Jump to content

Please Disable Your Adblocker. We have only advertisement way to pay our hosting and other expenses.  

Rate this topic

Recommended Posts

 

میں راہِ زندگانی پر
قدم جب بھی بڑھاتا ہوں 
کہیں کانٹوں سے بچنا ہے 
کہیں دل کو کچلنا ہے 
کہیں اپنوں کی بے رخیاں 
کہیں غیروں کے طعنے ہیں 

میں تھک کر بیٹھ جاتا ہوں 
نگاہ اوپر اٹھاتا ہوں 
خدایا رستہ مشکل ہے 
میں ہمت کم ہی پاتا ہوں 

کہیں پھر پاس سے دل کے 
صدا اک خوب آتی ہے 
کہ راہیں جنّتوں کی کب 
بھلا آسان ہوتی ہیں ،،؟

کہیں صحرا کی تپتی ریت 
کہیں طائف کے پتھر ہیں 
کہیں اپنے ہی تلواریں لیے 
اس جاں کے در پے ہیں

اگرچہ ہے بہت مشکل 
مگر اس راہ سے پہلے بھی 
کتنے لوگ گزرے ہیں 
انہی قدموں پہ چلنا ہے 

کہ  پھر اک حسین منزل 
تمہاری منتظر ہو گی 
بس یہ یاد رکھنا تم  
منازل جب حسیں ہوں تو 
راہیں دشوار ہوتی ہیں ۔۔۔۔۔

2dc38ae586ca331-a-nw-p.jpg

  • Like 1

Share this post


Link to post
Share on other sites

....کیا خاک ترقی کی_______آج کی دنیا نے
....مریض عشق تو آج بھی لا علاج بیٹھے ہیں

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

  • Forum Statistics

    1,872
    Total Topics
    8,326
    Total Posts
×