Jump to content
News Ticker
  • Welcome to Fundayforum.com
  • Please Register Your ID For More Access.

Search the Community

Showing results for tags 'yaad'.



More search options

  • Search By Tags

    Type tags separated by commas.
  • Search By Author

Content Type


Forums

  • Help Support
    • Announcement And Help
    • Funday Chatroom
  • Poetry
    • Shair-o-Shaa'eri
    • Famous Poet
  • Islam - اسلام
    • QURAN O TARJUMA قرآن و ترجمہ
    • AHADEES MUBARIK آحدیث مبارک
    • Ramazan ul Mubarik - رمضان المبارک
    • Deen O Duniya - دین و دنیا
  • Other Forums
    • Quizzes
    • Chitchat and Greetings
    • Urdu Adab
    • Entertainment
    • Common Rooms
  • Science, Arts & Culture
    • Education, Science & Technology
  • IPS Community Suite
    • IPS Community Suite 4.1
    • IPS Download
    • IPS Community Help/Support And Tutorials

Blogs

There are no results to display.

There are no results to display.

Categories

  • IPS Community Suite 4.3
    • Applications 4.3
    • Plugins 4.3
    • Themes 4.3
    • Language Packs 4.3
    • IPS Extras 4.3
  • IPS Community Suite 4
    • Applications
    • Plugins
    • Themes
    • Language Packs
    • IPS Extras
  • Books
    • Urdu Novels
    • Islamic
    • General Books
  • XenForo
    • Add-ons
    • Styles
    • Language Packs
    • Miscellaneous XML Files
  • Web Scripts
  • PC Softwares

Find results in...

Find results that contain...


Date Created

  • Start

    End


Last Updated

  • Start

    End


Filter by number of...

