Jump to content

Rate this topic

Recommended Posts

‏فُضول بیٹھ کے صفحات بھرتی رہتی ہُوں
میں اَپنے آپ کو اِلہام کرتی رہتی ہُوں
اَگر ، مگر ، نہیں ، ہرگز کی کند قینچی سے
اَنوکھے خوابوں کے پَر ، شَر کترتی رہتی ہُوں
میں سانس نگری کی بے حد عجیب مالی ہُوں
لگائے پودوں کے بڑھنے سے ڈَرتی رہتی ہُوں
نجانے کس نے اُڑا دی کہ ’’ دِن معین ہے ‘‘۔

یقین مانیے میں روز مرتی رہتی ہُوں

مرے وُجود کو اَشکوں نے گوندھ رَکھا ہے
ذِرا بھی خشک رَہوں تو بکھرتی رہتی ہُوں
دُعا کو ہاتھ اُٹھاتی تو اُس پہ حرف آتا
اَبھی تو سستی پہ اِلزام دَھرتی رہتی ہُوں
کسی کے حُسن کا ہے رُعب اِس قَدَر مجھ پر
میں خواب میں بھی گلی سے گزرتی رہتی ہُوں
بہت سے شعروں کے آگے لکھا ہے ’’ نامعلوم ‘‘۔
بہت سے شعر میں کہہ کر مکرتی رہتی ہُوں
اُدھورے قصے کئی کاندھا مانگتے ہیں مرا
میں کھنڈرات میں اَکثر ٹھہرتی رہتی ہُوں
تمام لوگ مرا آئینہ ہیں ، اُن کے طفیل
میں اَپنی ذات کے اَندر اُترتی رہتی ہُوں
بہت سے کاموں میں خود کار ہو گئی ہُوں ' 
میں خود کو کہہ کے ’’ سدھر جا ‘‘ ، سدھرتی رہتی ہُوں

 

FB_IMG_1531608284708.jpg

Share this post


Link to post
Share on other sites

 

 

💚💚,,,عمــــــــــــــــــــــــــــــــدہ,,,💚💚
زبــــــــــــــــــــــــــردست,,,
💜💜,,,اعــــــــــــــــــــــــــــــــلی,,,💜💜
شــــــ
ــــــــــانـــــــــــــــدار,,
💛💛,,,بہتـــــــــــــــــــــــــــــــرین,💛💛
لاجـــــــــــــــــــــــــــــواب
,,,خـــــــــــــــــــــــــــــــــوب,

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

  • Forum Statistics

    1,947
    Total Topics
    8,132
    Total Posts
×