Jump to content

Register now to gain access to all of our features. Once registered and logged in, you will be able to create topics, post replies to existing threads, give reputation to your fellow members, get your own private messenger, post status updates, manage your profile and so much more. If you already have an account, login here - otherwise create an account for free today!

Welcome to our forums
Welcome to our forums, full of great ideas.
Please register if you'd like to take part of our project.
Urdu Poetry & History
Here you will get lot of urdu poetry and history sections and topics. Like/Comments and share with others.
We have random Poetry and specific Poet Poetry. Simply click at your favorite poet and get all his/her poetry.
Thank you buddy
Thank you for visiting our community.
If you need support you can post a private message to me or click below to create a topic so other people can also help you out.

Search the Community

Showing results for tags 'kahte'.



More search options

  • Search By Tags

    Type tags separated by commas.
  • Search By Author

Content Type


Forums

  • Help Support
    • Announcement And Help
    • Funday Chatroom
  • Poetry
    • Shair o Shairy
    • Famous Poet
  • Islam - اسلام
    • QURAN O TARJUMA قرآن و ترجمہ
    • AHADEES MUBARIK آحدیث مبارک
    • Ramazan ul Mubarik - رمضان المبارک
    • Deen O Duniya - دین و دنیا
  • Other Forums
    • Quizzes
    • Movies and Stars
    • Chit chat And Greetings
    • Urdu Adab
    • Entertainment
    • Common Rooms
  • Science, Arts & Culture
    • Education, Science & Technology
  • IPS Community Suite
    • IPS Community Suite 4.1
    • IPS Download
    • IPS Community Help/Support And Tutorials

Blogs

There are no results to display.

There are no results to display.

Categories

  • IPS Community Suite 4.4
    • Applications 4.4
    • Plugin 4.4
    • Themes/Ranks
    • IPS Languages 4.4
  • IPS Community Suite 4.3
    • Applications 4.3
    • Plugins 4.3
    • Themes 4.3
    • Language Packs 4.3
    • IPS Extras 4.3
  • IPS Community Suite 4
    • Applications
    • Plugins
    • Themes
    • Language Packs
    • IPS Extras
  • Books
    • Urdu Novels
    • Islamic
    • General Books
  • XenForo
    • Add-ons
    • Styles
    • Language Packs
    • Miscellaneous XML Files
  • Web Scripts
  • PC Softwares
  • Extras

Categories

  • Islamic
  • Funny Videos
  • Movies
  • Songs
  • Seasons
  • Online Channels

Find results in...

Find results that contain...


Date Created

  • Start

    End


Last Updated

  • Start

    End


Filter by number of...

