Jump to content
Search In
  • More options...
Find results that contain...
Find results in...

Welcome to Fundayforum.com

Take a moment to join us, we are waiting for you.

Search the Community

Showing results for tags 'عجب'.



More search options

  • Search By Tags

    Type tags separated by commas.
  • Search By Author

Content Type


Forums

  • Help Support
    • Announcement And Help
    • Funday Chatroom
  • Poetry
    • Shair-o-Shaa'eri
    • Famous Poet
  • Islam - اسلام
    • QURAN O TARJUMA قرآن و ترجمہ
    • AHADEES MUBARIK آحدیث مبارک
    • Ramazan ul Mubarik - رمضان المبارک
    • Deen O Duniya - دین و دنیا
  • Other Forums
    • Quizzes
    • Chitchat and Greetings
    • Urdu Adab
    • Entertainment
    • Common Rooms
  • Science, Arts & Culture
    • Education, Science & Technology
  • IPS Community Suite
    • IPS Community Suite 4.1
    • IPS Download
    • IPS Community Help/Support And Tutorials

Blogs

There are no results to display.

There are no results to display.

Categories

  • IPS Community Suite 4.3
    • Applications 4.3
    • Plugins 4.3
    • Themes 4.3
    • Language Packs 4.3
    • IPS Extras 4.3
  • IPS Community Suite 4
    • Applications
    • Plugins
    • Themes
    • Language Packs
    • IPS Extras
  • Books
    • Urdu Novels
    • Islamic
    • General Books
  • XenForo
    • Add-ons
    • Styles
    • Language Packs
    • Miscellaneous XML Files
  • Web Scripts
  • PC Softwares

Find results in...

Find results that contain...


Date Created

  • Start

    End


Last Updated

  • Start

    End


Filter by number of...

Joined

  • Start

    End


Group


Facebook ID


FB Page/Group URL


Bigo Live


Website URL


Instagram


Skype


Location


Interests

Found 6 results

  1. عجب یہ حجر کا قصہ ہے عجب یہ شبِ جدائی ہے نہ میری آنکھ جھپکی ہے نہ دل نے لی اَنگڑائی ہے نہ اُنکو بھولا دل میرا نہ اُنکی یاد سے غافل کہ جسکو فرض کی مانند ہر اک پل یاد رکھنا ہو کہ جسکو قرض کی مانند ہر اک پل ساتھ رکھنا ہو بھلا کیسے بھلاتا دل کہ انکو یاد نہ کرنا وَبالِ جان بن جائے یہ سانسیں گھونٹ لی جائیں یہ آنکھیں موندھ لی جائیں جو ہوں ہم یاد سے غافل تو دھڑکن روک دی جائیں چلو یہ سب سمبھل جائیں مگر جو روح تڑپ جائے بتاو کیا کریں اُسکا کہ روح سےروح کا رشتہ ہے ازلوں سے یونہی لِپٹا وہ ہم کو بھول بھی جائیں تو ہم پےفرض ہوتا ہے اُنہیں دل کے باغیچے سے ان آنکھوں کےدریچے سے کسی مالا کی کلیوں سے کسی کوئل کی کو کو سے ہم اپنے آپ میں بھر لیں کہ ہر اک لفظ اپنے میں اُنہی کا رنگ و بو بھر لیں کہ جو بھی لفظ پرکھے گا ہمارے ہاتھ سے لکھے ہمیں بھی یاد رکھے گا کہ ذکرِ حسن جب ہو گا ہمارے لفظ کھوجے گا مگر پھر سحر میں جکڑا حوالے یوں بھی کچھ دے گا عجب وہ حجر کا قصہ تھا عجب وہ شبِ جدائی تھی نہ اسکی آنکھ جھپکی تھی نہ دل نے لی اَنگڑائی تھی مگر وہ ٹھان بیٹھا تھا اُسے لفظوں میں جَڑ دے گا محبت اَمر کر دے گا سو جَڑ ڈالا ہے ظالم نے نِصابوں میں حوالوں میں محبت کے سب بابوں میں! ©S.S Writes
  2. عجب اپنا حال ہوتا_________، جو وصال یار ہوتا کبھی جان صدقے ہوتی،______ کبھی دل نثار ہوتا کوئی فتنہ تا قیامت_________ نہ پھر آشکار ہوتا ترے دل پہ کاش اے ظالم____ مجھے اختیار ہوتا جو تمہاری طرح تم سے کوئی جھوٹے وعدے کرتا تمھیں منصفی سے کہہ دو_ تمہیں اعتبار ہوتا.. ¡? غمِ عشق میں مزا تھا جو اسے سمجھ کے کھاتے یہ وہ زہر ہے کہ_______ آخر میں خوشگوار ہوتا یہ مزہ تھا دل لگی کا_______، کہ برابر آگ لگتی نہ تجھے قرار ہوتا،________ نہ مجھے قرار ہوتا یہ مزا ہے دشمنی میں، نہ ہے لطف دوستی میں کوئی غیر غیر ہوتا،_________ کوئی یار یار ہوتا ترے وعدے پر ستمگر،_____ابھی اور صبر کرتے اگر اپنی زندگی کا،_________ ہمیں اعتبار ہوتا یہ وہ دردِ دل نہیں ہے کہ___ ہو چارہ ساز کوئی اگر ایک بار مٹتا تو______________ ہزار بار ہوتا مجھے مانتے سب ایسا کہ عدو بھی سجدے کرتے درِ یار کعبہ بنتا______________ جو مرا مزار ہوتا تمہیں ناز ہو نہ کیونکر______ کہ لیا ہے داغ کا دل یہ رقم نہ ہاتھ لگتی___________ نہ یہ افتخار ہوتا
  3. Zarnish Ali