Joined

  • Start

    End


Group


Facebook ID


FB Page/Group URL


Bigo Live


Website URL


Instagram


Skype


Interests


Location


ZODIAC

Found 10 results

  1. *امتحان جامعہ کا وہ زمانہ یاد ہے* *رات بھرجگ کرکتابوں، کو ملانایاد ہے* *مسجدو دارالإقامہ اور مزار پاک میں* *ہر جگہ ہر پل وہاں رٹا لگانا یاد ہے* *بےخودی ,وارفتگی اور فکر دائم کے سبب* *مضمحل ہوکر کہیں بھی، لیٹ جانا یاد ہے* *بال, ناخن اور کپڑوں کا نہیں رہتا خیال* *ناشتہ, کھانا بھی اکثر، بھول جانا یاد ہے* *منطقی اور فلسفی پر پیچ بحثوں کے سبب* *تار ذہنی بھی کسی کا، چھوٹ جانا یاد ہے* *جبل شامخ کی طرح لگتا ہمیں جن کا نصاب* *ان کتابوں کا فقط ، پرچہ ملانا یاد ہے* *امتحاں میں جب کبھی ٹکرا گیا کوئی سوال* *اضطراری کیف میں خوشیاں منانا یادہے* *لائٹ دینے میں اگر تاخیر کردیتا شمیم* *مشتعل ہوکر ہمارا ، ہٹہٹانا یادہے* *ہم پڑھیں گے ابتدا سے اب نہ چھوڑ یں گے سبق* *امتحاں کے بعد وعدہ، بھول جانا یاد ہے* *ہے دعا نعمان کی یہ پاس ہوجائیں سبھی* *اے خدا ہم کو بھی اپنا وہ زمانہ یاد ہے*
  2. ابھی تو عشق میں ایسا بھی حال ہونا ہے کہ اشک روکنا تم سے محال ہونا ہے ہر ایک لب پہ ہیں میری وفا کے افسانے تیرے ستم کو ابھی لازوال ہونا ہے بجا کہ خار ہیں لیکن بہار کی رت میں یہ طے ہے اب کے ہمیں بھی نہال ہونا ہے تمہیں خبر ہی نہیں تم تو لوٹ جاؤ گے تمہارے ہجر میں لمحہ بھی سال ہونا ہے ہماری روح پہ جب بھی عذاب اتریں گے تمہاری یاد کو اس دل کی ڈھال ہونا ہے کبھی توروئے گا وہ بھی کسی کی بانہوں میں کبھی تو اسکی ہنسی کو زوال ہونا ہے ملیں گی ہم کو بھی اپنے نصیب کی خوشیاں بس انتظار ہے کب یہ کمال ہونا ہے ہر ایک شخص چلے گا ہماری راہوں پر محبتوں میں ہمیں وہ مثال ہونا ہے زمانہ جس کے خم و پیچ میں الجھ جائے ہماری ذات کو ایسا سوال ہونا ہے وصی یقین ہے مجھ کو وہ لوٹ آئے گا !... اس کو بھی اپنے کیے کا ملال ہونا ہے ❤ وصی شاہ Wasi Shah
  3. کب یاد میں تیرا ساتھ نہیں، کب ہاتھ میں تیرا ہاتھ نہیں صد شُکر کہ اپنی راتوں میں اب ہجر کی کوئی رات نہیں مشکل ہیں اگر حالات وہاں،دل بیچ آئیں جاں دے آئیں دل والو کوچہء جاناں میں، کیا ایسے بھی حالات نہیں جس دھج سے کوئی مقتل میں گیا،وہ شان سلامت رہتی ہے یہ جان تو آنی جانی ہے،اس جاں کی تو کوئی بات نہیں میدانِ وفا دربار نہیں ، یاں نام و نسب کی پوچھ کہاں عاشق تو کسی کا نام نہیں، کچھ عشق کسی کی ذات نہیں گر بازی عشق کی بازی ہے،جو چاہو لگا دو ڈر کیسا گرجیت گئے تو کیا کہنا، ہارے بھی تو بازی مات نہیں (فیض احمد فیض)
  4. Kisi ki yaad dil me hai koi Ehsas baqi hai Badalte mosamon k darmian Ek Raaz baqi hai Abhi me safar me hon Milay gi manzil mujhe Magar in raston k darmian Ek saath baqi hai kahin pe sham dhalti hai kahin raat hoti hai Abhi to chand hai Chandni raat baqi hai Chale Aao kisi din tum hamara haal B dekho Hamara jism murda hai magar Ek saans baqi hai... Umeed hai phr B milega wo hamain Ek din KHUDA par hai bharosa KHUDA ki zaat baqi hai...!
  5. تمہاری یاد کی خوشبو، کمال کرتی ہے خلوصِ دل سے مری دیکھ بھال کرتی ہے مجھے یہ جوڑ کے رکھتی ہے ہجر میں تجھ سے یہ زندگی مرا کتنا خیال کرتی ہے اکیلا گھومنے نکلوں تو راستے کی ہوا تمہارے بارے میں مجھ سے سوال کرتی ہے تمہارے غم میں سسکتی ہوئی یہ تنہائی تمام رات بڑی قیل و قال کرتی ہے توقعات ، مجھے توڑ پھوڑ دیتی ہیں اُمید ، مجھ کو ہمیشہ نڈھال کرتی ہے خُدا گواہ ، میں زندہ بدست مردہ ہوں شبِ فراق ، بُرا میرا حال کرتی ہے ,,,,, اگر یہ سچ ہے ، محبّت ہے زندگی تو پھر یہ کیوں میرا جینا محال کرتی ہے
  6. Hareem Naz

