Jump to content
Search In
  • More options...
Find results that contain...
Find results in...
Sign in to follow this  
Jannat malik

باتیں تو کچھ ایسی ہیں کہ خود سے بھی نہ کی جائیں

Recommended Posts

باتیں تو کچھ ایسی ہیں کہ خود سے بھی نہ کی جائیں

سوچا ہے خموشی سے ہر اک زہر کو پی جائیں

اپنا تو نہیں کوئی وہاں پوچھنے والا

اس بزم میں جانا ہے جنہیں اب تو وہی جائیں

اب تجھ سے ہمیں کوئی تعلق نہیں رکھنا

اچھا ہو کہ دل سے تری یادیں بھی چلی جائیں

اک عمر اٹھائے ہیں ستم غیر کے ہم نے

اپنوں کی تو اک پل بھی جفائیں نہ سہی جائیں

جالبؔ غم دوراں ہو کہ یاد رخ جاناں

تنہا مجھے رہنے دیں مرے دل سے سبھی جائیں

1526752542_images(6).thumb.jpeg.43ac162fb3fff97aa47c6ad85f976ec0.jpeg

Share this post


Link to post
Share on other sites
Admin

 

‏چلو پھر---------- عشق کریں
بہت دن ہوئے روٹھے خود سے

Share this post


Link to post
Share on other sites
Admin

کیا مرے وہ جو پہلے سے مرے تھے
وہ دیتا رہا احساسِ دل روح کے لفظ تھے
ثابت نہیں کرنا چاہتا فرنود صاحب کچھ بھی
آپ کے عزیز ہوں گے تھے اُنکی روح گونجتی ہے آج بھی

Share this post


Link to post
Share on other sites

Join the conversation

You can post now and register later. If you have an account, sign in now to post with your account.
Note: Your post will require moderator approval before it will be visible.

Guest
Reply to this topic...

×   Pasted as rich text.   Paste as plain text instead

  Only 75 emoji are allowed.

×   Your link has been automatically embedded.   Display as a link instead

×   Your previous content has been restored.   Clear editor

×   You cannot paste images directly. Upload or insert images from URL.

Sign in to follow this  

  • Recently Browsing   0 members

    No registered users viewing this page.

  • Forum Statistics

    2,108
    Total Topics
    8,935
    Total Posts
×
×
  • Create New...