Jump to content

Welcome to Fundayforum. Please register your ID or get login for more access and fun.

Signup  Or  Login

house fdf.png

ADMIN ADMIN

Captain Marvel Movie 2019

IMDb - 6.3/10 Rotten Tomatoes Description: Captain Marvel gets caught in the middle of a galactic war between two alien races. Initial release: March 8, 2019 (USA) Directors: Anna Boden, Ryan Fleck Budget: 152 million USD Music composed by: Pinar Toprak Screenplay: Anna Boden, Ryan Fleck, Nicole Perlman, Geneva Robertson-Dworet, Meg LeFauve, Liz Flahive, Carly Mensch
Watch and Download

Alita - Battle Angel 2019

IMDb: 7.6/10 Genre : Action, Science Fiction, Thriller, Romance Director : Robert Rodriguez Stars : Rosa Salazar, Christoph Waltz, Ed Skrein, Mahershala Ali, Jennifer Connelly LANGUAGE: Hindi (Cleaned) – English Quality: 720p HD-Camrip PLOT: Six strangers find themselves in a maze of deadly mystery rooms, and must use their wits to survive.
Watch and Download
  • entries
    18
  • comments
    28
  • views
    1,322

About this blog

Raqs e Bismil to Dance With The (Pain of) Wounds of Divine Love........

Entries in this blog

 

الله سے بهترین دوست کوئی نہیں هے

الله سے بهترین دوست کوئی نہیں هے.
جو هر وقت موجود رہتا هےبلکه ایسا لگتا هے 
که منتظر هوتا هے
کبهی نہیں کہتا که
اب سب نے ٹهکرا دیا تو میں یاد آگیا
طے شده ملاقات کے وقت کہاں تهے
میں نہیں سن سکتا ابهی
میرے پاس وقت نہیں تمهارے درد سننے کے لیے.. 
میری مانتے هو جو میں تمهاری مانوں
میری سنتے هو جو میں تمهاری سنوں
جب میں بلاتا هوں تو منه پهیر کے چل پڑتے هو 
کچھ بهی نہیں کہتا
بالکل بهی شکوه نہیں کرتا
بس سنتا رہتا هے
اور اپنی محبت کی آغوش میں لےکے دل و روح کو سکون سے بهر دیتا هے

Eylaaf Khan

Eylaaf Khan

 

ابھی  ساون  کی  کوئی   برسات  باقی   ہے 

ابھی  ساون  کی  کوئی   برسات  باقی   ہے 
کہ  مجھ  میں کہیں  تری   چاہت  باقی  ہے
تو   مجھ سا نہیں میں  تجھ  سا   نہیں  ہوں 
پر  ایسا  لگتا  ہے  کہیں  کچھ  بات  باقی  ہے 
ترا فسانہ تجھ سےپوچھیں گےلوگ زمانے کے
پرمری کہانی  میں تو تری  ہی  ذات باقی ہے
 سجے  ہیں  شہر میرے  دل میں  تیرے  لیے 
کہ جسم  کے  ہر شہر میں تری رفعت باقی ہے
ساون جائے گا تو لے جائے گا سب  یادیں مری
کہ ساون کی برسات میں ایک راحت باقی ہے
ٹھہیر جاؤ تم میرے لیے بعد برسات چلے جانا
ابھی شہر سجا ہے میرا  ابھی  سوغات باقی ہے
 

Eylaaf Khan

Eylaaf Khan

 

ﺍﻥ ﺩﻧﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺑﮭﯽ

ﺍﻥ ﺩﻧﻮﮞ ﻣﯿﮟ ﺑﮭﯽ ﮨﻮﮞ ﮐﭽﮫ ﮐﺎﺭ ﺟﮩﺎﮞ ﻣﯿﮟ ﻣﺼﺮﻭﻑ
ﺑﺎﺕ ﺗﺠﮫ ﻣﯿﮟ ﺑﮭﯽ ﻧﮩﯿﮟ ﺭﮦ ﮔﺌﯽ ﭘﮩﻠﮯ ﻭﺍﻟﯽ.......

