Jump to content
Search In
  • More options...
Find results that contain...
Find results in...

Welcome to Fundayforum.com

Take a moment to join us, we are waiting for you.

Rate this topic

Recommended Posts

 

روگ دل کو لگا گئیں آنکھیں 
اک تماشا دکھا گئیں آنکھیں 

مل کے ان کی نگاہ جادو سے 
دل کو حیراں بنا گئیں آنکھیں 

مجھ کو دکھلا کے راہ کوچہء یار 
کس غضب میں پھنسا گئیں آنکھیں 

اس نے دیکھا تھا کس نظر سے مجھے 
دل میں گویا سما گئیں آنکھیں 

محفل یار میں بہ ذوق نگاہ 
لطف کیا کیا اٹھا گئیں آنکھیں 

حال سنتے وہ میرا کیا حسرت 
وہ تو کہئے سنا گئیں آنکھیں 

 

56d8a1e0418bb_colorofhearts.gif.221c2ddd

 

eyes_of_love_by_annakoutsidou-d5qucld.jp

  • Like 4

Share this post


Link to post
Share on other sites

کسی آنکھ کو صدا دو ، کسی زلف کو پکارو 
بڑی دھوپ پڑ رھی ھے کوئی سائباں نہیں ھے 
انہی پتھروں پہ چل کے اگر آ سکو تو آؤ 
میرے گھر کے راستے میں کوئی کہکشاں نہیں ھے 

  • Like 2

Share this post


Link to post
Share on other sites

 

اک نظر دیکھیں جو تیری آنکھیں 
خیرہ ہوگئیں، پھر میری آنکھیں

کالے گیسوؤں پہ وُہ بالا نشیں 
کتنی ہوش رُبا ہیں تیری آنکھیں

اترتی گئیں دل کے نہاں خانوں میں
یہ گلاب آنکھیں، شراب آنکھیں

دل دھڑکنے سے پہلے مچلنے لگا
شراب ڈورے، شرابی آنکھیں

ڈھونڈھ رہا ہوں، میں دل اپنا
نکال لے گئیں وہ، خواب آنکھیں

جن میں ڈوبنے کو کرتا ہے من
جاوید یہی تو ہیں وُہ لاجواب آنکھیں


 

  • Like 2

Share this post


Link to post
Share on other sites

 

سحر پھونکتی ہوئی اُس کی ساحر آنکھیں
جادو کر کے کہاں گئیں وہ جادوگر آنکھیں

دو موسم اِک پل میں کیسے آ سکتے ہیں
وہ شاداب چہرہ، میری پت جھڑ آنکھیں

دل سینے میں ہے، لاج بچا لیتا ہے
عشق کو رُسوا کرتی ہیں، اکثر آنکھیں

بے فصل سے موسم تن بدن پہ ٹھہر گئے
خواب کہاں اُگیں، سیم زدہ بنجر آنکھیں

کون سہے گا عذاب ہجر کا پوچھا تھا
رونے والے نے کہا تھا ہنس کر، آنکھیں

کانچ جذبے، موم دل، محبت والوں کے
آگ سی باتیں اہلِ جہاں کی، پتھر آنکھیں

 

56d8ce1166b4c_desiart.jpg.028f6e7c8d08b2

  • Like 2

Share this post


Link to post
Share on other sites

 

