Jump to content
Search In
  • More options...
Find results that contain...
Find results in...
Sign in to follow this  
Jannat malik

سینکڑوں ہی رہنما ہیں راستہ کوئی نہیں

Recommended Posts

سینکڑوں ہی رہنما ہیں راستہ کوئی نہیں

آئنے چاروں طرف ہیں دیکھتا کوئی نہیں

سب کے سب ہیں اپنے اپنے دائرے کی قید میں

دائروں کی حد سے باہر سوچتا کوئی نہیں

صرف ماتم اور زاری سے ہی جس کا حل ملے

اس طرح کا تو کہیں بھی مسئلہ کوئی نہیں

یہ جو سائے سے بھٹکتے ہیں ہمارے ارد گرد

چھو کے ان کو دیکھیے تو واہمہ کوئی نہیں

جو ہوا یہ درج تھا پہلے ہی اپنے بخت میں

اس کا مطلب تو ہوا کہ بے وفا کوئی نہیں

تیرے رستے میں کھڑے ہیں صرف تجھ کو دیکھنے

مدعا پوچھو تو اپنا مدعا کوئی نہیں

کن‌ فکاں کے بھید سے مولیٰ مجھے آگاہ کر

کون ہوں میں گر یہاں پر دوسرا کوئی نہیں

وقت ایسا ہم سفر ہے جس کی منزل ہے الگ

وہ سرائے ہے کہ جس میں ٹھہرتا کوئی نہیں

گاہے گاہے ہی سہی امجدؔ مگر یہ واقعہ

یوں بھی لگتا ہے کہ دنیا کا خدا کوئی نہیں

DnYyIZqW4AQnbrf.thumb.jpg.b2ce23dd0ef79f68f7373e03abfdaf68.jpg

Share this post


Link to post
Share on other sites

Join the conversation

You can post now and register later. If you have an account, sign in now to post with your account.
Note: Your post will require moderator approval before it will be visible.

Guest
Reply to this topic...

×   Pasted as rich text.   Paste as plain text instead

  Only 75 emoji are allowed.

×   Your link has been automatically embedded.   Display as a link instead

×   Your previous content has been restored.   Clear editor

×   You cannot paste images directly. Upload or insert images from URL.

Sign in to follow this  

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

  • Forum Statistics

    2,108
    Total Topics
    8,935
    Total Posts
×
×
  • Create New...