    nazm bht yaad ati ha

    بہت یاد آتی ہیں __ باتیں پرانی یہی زندگی ___ قہقہے شادمانی ہمیشہ حسینوں سے آنکھیں لڑانی سدا کامیابی، سدا کامرانی بہت یاد آتی ہیں باتیں پُرانی وہ دن رات کوئے نگاراں کے پھیرے وہ کمرے فیروزاں وہ زینے اندھیرے وہ زلفوں کے حلقے وہ بانہوں کے گھیرے وہیں مدتوں جا کے راتیں بیتانی بہت یاد آتی ہیں __ باتیں پرانی سجی خلوتوں میں کبھی شغلِ مینا وہ محبوب خوش ادا خوش قرینہ کبھی اس کے ہاتھوں سے ضد کر کے پینا کبھی اپنے ہاتھوں سے اسکو پلانی بہت یاد آتی ہیں __ باتیں پرانی وہ سردی کی راتیں _ وہ جاڑے کا جوبن لحافوں میں کم سِن دلوں کی وہ دھڑکن چھڑانا اُن ہاتھوں سے اپنا وہ دامن وہ آنگن میں مہکی ہوئی رات رانی بہت یاد آتی ہیں __ باتیں پرانی نہ وہ دل نہ وہ دل کی نادانیاں ہیں نہ وہ ہم نہ _ وہ بزم سامانیاں ہیں نہ وہ دوستوں کی گل افشانیاں ہیں نہ وہ فکرِ رنگیں کی جولانیاں ہیں گئی شعر گوئی رہی نوحہ خوانی وہ بیتی جوانی__ وہ بیتی جوانی بہت یاد آتی ہیں __ باتیں پرانی
  7. Anabiya Haseeb

    poetry Kabhi Yaad Aye To Pochana,,

    Kabhi Yaad Aye To Pochna Zara Apni Khalwat-E-Shaam Se Kisse Ishq Tha Teri Zaat Se Kisse Pyar Tha Tera Naam Se Zara Yaad Karo Wo Kon Tha Jo Kabhi Tujhe Bhi Aziz Tha Wo Jo Ji Utha Tere Naam Se Wo Jo Mer Mitaa Tere Naam Pe Hame Be Rukhi Ka Nahi Gila K Yehi Wafaon K Hai Sila Magar Aisa Jurm Tha Konsa Gaye Ham Jo Dua-O-Salam Se Na Kabhi Vissal Ki Chah Ki Na Kabhi Firaq Mien Ahh Ki K Mera Tareqa-E-Bandagi Hai Juda Tareqap-E-Aam Se
  8. aapki yaad aati rahi raat bhar chaandani dil dukhati rahi raat bhar gaah jalti huii, gaah bujhti huii shaame gham jhilmilaati rahi raat bhar koi khushboo badalti rahii pairahan koi taswir gaati rahi raat bhar phir saba saaya e shakhe gul ke talay koi qissa sunaati rahi raat bhar jo naa aaya usay koi zanjir e dar har sadaa par bulaati rahii raat bhar ek umeed se dil behelta raha ek tamanna satati rahi raat bhar
  9. دکھ کی لہر نے چھیڑا ھوگا یاد نے کنکر پھینکا ھوگا آج تو میرا دل کہتا ھے تو اس وقت اکیلا ھوگا میرے چومے ہوئے ہاتھوں سے اوروں کو خط لکھتا ھوگا بھیگ چلیں اب رات کی پلکیں تو اب تھک کے سویا ھوگا ریل کی گہری سیٹی سن کر رات کا جنگل گونجا ھوگا شہر کے خالی اسٹیشن پر کوئی مسافر اترا ھوگا آنگن میں پھر چڑیاں بولیں تو اب سو کر اٹھا ھوگا یادوں کی جلتی شبنم سے پھول سا مکھڑا دھویا ھوگا موتی جیسی شکل بنا کر آئینے کو تکتا ھوگا شام ہوئی اب تو بھی شاید اپنے گھر کو لوٹا ھوگا نیلی دھندلی خاموشی میں تاروں کی دھن سنتا ھوگا میرا ساتھی شام کا تارا تجھ سے آنکھ ملاتا ھوگا شام کے چلتے ہاتھ نے تجھ کو میرا سلام تو بھیجا ھوگا پیاسی کرلاتی کونجوں نے میرا دکھ تو سنایا ھوگا میں تو آج بہت رویا ھوں تو بھی شاید رویا ھوگا ناصر تیرا میت پرانا تجھ کو یاد تو آتا ھوگا۔۔
  10. waqas dar

