
عیب چننے سے.😊😊

  • Like 1

Share this post


Link to post
Share on other sites

gud lesson .. kisi ko samjhane k liye koi b baat ache way ikhtiyaar kerna aisa k dosre ko bura b na lage or wo sahi kaam b ker lee wo sab se achi baat. per aj kaal dekhte hain koi b baat ya amal aise tanzi andaaz mai kahte dosre ko k touba touba kerwa dete . khair gud post hareem nice hy :) thanks for sharing 

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

  • Forum Statistics

    1,947
    Total Topics
    8,132
    Total Posts
×