    عجب خوف مسلط تها....

    ﻋﺠﺐ ﺧﻮﻑ ﻣﺴﻠﻂ ﺗﮭﺎ ﮐﻞ ﺣﻮﯾﻠﯽ ﭘﺮ ﮨﻮﺍ ﭼﺮﺍﻍ ﺟﻼﺗﯽ ﺭﮨﯽ ﮨﺘﮭﯿﻠﯽ ﭘﺮ ﺳﻨﮯ ﮔﺎ ﮐﻮﻥ ﻣﮕﺮ ﺍﺣﺘﺠﺎﺝ ﺧﻮﺷﺒﻮ ﮐﺎ ﮐﮧ ﺳﺎﻧﭗ ﺯﮨﺮ ﭼﮭﮍﮐﺘﺎ ﺭﮨﺎ ﭼﻨﺒﯿﻠﯽ ﭘﺮ ﺷﺐِ ﻓﺮﺍﻕ ﻣﯿﺮﯼ ﺁﻧﮑﮫ ﮐﻮ ﺗﮭﮑﻦ ﺳﮯ ﺑﭽﺎ ﮐﮧ ﻧﯿﻨﺪ ﻭﺍﺭ ﻧﮧ ﮐﺮ ﺩﮮ ﺗﯿﺮﯼ ﺳﮩﯿﻠﯽ ﭘﺮ ﻭﮦ ﺑﮯ ﻭﻓﺎ ﺗﮭﺎ ﺗﻮ ﭘﮭﺮ ﺍﺗﻨﺎ ﻣﮩﺮﺑﺎﻥ ﮐﯿﻮﮞ ﺗﮭﺎ ﺑﭽﮭﮍ ﮐﮯ ﺍﺱ ﺳﮯ ﻣﯿﮟ ﺳﻮﭼﻮﮞ ﺍﺱ ﭘﮩﯿﻠﯽ ﭘﺮ ﺟﻼ ﻧﮧ ﮔﮭﺮ ﮐﺎ ﺍﻧﺪﮬﯿﺮﺍ ﭼﺮﺍﻍ ﺳﮯ ﻣﺤﺴﻦ ﺳﺘﻢ ﻧﺎ ﮐﺮ ﯾﻮﮞ ﻣﯿﺮﯼ ﺟﺎﻥ ! ﺍﭘﻨﮯ ﺑﯿﻠﯽ ﭘﺮ ﻣﺤﺴﻦ ﻧﻘﻮﯼ
  4. عجب حالات تھے میرے عجب دن رات تھے میرے مگر میں مطمئن تھا اس لئے تم ساتھ تھے میرے مرے زر کے طلبگاروں کی نظریں ایسے اٹھتی تھیں کہ لاکھوں انگلیاں تھیں اور ہزاروں ہاتھ تھے میرے میں اک پتھر کا گرد آلود بت تھا ان کے مندر میں نہ دل تھا میرے سینے میں نہ کچھ جذبات تھے میرے کسی سے اور کیا تائید کی امید میں رکھتا وہی خاموش تھے جو محرم حالات تھے میرے میں جن شعلوں میں جلتا تھا تم بھی نہیں سمجھے مرا دل مختلف تھا ، مختلف صدمات تھے میرے مجھے مجرم بنا کر رکھ دیا جھوٹے گواہوں نے سبھی رد ہوگئے جتنے بھی الزامات تھے میرے تصور بن گیا تصویر آخر ایک دن اسی کا خوف تھا مجھ کو یہی خدشات تھے میرے
  5. عجب ہے رنگ ِ چمن، جا بجا اُداسی ہے مہک اُداسی ہے، باد ِ صبا اُداسی ہے نہیں نہیں، یہ بھلا کس نے کہہ دیا تم سے؟ میں ٹھیک ٹھاک ہوں، ہاں بس ذرا اُداسی ہے میں مبتلا کبھی ہوتا نہیں اُداسی میں میں وہ ہوں جس میں کہ خود مبتلا اُداسی ہے طبیب نے کوئی تفصیل تو بتائی نہیں بہت جو پوچھا تو اتنا کہا، اُداسی ہے گداز ِ قلب خوشی سے بھلا کسی کو ملا؟ عظیم وصف ہی انسان کا اداسی ہے شدید درد کی رو ہے رواں رگ ِ جاں میں بلا کا رنج ہے، بے انتہا اُداسی ہے فراق میں بھی اُداسی بڑے کمال کی تھی پس ِ وصال تو اُس سے سِوا اداسی ہے تمہیں ملے جو خزانے، تمہیں مبارک ہوں مری کمائی تو یہ بے بہا اُداسی ہے چھپا رہی ہو مگر چھپ نہیں رہی مری جاں جھلک رہی ہے جو زیر ِ قبا اُداسی ہے دماغ مجھ کو کہاں کائناتی مسئلوں کا مرا تو سب سے بڑا مسئلہ اُداسی ہے فلک ہے سر پہ اُداسی کی طرح پھیلا ہُوا زمیں نہیں ہے مرے زیر ِ پا، اُداسی ہے غزل کے بھیس میں آئی ہے آج محرم ِ درد سخن کی اوڑھے ہوئے ہے ردا، اُداسی ہے عجیب طرح کی حالت ہے میری بے احوال عجیب طرح کی بے ماجرا اُداسی ہے وہ کیف ِ ہجر میں اب غالباً شریک نہیں کئی دنوں سے بہت بے مزا اُداسی ہے وہ کہہ رہے تھے کہ شاعر غضب کا ہے عرفان ہر ایک شعر میں کیا غم ہے، کیا اُداسی ہے
  6. نگاہوں کے تصادم سے عجب تکرار کرتا ہے یقین کامل نہیں لیکن گماں ہے پیار کرتا ہے لرز جاتی ہوں میں یہ سوچ کر کہیں کافر نہ ہو جائوں دل اس کی پوجا پہ بڑا اصرار کرتا ہے اسے معلوم ہے شاید میرا دل ہے نشانے پر لبوں سے کچھ نہیں کہتا نظر سے وار کرتا ہے میں اس سے پوچھتی ہوں خواب میں مجھ سے محبت ہے پھر آنکھیں کھول دیتی ہوں وہ جب اظہار کرتا ہے پروین شاکر
×