Jump to content

Register now to gain access to all of our features. Once registered and logged in, you will be able to create topics, post replies to existing threads, give reputation to your fellow members, get your own private messenger, post status updates, manage your profile and so much more. If you already have an account, login here - otherwise create an account for free today!

Welcome to our forums
Welcome to our forums, full of great ideas.
Please register if you'd like to take part of our project.
Urdu Poetry & History
Here you will get lot of urdu poetry and history sections and topics. Like/Comments and share with others.
We have random Poetry and specific Poet Poetry. Simply click at your favorite poet and get all his/her poetry.
Thank you buddy
Thank you for visiting our community.
If you need support you can post a private message to me or click below to create a topic so other people can also help you out.

Rate this topic

Recommended Posts

کتنا دشوار تھا دنیا یہ ہنر آنا بھی 
تجھ سے ہی فاصلہ رکھنا تجھے اپنانا بھی 

کیسی آداب نمائش نے لگائیں شرطیں 
پھول ہونا ہی نہیں پھول نظر آنا بھی 

دل کی بگڑی ہوئی عادت سے یہ امید نہ تھی 
بھول جائے گا یہ اک دن ترا یاد آنا بھی 

جانے کب شہر کے رشتوں کا بدل جائے مزاج 
اتنا آساں تو نہیں لوٹ کے گھر آنا بھی 

ایسے رشتے کا بھرم رکھنا کوئی کھیل نہیں 
تیرا ہونا بھی نہیں اور ترا کہلانا بھی 

خود کو پہچان کے دیکھے تو ذرا یہ دریا 
بھول جائے گا سمندر کی طرف جانا بھی 

جاننے والوں کی اس بھیڑ سے کیا ہوگا وسیمؔ 
اس میں یہ دیکھیے کوئی مجھے پہچانا بھی

 

FB_IMG_1537300296122.jpg

Share this post


Link to post
Share on other sites

بُزُرگ ، مُتّقی ، تاجر ، مُحلے دار سے تُو
ہمارا پُوچھ کبھی آ کے تین چار سے تُو

تُجھے خبر نہیں کتنی طویل ہوتی ہے
جو بات آنکھ سے کرتا ہے اِختصار سے تُو

میں پہلی بات پہ ماتم کروں یا دُوجی پر
یقین سے میں گیا اور اعتبار سے تُو

اے دل سلام تُجھے تیری دھڑکنوں کو سلام
جو اپنا کام چلاتا ہے اِنتظار سے تُو

اسی لیے تُجھے ہر بار مات ہوتی ہے
کوئی سبق نہیں لیتا ہے پِچھلی ہار سے تُو

خؤد اپنے آپ کو آواز دیتا رہتا ہوں
پُکارتا تھا مُجھے جس طرح سے پیار سے تُو

یقین مان کہ شدّت سے یاد آتا ہے
کسی بھی چائے یا سگریٹ کے اِشتہار سے تُو

خود اپنے آپکو فوراً گھسیٹ کر لے جا
میری نِگاہ میں پھیلے ہوئے غُبار سے تُو

پھر اِس کے بعد تُو رہتا ہے اگلے چھ دن تک
جو مرے دھیان میں آتا ہے سوموار سے تُو

Share this post


Link to post
Share on other sites

Join the conversation

You can post now and register later. If you have an account, sign in now to post with your account.
Note: Your post will require moderator approval before it will be visible.

Guest
Reply to this topic...

×   Pasted as rich text.   Paste as plain text instead

  Only 75 emoji are allowed.

×   Your link has been automatically embedded.   Display as a link instead

×   Your previous content has been restored.   Clear editor

×   You cannot paste images directly. Upload or insert images from URL.

Sign in to follow this  

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

  • Forum Statistics

    2,060
    Total Topics
    8,878
    Total Posts
×
×
  • Create New...