Jump to content

Please Disable Your Adblocker. We have only advertisement way to pay our hosting and other expenses.  

Rate this topic

Recommended Posts

نفع کی صورت ہؤا ، جتنا بھی خمیازہ ہؤا ،

غم سہا جاتا ہے کیسے، ہم کو اندازہ ہؤا ۔۔۔ 

 

زندگی درویش کی مانند ہی میں نے کاٹ دی 

جب سے مجھ پہ بند اُس کے گھر کا دروازہ ہؤا ۔۔۔

 

موسمٍ گل! تیرا آنا بھی سزا سے کم نہیں ، 

وقت نے جو بھر دیا تھا ، زخم پھر تازہ ہؤا ۔۔۔

 

فکر کا سیاح میرے جیتے جی لوٹا نہیں ،

جو مرے احساس میں باقی تھا شیرازہ ہؤا ۔۔۔

 

ایسا لگتا ہے دُعا مقبول میری ہو گئ!

آج اپنی حیثیت کا مجھ کو اندازہ ہؤا ۔۔۔

 

مصلحت کوشی تجھے منزل تلک لے جائے گی!

روح کی گہرائیوں میں ایسا آوازہ ہؤا ۔۔۔

 

تیرے چہرے کی اُداسی وہ چھپا سکتا ہے اب ،

آجکل ایجاد پارس ایسا بھی غازہ ہؤا ۔۔۔!

 

3e9791eb25511e8-a-nw-p.jpg

  • Like 1
  • Thumbs Up 1

Share this post


Link to post
Share on other sites

 

آپ ہیں کہ جانے کو کھڑے ہیں۔۔۔
دل ہے کہ بیٹھا جا رہا ہے۔۔۔۔

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

  • Forum Statistics

    1,872
    Total Topics
    8,326
    Total Posts
×