Joined

  • Start

    End


Group


Facebook ID


FB Page/Group URL


Bigo Live


Website URL


Instagram


Skype


Interests


Location


ZODIAC

Found 4 results

  1. لوﮒ ﺳﭻ ﮐﮩﺘﮯ ﮨﯿﮟ لوﮒ ﺳﭻ ﮐﮩﺘﮯ ﮨﯿﮟ ﻋﻮﺭﺗﯿﮟ ﺑﮩﺖ ﻋﺠﯿﺐ ﮨﻮﺗﯽ ﮨﯿﮟ ۔ ﺭﺍﺕ ﺑﮭﺮ ﭘﻮﺭﺍ ﺳﻮﺗﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺗﮭﻮﮌﺍ ﺗﮭﻮﮌﺍ ﺟﺎﮔﺘﯽ ﺭﮨﺘﯽ ﮨﯿﮟ ۔ ﻧﯿﻨﺪ ﮐﯽ ﺳﯿﺎﮨﯽ ﻣﯿﮟ ﺍﻧﮕﻠﯽ ﮈﻭﺑﻮ ﮐﺮ ﺩﻥ ﮐﺎ ﺣﺴﺎﺏ ﻟﮑﮭﺘﯽ ﮨﯿﮟ ﭨﭩﻮﻟﺘﯽ ﺭﮨﺘﯽ ﮨﯿﮟ ﺩﺭﻭﺍﺯﻭﮞ ﮐﯽ ﮐﻨﮉﯾﺎﮞ ﺑﭽﻮﮞ ﭼﺎﺩﺭ ۔۔ﺷﻮﮨﺮ ﮐﺎ ﻣﻦ ۔ ﺍﻭﺭ ﺟﺐ ﺟﺎﮔﺘﯽ ﮨﯿﮟ ۔۔ ﺗﻮ ﭘﻮﺭﺍ ﻧﮩﯿﮟ ﺟﺎﮔﺘﯽ ۔ﻧﯿﻨﺪ ﻣﯿﮟ ﮨﯽ ﺑﮭﺎﮔﺘﯽ ﮨﯿﮟ ۔ ﺳﭻ ﻣﯿﮟ ﻋﻮﺭﺗﯿﮟ ﺑﮩﺖ ﻋﺠﯿﺐ ﮨﻮﺗﯽ ﮨﯿﮟ ۔ ﮨﻮﺍ ﮐﯽ ﻃﺮﺡ ﮔﮭﻮﻣﺘﯽ ﮐﺒﮭﯽ ﮔﮭﺮ ﮐﺒﮭﯽ ﺑﺎﮨﺮ ۔ﭨﻔﻦ ﻣﯿﮟ ﺭﻭﺯ ﺭﮐﮭﺘﯽ ﻧﺌﯽ ﻧﻈﻤﯿﮟ ۔ﮔﻤﻠﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺭﻭﺯ ﺑﻮﺗﯽ ﺍﻣﯿﺪﯾﮟ ۔ ﭘﺮﺍﻧﮯﻋﺠﯿﺐ ﺳﮯ ﮔﺎﻧﮯ ﮔﻨﮕﻨﺎﺗﯽ ﭼﻞ ﺩﯾﺘﯽ ﮨﯿﮟ ۔ ﭘﮭﺮ ﻧﺌﮯ ﺩﻥ ﮐﺎ ﻣﻘﺎﺑﻠﮧ ﮐﺮﻧﮯ ۔ﺳﺐ ﺳﮯ ﺩﻭﺭ ﮨﻮﮐﺮ ﺑﮭﯽ ﺳﺐ ﮐﮯ ﻗﺮﯾﺐ ﮨﻮﺗﯽ ﮨﯿﮟ ۔ ﻋﻮﺭﺗﯿﮟ ﺳﭻ ﻣﯿﮟ ﺑﮩﺖ ﻋﺠﯿﺐ ﮨﻮﺗﯽ ﮨﯿﮟ ۔ ﮐﺒﮭﯽ ﮐﻮﺋﯽ ﺧﻮﺍﺏ ﭘﻮﺭﺍ ﻧﮩﯿﮟ ﺩﯾﮑﮭﺘﯿﮟ ۔ ﺑﯿﭻ ﻣﯿﮟ ﮨﯽ ﭼﮭﻮﮌ ﮐﺮ ﺩﯾﮑﮭﻨﮯ ﻟﮕﺘﯽ ﮨﯿﮟ ﭼﻮﻟﮩﮯ ﭘﺮ ﭼﮍﮬﺎ ﺩﻭﺩﮪ ۔ ﮐﺒﮭﯽ ﮐﻮﺋﯽ ﮐﺎﻡ ﭘﻮﺭﺍ ﻧﮩﯿﮟ ﮐﺮﺗﯽ ۔ ﺑﯿﭻ ﻣﯿﮟ ﭼﮭﻮﮌ ﮐﺮﮈﮬﻮﻧﮉﻧﮯ ﻟﮕﺘﯿﮟ ﻣﻮﺯﮮ ۔ﺑﭽﻮﮞ ﮐﯽ ﭘﯿﻨﺴﻞ ۔ﺭﺑﮍ ۔ﺟﻮﺗﮯ ۔ ﺍﭘﻨﮯ ﺑﭽﭙﻦ ﮐﯽ ﯾﺎﺩﯾﮟ ۔ ﺳﮩﯿﻠﯿﻮﮞ ﮐﯽ ﺑﺎﺗﯿﮟ ۔۔ ﺑﮩﻨﻮ ﺳﮯ ﻟﮍﺍﺋﯽ ﺍﻭﺭ ﺍﻧﮑﺎ ﻣﺎﻧﻨﺎ ۔۔ ﺍﻭﺭ ﮐﭽﮫ ﻧﮩﯿﮟ ﺗﻮ ﺑﺲ ﻣﺎﮞ ﮐﻮ ﯾﺎﺩ ﮐﺮ ﮐﮧ ﺭﻭ ﺩﯾﻨﺎ ۔ ﺍﺑّﺎ ﮐﯽ ﮔﮍﯾﺎﮞ ﻻﻧﯽ ﯾﺎﺩ ﺁﺟﺎﺗﯽ ۔ ۔۔ ﺍﻭﺭ ﭘﺮﺍﻧﮯ ﺻﻨﺪﻭﻕ ﺳﮯ ﮐﭽﮫ ﺍﺩﮬﻮﺭﯼ ﯾﺎﺩﯾﮟ ﮈﮬﻮﻧﮉﻧﺎ ﮐﭽﮫ ﺍﻥ ﮐﮩﯽ ﻟﻔﻈﻮﮞ ﮐﯽ ﮐﮩﺎﻧﯽ ﮐﮭﻮﯾﺎ ﮨﻮﺍ ﻭﺭﻕ ﮈﮬﻮﻧﮉﻧﺎ ۔۔ ﺑﺮﺳﺎﺕ ﮐﻮ ﯾﺎﺩ ﮐﺮﻧﺎ ۔۔ ﺟﺐ ﮨﻮ ﺟﺎﺋﮯ ﺗﻮ ۔ﺑﮭﺎﮔﺘﮯ ﺭﮨﻨﺎ ﮐﭙﮍﮮ ﺑﮭﯿﮓ ﻧﺎ ﺟﺎﺋﮯ ۔ﺍﭼﺎﺭ ۔ﭘﺎﭘﮍ ﺧﺮﺍﺏ ﻧﺎ ﮨﻮ ﺟﺎﺋﮯ ۔۔ ﺳﭻ ﻣﯿﮟ ﻋﻮﺭﺗﯿﮟ ﺑﮩﺖ ﻋﺠﯿﺐ ﮨﻮﺗﯽ ﮨﯿﮟ ﺧﻮﺷﯽ ﮐﯽ ﺍﻣﯿﺪ ﭘﺮ ﭘﻮﺭﯼ ﺯﻧﺪﮔﯽ ﺑﺘﺎ ﺩﯾﺘﯽ ﮨﯿﮟ ۔ ﺍﻥ ﮔﻨﺖ ﮐﮭﺎﺋﯿﻮﮞ ﮐﮯ ﭘﻞ ﮐﻮ ﭘﺎﭦ ﺩﯾﺘﯽ ﮨﯿﮟ ..... ﺳﭻ ﻣﯿﮟ ﻋﻮﺭﺗﯿﮟ ﻋﺠﯿﺐ ﮨﻮﺗﯽ ﮨﯿﮟ .galleria, .galleria-container { height:480px !important } .fullscreen { height:100% !important; }
  2. ستارے کیا کہتے ہیں؟؟ یہ سراسرایمان شکن باتیں ہیں ان پر یقین کرنا انسان کو شرک کی گمراہی تک لے جاسکتا ہے لہذا ہماری ذمہ داری ہے کہ نہ صرف ان باتوں کا انکارکریں بلکہ ان اخبارات اور رسائل کی حوصلہ شکنی بھی کریں اور اس کے خلاف آواز اٹھائیں۔ :اس پر کثرت سے احادیث موجود ہیں یہاں پر ستاروں سے متعلق صحیح مسلم کی چند احادیث پیش خدمت ہیں امام مسلم رحمہ الله نے "کتاب الایمان" میں ایک باب باندھا ہے جس کا نام "باب بَيَانِ كُفْرِ مَنْ قَالَ مُطِرْنَا بِالنَّوْءِ(اس شخص کے کفر کا بیان جو کہے کہ بارش ستاروں کی گردش ہوتی ہے)" رکھا ہے۔ اس باب سے چند احادیث یہاں نقل کی جاتی ہیں۔ حدیث: 231 دَّثَنَا يَحْيَى بْنُ يَحْيى ، قَالَ: قَرَأْتُ عَلَى مَالِكٍ ، عَنْ صَالِحِ بْنِ كَيْسَانَ ، عَنْ عُبَيْدِ اللَّهِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُتْبَةَ ، عَنْ زَيْدِ بْنِ خَالِدٍ الْجُهَنِيِّ ، قَالَ: صَلَّى بِنَا رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ صَلَاةَ الصُّبْحِ بِالْحُدَيْبِيَةِ فِي إِثْرِ السَّمَاءِ، كَانَتْ مِنَ اللَّيْلِ، فَلَمَّا انْصَرَفَ، أَقْبَلَ عَلَى النَّاسِ، فَقَالَ: هَلْ تَدْرُونَ مَاذَا قَالَ رَبُّكُمْ؟ قَالُوا: اللَّهُ وَرَسُولُهُ أَعْلَمُ، قَالَ: قَالَ: " أَصْبَحَ مِنْ عِبَادِي مُؤْمِنٌ بِي وَكَافِرٌ، فَأَمَّا مَنْ قَالَ مُطِرْنَا بِفَضْلِ اللَّهِ وَرَحْمَتِهِ، فَذَلِكَ مُؤْمِنٌ بِي، كَافِرٌ بِالْكَوْكَبِ، وَأَمَّا مَنْ قَالَ مُطِرْنَا بِنَوْءِ كَذَا وَكَذَا، فَذَلِكَ كَافِرٌ بِي، مُؤْمِنٌ بِالْكَوْكَبِ سیدنا زید بن خالد جہنی رضی الله عنہ سے روایت ہے، رسول الله ﷺ نے نماز پڑھائی صبح کی ہمیں حدیبیہ میں (جو ایک مقام کا نام ہے قریب مکہ کے) اور رات کو بارش ہو چکی تھی۔ جب آپ ﷺ نماز سے فارغ ہوئے تو لوگوں کی طرف مخاطب ہوئے اور فرمایا: ”تم جانتے ہو تمہارے پروردگار نے کیا فرمایا؟“ انہوں نے کہا: الله اور اس کا رسول خوب جانتا ہے۔ آپ ﷺ نے کہا: ”الله تعالیٰ نے فرمایا: میرے بندوں میں سے بعض کی صبح ایمان پر ہوئی اور بعض کی کفر پر، تو جس نے کہا: پانی برسا الله کے فضل اور رحمت سے وہ ایمان لایا مجھ پراورانکاری ہوا ستاروں سے اور جس نے کہا: پانی برسا ستاروں کی گردش سے وہ کافر ہوا میرے ساتھ اور ایمان لایا تاروں پر۔ حدیث: 232 حَدَّثَنِي حَرْمَلَةُ بْنُ يَحْيَى ، وَعَمْرُو بْنُ سَوَّادٍ الْعَامِرِيُّ ، ومحمد بن سلمة المرادي ، قَالَ الْمُرَادِيُّ: حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ وَهْبٍ ، عَنْ يُونُسَ ، وَقَالَ الآخَرَانِ: أَخْبَرَنَا ابْنُ وَهْبٍ، قَالَ: أَخْبَرَنِي يُونُسُ، عَنِ ابْنِ شِهَابٍ ، قَالَ: حَدَّثَنِي عُبَيْدُ اللَّهِ بْنُ عَبْدِ اللَّهِ بْنِ عُتْبَةَ ، أَنَّ أَبَا هُرَيْرَةَ ، قَالَ: قَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ: أَلَمْ تَرَوْا إِلَى مَا قَالَ رَبُّكُمْ؟ قَالَ: " مَا أَنْعَمْتُ عَلَى عِبَادِي مِنْ نِعْمَةٍ، إِلَّا أَصْبَحَ فَرِيقٌ مِنْهُمْ بِهَا كَافِرِينَ، يَقُولُونَ الْكَوَاكِبُ وَبِالْكَوَاكِبِ سیدنا ابوہریرہ رضی الله عنہ سے روایت ہے، رسول الله ﷺ نے فرمایا: ”کیا تم نہیں دیکھتے جو فرمایا تمہارے رب نے، فرمایا اس نے، میں نے کوئی نعمت نہیں دی اپنے بندوں کو مگر ایک فرقے نے ان میں سے صبح کو اس کا انکار کیا اور کہنے لگے: تارے تارے۔ حدیث: 234 وحَدَّثَنِي عَبَّاسُ بْنُ عَبْدِ الْعَظِيمِ الْعَنْبَرِيُّ ، حَدَّثَنَا النَّضْرُ بْنُ مُحَمَّدٍ ، حَدَّثَنَا عِكْرِمَةُ وَهُوَ ابْنُ عَمَّارٍ ، حَدَّثَنَا أَبُو زُمَيْلٍ ، قَالَ: حَدَّثَنِي ابْنُ عَبَّاسٍ ، قَالَ: مُطِرَ النَّاسُ عَلَى عَهْدِ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ، فَقَالَ النَّبِيُّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ: " أَصْبَحَ مِنَ النَّاسِ شَاكِرٌ، وَمِنْهُمْ كَافِرٌ "، قَالُوا: هَذِهِ رَحْمَةُ اللَّهِ، وَقَالَ بَعْضُهُمْ: لَقَدْ صَدَقَ نَوْءُ كَذَا وَكَذَا، قَالَ: فَنَزَلَتْ هَذِهِ الآيَةُ فَلا أُقْسِمُ بِمَوَاقِعِ النُّجُومِ حَتَّى بَلَغَ وَتَجْعَلُونَ رِزْقَكُمْ أَنَّكُمْ تُكَذِّبُونَ سورة الواقعة آية 75 - 82 سیدنا ابن عباس رضی الله عنہما سے روایت ہے، پانی برسا رسول الله ﷺ کے زمانے میں تو آپ ﷺ نے فرمایا: ” صبح کی لوگوں نے بعض نے شکر پر اور بعض نے کفر پر تو جنہوں نے شکر پر صبح کی۔ انہوں نے کہا: یہ الله کی رحمت ہے۔ اور جنہوں نے کفر کیا انہوں نے کہا کہ فلاں نوء فلاں نوء سچ ہوئے۔“ پھر یہ آیت اتری «فَلَا أُقْسِمُ بِمَوَاقِعِ النُّجُومِ» اخیر «وَتَجْعَلُونَ رِزْقَكُمْ أَنَّكُمْ تُكَذِّبُونَ» تک ان احادیث سے یہ ثابت ہوا کہ ستاروں پر علم رکھنا جاہلیت کا کام ہے لیکن افسوس کہ آج کل ہمارا میڈیا ان باتوں سے بھرا پڑا ہے اور ان بدبختوں نے ان کوعقرب، ثور،سرطان، اسد، حمل اور سنبلہ وغیرہ نام دئیے ہیں تاکہ ہرآدمی اپنی قسمت وہاں تلاش کرے۔ یہ باتیں سرار قرآن وسنت کے خلاف ہیں کیونکہ غیب کا علم صرف الله کے پاس ہے اور کسی کو یہ نہیں پتہ کہ وہ کل کیا کرے گا۔ :الله عزوجل قرآن میں فرماتے ہیں {إِنَّ اللَّهَ عِندَهُ عِلْمُ السَّاعَةِ وَيُنَزِّلُ الْغَيْثَ وَيَعْلَمُ مَا فِي الْأَرْحَامِ ۖ وَمَا تَدْرِي نَفْسٌ مَّاذَا تَكْسِبُ غَدًا ۖ وَمَا تَدْرِي نَفْسٌ بِأَيِّ أَرْضٍ تَمُوتُ ۚ إِنَّ اللَّهَ عَلِيمٌ خَبِيرٌ بےشک الله تعالیٰ ہی کے پاس قیامت کا علم ہے وہی بارش نازل فرماتا ہے اور ماں کے پیٹ میں جو ہے اسے جانتا ہے کوئی (بھی) نہیں جانتا کہ کل کیا (کچھ) کرے گا؟ نہ کسی کو یہ معلوم ہے کہ کس زمین میں مرے گا (یاد رکھو) الله تعالیٰ پورے علم والا اور صحیح خبروں والا ہے۔( سورۃ لقمان:31 - آيت:34 اور یہی وجہ ہے کہ جو نجومیوں اور غیب کا دعوی کرنے والوں کی باتوں پر یقین کرتے ہیں تووہ دراصل قرآن وسنت کا انکار کرتےہیں کیوں کہ قرآن کہتا ہے کہ غیب کا علم صرف الله کے پاس ہے اور جیسے اوپرذکر کی گئی آیت سے ہمیں معلوم ہوا کہ انسان تو یہ بھی نہیں جانتا کہ وہ کل کیا کرے گا تو وہ یہ لوگ یہ دعوی کیسے کرتے ہیں کہ آپ کا ہفتہ کیسے گزرے گا۔ :نبی کریم ﷺ نے فرمایا مَنْ أَتَى كَاهِنًا، أَوْ عَرَّافًا، فَصَدَّقَهُ بِمَا يَقُولُ، فَقَدْ كَفَرَ بِمَا أُنْزِلَ عَلَى مُحَمَّدٍ ﷺ جو کسی کاہن یا نجومی کے پاس گیا اور جو وہ کہتا ہے اس کی تصدیق کی تو اس نے محمدﷺ پر جو نازل ہوا ہے اس کا کفر کیا. (أخرجه أحمد والأربعة، وصححه الألباني في صحيح الترغيب والترهيب برقم (3047)) اسی طرح دوسری حدیث میں فرمایا: مَنْ أَتَى عَرَّافًا فَسَأَلَهُ عَنْ شَيْءٍ، لَمْ تُقْبَلْ لَهُ صَلَاةٌ أَرْبَعِينَ لَيْلَةً جوشخص عراف(چھپی باتیں بتانے والا) کے پاس جائے اس سے کوئی بات پوچھے تو اس کی چالیس(400) دن کی نماز قبول نہ ہو گی (أخرجه إمام مسلم في صحيح مسلم ، كتاب السلام برقم (5821)) الله سبحانه وتعالى ہمیں شرک اور بدعت کی گمراہیوں سے بچائے اور جادوگروں، عاملوں اور علم نجوم کے نام پر لوگوں کے ایمان و دولت کے ساتھ کھیلنے والوں کے شر سے بچائے۔ اس پیغام کو پہنچانا ہم سب کی ذمہ داری ہے لہذا جتنا ممکن ہو پہنچائیں ! کیا پتہ کسی کو اس کے ذریعہ ہدایت مل جائے ***
