Jump to content

Register now to gain access to all of our features. Once registered and logged in, you will be able to create topics, post replies to existing threads, give reputation to your fellow members, get your own private messenger, post status updates, manage your profile and so much more. If you already have an account, login here - otherwise create an account for free today!

Welcome to our forums
Welcome to our forums, full of great ideas.
Please register if you'd like to take part of our project.
Urdu Poetry & History
Here you will get lot of urdu poetry and history sections and topics. Like/Comments and share with others.
We have random Poetry and specific Poet Poetry. Simply click at your favorite poet and get all his/her poetry.
Thank you buddy
Thank you for visiting our community.
If you need support you can post a private message to me or click below to create a topic so other people can also help you out.

Sign in to follow this  
Urooj Butt

بھلے دنوں کی بات ہے

Rate this topic

Recommended Posts

بھلے دنوں کی بات ہے بھلی سی ایک شکل تھی 
نہ یہ کہ حسن عام ہو نہ دیکھنے میں عام سی

نہ یہ کہ وہ چلے تو کہکشاں سی رہ گزر لگے
مگر وہ ساتھ ہو تو پھر بھلا بھلا سا سفر لگے 

کوئی بھی رت ہو اسکی چھب، فضا کا رنگ و روپ تھی 
وہ گرمیوں کی چھاؤں تھی، وہ سردیوں کی دھوپ تھی 

نہ مدتوں جدا رہے ، نہ ساتھ صبح و شام رہے
نہ رشتہء وفا پہ ضد نہ یہ کہ اذن عام ہو

نہ ایسی خوش لباسیاں کہ سادگی گلہ کرے 
نہ اتنی بے تکلفی کہ آئینہ حیا کرے ۔ ۔ ۔ 

نہ عاشقی جنون کی کہ زندگی عذاب ہو 
نہ اس قدر کٹھور پن کہ دوستی خراب ہو 

کبھی تو بات بھی خفی، کبھی سکوت بھی سخن
کبھی تو کشت زاعفراں، کبھی اداسیوں کا بن

سنا ہے ایک عمر ہے معاملات دل کی بھی 
وصال جان فزا تو کیا ،فراق جانگسسل کی بھی 

سوایک روز کیا ہوا ، وفا پہ بحث چھڑ گئی 
میں عشق کو امر کہوں ،وہ میری بات سے چڑ گئی 

میں عشق کا اسیر تھا وہ عشق کو قفس کہے 
کہ عمر بھر کے ساتھ کو بدتر از ہوس کہے

شجر ہجر نہیں کہ ہم ہمیشہ پابہ گل رہے
نہ ڈھور ہیں کہ رسیاں گلے میں مستقل رہیں 

میں کوئی پینٹنگ نہیں کی ایک فریم میں رہوں 
وہی جو من کا میت ہو اسی کہ پریم میں رہوں

نہ یس کو مجھ پر مان تھا، نہ مجھ کو اس پہ زعم ہی
جب عہد ہی کوئی نہ ہو، تو کیا غم شکستی 

سو اپنا اپنا راستہ خوشی خوشی بدل لیا 
وہ اپنی راہ چل پڑی ، میں اپنی راہ چل دیا 

بھلی سی ایک شکل تھی بھلی سی اس کی دوستی 
اب اس کی یاد رات دن نہیں مگر کبھی کبھی

FB_IMG_15212931761341444.jpg

Edited by Urooj Butt
  • Thumbs Up 1

Share this post


Link to post
Share on other sites

یہ سوچ کر کہ غم کے خریدار آگئے
ہم خواب بیچنے سرِ بازار آگئے

آواز دے کے چھپ گئی ہر بار زندگی
ہم ایسے سادہ دل تھے کہ ہر بار آگئے
______________
(احمد فراز)

Share this post


Link to post
Share on other sites

Join the conversation

You can post now and register later. If you have an account, sign in now to post with your account.
Note: Your post will require moderator approval before it will be visible.

Guest
Reply to this topic...

×   Pasted as rich text.   Paste as plain text instead

  Only 75 emoji are allowed.

×   Your link has been automatically embedded.   Display as a link instead

×   Your previous content has been restored.   Clear editor

×   You cannot paste images directly. Upload or insert images from URL.

Sign in to follow this  

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

  • Forum Statistics

    2,054
    Total Topics
    8,880
    Total Posts
×
×
  • Create New...