Jump to content

Please Disable Your Adblocker. We have only advertisement way to pay our hosting and other expenses.  

Rate this topic

Recommended Posts

اُنہیں بس ہم سے رغبت تھی
تھے ہم بھی جانتے لیکن
ہمیں ان کا بکھر جانا
بکھر کے پھر سمٹ جانا
ہمارے ہاتھ کو تھامے
ہم سے پھر لپٹ جانا
بہت مجبور کرتا تھا
کہ اپنے دل کے تہہ خانے
میں دفنائے ہوئے سب غم
سبھی رنج و ستم ان کے
نہ لکھ ڈالیں کتابوں پر
کہ لکھ دینے سے یوں شکوے
کوئی ان کو نہ کہہ ڈالے
جو کہہ ڈالے کوئی احمق
انہیں ظالم٬ ہمیں مظلوم
تو ہم کیا معاف کر دیں گے؟
خود ہی کو بخش دیں گے ہم؟

ارے جاناں! ارے پاگل
نہیں ہوتا کبھی ایسا
محبت کے فسانےمیں
جسے ہم سونپ دیں سب کچھ
اسے ہم بخش دیتے ہیں
سبھی خوشیاں زمانے کی
اگرچہ جان بھی جائے
خوشی سے سونپ آتے ہیں
صنم کی اک جھلک پر ہم
خود ہی کو وار دیتے ہیں
جو وہ کہہ دیں کہ ہنسنا مت
ہنسی قربان کر دیں ہم
جو کہہ دیں وہ کہ رونا مت
تو آنکھیں خشک ہو جائیں
جو وہ کہہ دیں کہ میرے ہو
تو کیسا ظلم ہو جاناں
جن پہ پہلے مرتے ہوں
خوشی سے پھر سے مر جائیں
چلو سن لو کیوں رغبت تھی
انہیں ہم سے بس اک دم سے
ہم ان پہ مر مٹے تھے بس
وہ ہم سے جی اٹھے تھے بس
یونہی سب عشق بن بیٹھا
ہمیں برباد کر بیٹھا
انہیں کیوں ہم سے رغبت تھی 
لو تم بھی جان بیٹھے ہو
انہیں کیوں ہم سے رغبت تھی
انہیں کیوں ہم سے رغبت تھی
©S.S Writes

 

FB_IMG_1526807697838.jpg

Share this post


Link to post
Share on other sites

Create an account or sign in to comment

You need to be a member in order to leave a comment

Create an account

Sign up for a new account in our community. It's easy!

Register a new account

Sign in

Already have an account? Sign in here.

Sign In Now

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

  • Forum Statistics

    1,831
    Total Topics
    8,136
    Total Posts
×