Eylaaf Khan

Eylaaf Khan

 

تسلسل ٹوٹ جائے گا 

تسلسل ٹوٹ جائے گا
نہ چھیڑو کھِلتی کلیوں، ہنستے پھُولوں کو
اِن اُڑتی تتِلیوں ، آوارہ بھونروں کو
تسلسل ٹُوٹ جائے گا
فضا محوِ سماعت ہے
حسیں ہونٹوں کو نغمہ ریز رہنے دو
نگاہیں نیچی رکھو اور مجّسم گوش بن جاؤ
اگر جُنبش لبوں کو دی
تسلسل ٹوٹ جائے گا
وہ خوابیدہ ہے، خوابیدہ ہی رہنے دو
نہ جانے خواب میں کِن وادیوں کی سیر کرتی ہو
بلندی سے پھسلتے آبشاروں میں کہیں گم ہو
فلک آثار چوٹی پر کہیں محوِ ترنم ہو
اگر آواز دی تم نے
تسلسل ٹوٹ جائے گا
میں شاعر ہوں
مری فکرِ رسا، احساس کی اُس سطح پر ہے
جس میں خُوشبو رنگ بنتی ہے
صدا کو شکل ملتی ہے
تصّور بول اٹھتا ہے
خموشی گنگناتی ہے
یہ وہ وقفہ ہے۔۔۔ ۔۔ ایسے میں
اگر دادِ سخن بھی دی
تسلسل ٹوٹ جائے گا 

Eylaaf Khan

Eylaaf Khan

 

وہی رنجیشیں

وہی رنجیشیں
وہی حسرتیں
نہ درد دل میں کمی ہوئی 
ہے عجیب  سی میری زندگی 
نہ گزر سکی 
نہ ختم ہوئی...
#eylaaf 

Eylaaf Khan

Eylaaf Khan

 

سینہ دہک رہا ہو تو کیا چپ رہے کوئی 

سینہ دہک رہا ہو تو کیا چپ رہے کوئی 
کیوں چیخ چیخ کر نہ گلا چھیل لے کوئی
!!__ثابت ہوا____ سکون دل و جاں کہیں نہیں
رشتوں میں ڈھونڈھتا ہے تو ڈھونڈا کرے کوئی
!!___ ترک تعلقات___ کوئی مسئلہ نہیں
یہ تو وہ راستہ ہے کہ بس چل پڑے کوئی 
دیوار جانتا تھا جسے میں وہ دھول تھی 
اب مجھ کو اعتماد کی دعوت نہ دے کوئی
میں خود یہ چاہتا ہوں کہ حالات ہوں خراب 
!!___ میرے خلاف زہر اگلتا پھرے کوئی
اے شخص اب تو مجھ کو سبھی کچھ قبول ہے 
!!___ یہ بھی قبول ہے کہ تجھے چھین لے کوئی
ہاں ٹھیک ہے میں اپنی انا کا مریض ہوں 
آخر مرے مزاج میں کیوں دخل دے کوئی 
اک شخص کر رہا ہے ابھی تک وفا کا ذکر 
!!___ کاش اس زباں دراز کا منہ نوچ لے کوئی

Eylaaf Khan

Eylaaf Khan

 

بزمِ یاراں میں کیا گل کھلائے گئے 

بزمِ یاراں میں کیا گل کھلائے گئے 
ہر قَبا پر ستارے سجائے گئے
اتفاقاً کوئی قصر تاریک تھا 
انتقاماً کئی گھر جلائے گئے 
جن کی لَو خنجروں سے ذرا تیز تھی
وہ دیے شام ہی سے بُجھائے گئے 
اپنی صورت بھی اک وہم لگتی ہے اب
اتنے آئینے مجھ کو دکھائے گئے
شہرِ دل پر مسلط رہیں ظلمتیں 
دشتِ ہستی میں سورج اُگائے گئے
کیا غضب ہے کہ جلتے ہوئے شہر میں 
بجلیوں کے فضائل سنائے گئے 
دل وہ بازار ہے جانِ محسنؔ، جہاں 
کھوٹے سکے بھی اکثر چلائے گئے

Eylaaf Khan

Eylaaf Khan

 

پھر چلے ذکر

پھر چلے ذکر کسی زخم کے چِھل جانے کا
پھر کوئی درد کوئی خواب پرانا نکلے

Eylaaf Khan

Eylaaf Khan

 

شائد تُو کبھی

شائد تُو کبھی پیاسا میری طرف لَوٹ آئے فَرازؔ ،،،
آنکھوں میں لِیئے پِھرتا ھُوں دریا تیری خاطِر..........

Eylaaf Khan

Eylaaf Khan

×