پھیر لیتا ہے مجھ سے تو آنکھیں
چھوڑ دیتی ہیں آرزو آنکھیں

کوئی دیوانہ اس کو سمجھے گا
کر رہی ہیں جو گفتگو آنکھیں

پا لیا پھر بھی مدعا میں نے
چپ رہیں میرے روبرو آنکھیں

آئنہ جھوٹ کس طرح بولے
آئی ہیں اس کے روبرو آنکھیں

میں کہاں ان سے بچ کے جاؤں گا
رقص کرتی ہیں چار سو آنکھیں

جو مجھے مست الست کر دے گا
کب پلائیں گی وہ سبو آنکھیں

کون تصویر ہونے والا ہے
ہیں ابھی محوِ جستجو آنکھیں

کرچیاں ہو گئے ہیں خواب فصیح
ہو گئی ہیں لہو لہو آنکھیں

  • Like 2

Share this post


Link to post
Share on other sites

بھڑکائیں میری پیاس کو اکثر تیری آنکھیں 
صحرا میرا چہرہ ہے سمندر تیری آنکھیں 

بوجھل نظر آتی ہیں بظاہر مجھے لیکن 
کھلتی ہیں بہت دل میں اُتَر کر تیری آنکھیں 

اب تک میری یادوں سے مٹائے نہیں مٹتا 
بھیگی ہوئی شام کا منظر ، تیری آنکھیں 

ممکن ہو تو اک تازہ غزل اور بھی کہہ لوں 
پھر اوڑھ نا لیں خواب کی چادر تیری آنکھیں 

یوں دیکھتے رہنا اسے اچھا نہیں محسن 
وہ کانچ کا پیکر ہے تو پتھر تیری آنکھیں 

 

3c80695.jpg.c4c148b4f3e065d8f652d1a4c5db

 

  • Like 2

Share this post


Link to post
Share on other sites

 

مجھ سے ملتے ہیں تو ملتے ہیں چرا کر آنکھیں 
پھر وہ کس کے لیے رکھتے ہیں سجا کر آنکھیں 

میں انہیں دیکھتا رہتا ہوں جہاں تک دیکھوں 
ایک وہ ہیں جو دیکھیں نا اٹھا کر آنکھیں 

اس جگہ آج بھی بیٹھا ہوں اکیلا یارو 
جس جگہ چھوڑ گئے تھے وہ ملا کر آنکھیں 

مجھ سے نظریں وہ اکثر چرا لیتے ہیں فراز 
میں نے کاغذ پہ بھی دیکھی ہیں بنا کر آنکھیں 

 

  • Like 2

Share this post


Link to post
Share on other sites

 

وہ حسن مجسم کمال اسکی آنکھیں 
سراپا محبت جمال اسکی آنکھیں 


جھکیں تو لگتی ہیں زیور حیا کا 
اٹھیں تو کریں پھر سوال اسکی آنکھیں 

ملیں تو میں دونوں جہاں دے کے لے لوں 
وہ چہرہ وہ زلفیں وہ گال اسکی آنکھیں 

اگر کوئی پوچھے کے دنیا میں کیا ہے 
دیوانہ کہے گا مثال اس کی آنکھیں 

ان آنکھوں کے کاجل میں ڈوبا ہوں شاید 
عجب پھر چلی ہیں یہ چال اسکی آنکھیں 

 

f161_1337920685.jpg.789b405ede059593afda

 

  • Like 2

Share this post


Link to post
Share on other sites

اس کی کالی آنکھوں میں ہیں انتر منتر سب
چاقو واقو، چھریاں وُ ریاں، خنجر ونجر سب

جس دن سے تم روٹھے مجھ سے، روٹھے روٹھے ہیں
چادر وادر، تکیہ وکیہ، بستر وِستر سب

مجھ سے بچھڑ کر وہ بھی کہاں اب پہلے جیسا ہے
پھیکے پڑ گئے کپڑے وپڑے، زیور شیور سب

آخر میں کس دن ڈوبوں گا، فکریں کرتے ہیں
دریا وریا، کشتی وشتی، لنگر ونگر سب

 

نم رہتی ہیں آنکھیں میری 
بھیگی ہوئی ہیں شامیں میری

گر میں سچ کہوں تو 
زہر لگتی ہیں باتیں میری

یہاں کیسے ہو پہچان میری
مجھ پہ لپٹں ذاتیں میری

تیرے جانے کے بعد نواز
اندھیری ساری راتیں میری

  • Like 2

Share this post


Link to post
Share on other sites

جاتی ھے کسی جھیل کی گہرائ کہاں تک 
آنکھوں میں تیری ڈوب کے دیکھیں گے کسی دن 

 

56d8a1e0418bb_colorofhearts.gif.221c2ddd

 

 

تیری خاطر ھی تو یہ آنکھیں پائیں 
 ...میں بھلا دوں تیری صورت کیسے 

  • Like 2

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

  • Forum Statistics

    1,870
    Total Topics
    7,969
    Total Posts
×