    Muje ab khud se nafrat hai

    مجھے یادوں سے نفرت______ ہے مجھے باتوں سے نفرت______ہے سبھی دعووں سے نفرت______ہے قسم وعدوں سے نفرت______ ہے ہر اس لمحے سے نفرت______ ہے !!!!جو تیری یاد میں گذرے ہر اس خواہش سے نفرت_____ ہے جو تیری چاہ میں ابھرے ہر اس آنسو سے نفرت_____ ہے ....جو تیرے غم میں بہتا ہے مجھے اس دل سے نفرت____ ہے جو تیرے درد سہتا ہے !!!________اور !!!!جو سارے درد سہہ کر بھی !!!.......ابھی تک کیوں دھڑکتا ہے مجھے نفرت دلیلوں سے, جوازوں سے, حوالوں سے مجھے نفرت مثالوں سے, جوابوں سے, سوالوں سے ....ضوابط اور اصولوں سے !!____یہ سب جھوٹے دلاسے ہیں یہ سب ہیں کھوٹ نیت کا مجھے نفرت اناؤں سے, خطاؤں سے, جفاؤں سے مجھے نفرت دعاؤں سے, وفاؤں سے, صداؤں سے مجھے مقہور رہنا ہے, مجھے مجبور رہنا ہے مجھے نفرت اجالوں سے, گھٹاؤں سے, ہواؤں سے مجھے تاریکیاں دے دو, مجھے محبوس رہنا ہے ! مجھے بارش سے نفرت ہے ! کہ عادت تشنگی کی ہے !بہاروں سے بھی نفرت ہے کہ میرے دل کے آنگن می ,خزاں کےبعد پھر سے اک خزاں کا دور آتا ہے وہی سورج, وہی ہے چاند میری روشن محبت کے , کبھی جو استعارے تھے مجھے ان سب سے نفرت ہے, مجھے یوں تونے گہنایا مجھے نفرت ہے محفل سے, تکلم سے, تبسم سے مجھے تنہائیاں دے دو, مجھے خاموش رہنا ہے مجھے نفرت بصارت سے, جو تیری دید کی پیاسی مجھے نفرت سماعت سے, تجھے سننے کو جو ترسے لبوں سے مجھ کو نفرت ہے, جو تیری آہ بھرتے ہیں سبھی جذبوں سے نفرت ہے, جو تیری چاہ کرتے ہیں مجھے نفرت ہے منزل سے, مجھے نفرت سفر سے ہے مجھے نفرت بھٹکنے سے, تڑپنے سے, سسکنے سے میرا رخت سفر نفرت, مجھے پر درد رہنا ہے مجھے آنکھوں سے نفرت ہے یہ تیرے خواب جب دیکھیں مجھے خوابوں سے نفرت ہے گر ان میں تو نظر آۓ مجھے نیندوں سے نفرت ہے تیرے سپنے یہ لاتی ہیں بےخوابی سے بھی نفرت ہے ترے غم جو جگاتی ہے سبھی گیتوں سے نفرت ہے جو تیرے سنگ گاۓ تھے سبھی شعروں سے نفرت ہے کبھی تجھ کو سناۓ تھے مجھے رنگوں سے نفرت تھے جو تجھسنگ جھلملاۓ تھے مجھے محلوں سے نفرت ہے جو خوابوں میں سجاۓ تھے ادھورے پن سے نفرت ہے مجھے لفظوں سےنفرت ہے جو میرا درد کہتے ہیں غزل, نظموں سےنفرت ہے جو تیرا نام نہ لے کر تیرےخاطر ہی بنتے ہیں مجھے اب خود سے نفرت ہے کیوں تیری منتظر ا ہوں محبت سے بھی نفرت ہے کہ جو میں تجھ سے کربیٹھی مجھے جینے سے نفرت ہے ہجر کی تلخیوں کا زہر اب پینےسےنفرت ہے مجھے اب خود سےنفرت ہ مجھے___ جینے سے نفرت ہے
×