  3. چشمِ گریاں میں وہ سیلاب تھے اے یار کہ بس گرچہ کہتے رہے مجھ سے مرے غم خوار کہ بس , زندگی تھی کہ قیامت تھی کہ فرقت تیری ایک اک سانس نے وہ وہ دیے آزار کہ بس , اس سے پہلے بھی محبت کا قرینہ تھا یہی ایسے بے حال ہوئے ہیں مگر اِس بار کہ بس , اب وہ پہلے سے بلا نوش و سیہ مست کہاں اب تو ساقی سے یہ کہتے ہیں قدح خوار کہ بس , لوگ کہتے تھے فقط ایک ہی پاگل ہے فرازؔ ایسے ایسے ہیں محبت میں گرفتار کہ بس
  4. پاگل کسے کہتے ہیں ــــــــــــــــــــ­ــــــــــــــــــ جو ہوش گنوا بیٹھے؟ جو روڈ پہ جا بیٹھے؟ جو مانگ کے کھا بیٹھے؟ جو بھوک چھپا بیٹھے؟ کہتے ہیں اسے پاگل؟ بے شرم پھرے جو وہ؟ ٹھوکر سے گرے جو وہ؟ شکوہ نہ کرے جو وہ؟ بے موت مرے جو وہ؟ ــــــــــــــــــــ­ــــــــــــــــــ ہے کون بھلا پاگل؟ ــــــــــــــــــــ­ــــــــــــــــــ ننگا ہو بدن جس کا گندا ہو رہن جس کا آزاد ہو من جس کا خالی ہو ذہن جس کا ــــــــــــــــــــ­ــــــــــــــــــ کیا اس کو کہیں پاگل؟ ــــــــــــــــــــ­ــــــــــــــــــ گھر بھول گیا ہو جو در بھول گیا ہو جو زر بھول گیا ہو جو شر بھول گیا ہو جو ــــــــــــــــــــ­ــــــــــــــــــ وہ شخص ہے کیا پاگل؟ ــــــــــــــــــــ­ــــــــــــــــــ عزت سے ہو ناواقف ذلت سے ہو ناواقف دولت سے ہو ناواقف شہرت سے ہو ناواقف ــــــــــــــــــــ­ــــــــــــــــــ کیا اس کو کہیں پاگل؟ ــــــــــــــــــــ­ــــــــــــــــــ تم بات مری مانو جو سچ ہے اسے جانو اس گول سی دنیا میں صرف ایک نہیں پاگل ــــــــــــــــــــ­ــــــــــــــــــ کچھ اور بھی ہیں پاگل ــــــــــــــــــــ­ــــــــــــــــــ جو ماں کو ستاتا ہے دل اس کا دکھا تا ہے جو باپ کے اوپر بھی جھٹ ہاتھ اٹھا تا ہے ــــــــــــــــــــ­ــــــــــــــــــ وہ شخص بھی ہے پاگل ــــــــــــــــــــ­ــــــــــــــــــ جو رب کو بھلا بیٹھا جو کرکے خطا بیٹھا دولت کے نشے میں جو جنت کو گنوا بیٹھا ــــــــــــــــــــ­ــــــــــــــــــ وہ شخص بھی پاگل ہے ــــــــــــــــــــ­ــــــــــــــــــ جو علم نہ سیکھے وہ جو دین نہ جانے وہ جو خود کو بڑا سمجھے جو حق کو نہ مانے وہ ــــــــــــــــــــ­ــــــــــــــــــ ہے وہ بھی بڑا پاگل ــــــــــــــــــــ­ــــــــــــــــــ دنیا میں جو کھویا ہے غفلت میں جو سویا ہے جو موت سے ہے غافل جو عیش کا جویا ہے ــــــــــــــــــــ­ــــــــــــــــــ اس کو بھی کہو پاگل ــــــــــــــــــــ­
×
×
  • Create New...